ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

راجستھان: سرخیوں میں رہے راجا مان سنگھ فرضی انکاونٹر کے قصور وار سبھی 11 پولیس اہلکاروں کو عمر قید

راجستھان (Rajasthan) کے بھرت پور اسٹیٹ کے راجا مان سنگھ (Maan Singh) کے 35 سال پہلے ہوئے فرضی انکاونٹر (Fake Encounter) معاملے میں متھرا کے ضلع اور سیشن عدالت نے بدھ کو سزا کا اعلان کردیا۔

  • Share this:
راجستھان: سرخیوں میں رہے راجا مان سنگھ فرضی انکاونٹر کے قصور وار سبھی 11 پولیس اہلکاروں کو عمر قید
راجستھان کے مشہور راجا مان سنگھ فرضی انکاونٹر کے قصور وار سبھی 11 پولیس الکاروں کو عمر قید

متھرا: راجستھان (Rajasthan) کے بھرت پور اسٹیٹ کے راجا مان سنگھ (Maan Singh) کے 35 سال پہلے ہوئے فرضی انکاونٹر (Fake Encounter) معاملے میں متھرا کے ضلع اور سیشن عدالت نے بدھ کو سزا کا اعلان کردیا۔ عدالت نے سبھی قصور وار 11 پولیس اہلکاروں کو عمر قید کی سزا سنائی ہے۔ پولیس انکاونٹر میں راجا مان سنگھ سمیت 3 لوگوں کی موت ہوئی تھی۔ عدالت کے ذریعہ سنائی گئی سزا کے مطابق، دفعہ 148 میں دو سال کی قید اور ایک ہزار روپئے جرمانہ عائد کیا گیا ہے۔ دفعہ 302 اور 149 میں عمر قید اور 10 ہزار جرمانہ عائد کیا گیا ہے۔


عدالت کے فیصلے پر راجا مان سنگھ کے اہل خانہ نے خوشی کا اظہار کیا ہے۔ راجا مان سنگھ کی بیٹی دیپا نے اس دوران کہا کہ انصاف تاخیر سے ہی ملا، لیکن ملا۔ وہیں، ملزم فریق کے وکیل نے کہا کہ عدالت کے فیصلے کے بعد وہ ہائی کورٹ میں اپیل کریں گے۔


منگل کو قرار دیئے گئے تھے قصوروار


دراصل، منگل کو ضلع جج سادھنا رانی ٹھاکرنے فیصلہ سناتے ہوئے 11 پولیس اہلکاروں کو آئی پی سی کی دفعہ 149، 148 اور 302 کے تحت قصوروار قرار دیا تھا۔ اس وقت کے سی او کان سنگھ بھاٹی اور ایس او ویریندر سنگھ سمیت 11 پولیس اہلکاروں کو قصور وار قرار دیا گیا۔ وہیں عدالت نے جے ڈی میں ہیرا پھیری کے ملزم 3 پولیس اہلکاروں کو بری کردیا۔

کیا ہے پورا معاملہ

دراصل، 21 فروری 1985 کو اس وقت راجا مان سنگھ کی پولیس انکاونٹر میں موت ہوگئی تھی، جب وہ انتخابی تشہیر کے دوران ڈیگ اناج منڈی میں تھے۔ اس فرضی انکاونٹر معاملے کے اہم ملزم ڈی ایس پی کان سنگھ بھاٹی سمیت 17 پولیس والے ملزم تھے۔ انکاونٹر سے ایک دن قبل راجا مان سنگھ پر راجستھان کے اس وقت کے وزیراعلیٰ شیوچرن ماتھر کے ہیلی کاپٹر اور اسٹیج کو اپنے جوگا گاڑی سے توڑنے کا الزام لگا تھا۔ اس کے لئے راجا مان سنگھ کے خلاف دو الگ الگ مقدمے بھی قائم ہوئے تھے۔ حادثہ کے وقت راجستھان میں کانگریس کی حکومت تھی اور شیو چرن ماتھر وزیراعلیٰ تھے۔ اس معاملے میں ڈی ایس پی کان سنگھ بھاٹی سمیت 17 دیگر پولیس اہلکاروں کے خلاف چارج شیٹ سی بی آئی میں داخل کی گئی تھی۔ اس معاملے کی سماعت متھرا کے ضلع اور سیشن عدالت میں چل رہی تھی۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Jul 22, 2020 03:40 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading