ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

Bihar Assembly Elections 2020: بہار میں 17 فیصد مسلم رائے دہندگان پر ہورہی ہے جم کر سیاست، جے ڈی یو کو حمایت دینے کی حکمت عملی

آل انڈیا یونائٹیڈ مسلم مورچہ کے مطابق ریاست کی 17 فیصد مسلم ووٹوں میں 80 فیصد آبادی دلت مسلمانوں کی ہے اور دلت مسلمان اس بار پھر سے نتیش کمارکو وزیر اعلیٰ بنانے کے لئے زمینی سطح پر کام کریں گے۔ آل انڈیا یونائٹیڈ مسلم مورچہ نے پٹنہ میں اپنے کارکنوں کے ساتھ باقاعدہ ایک پروگرام کرکے اس بات کا اعلان کیا۔

  • Share this:
Bihar Assembly Elections 2020: بہار میں 17 فیصد مسلم رائے دہندگان پر ہورہی ہے جم کر سیاست، جے ڈی یو کو حمایت دینے کی حکمت عملی
بہار میں 17 فیصدی مسلم ووٹوں پر ہورہی ہے جم کر سیاست

پٹنہ: آل انڈیا یونائٹیڈ مسلم مورچہ کے مطابق ریاست کی 17 فیصد مسلم ووٹوں میں 80 فیصد آبادی دلت مسلمانوں کی ہے اور دلت مسلمان اس بار پھر سے نتیش کمارکو وزیر اعلیٰ بنانے کے لئے زمینی سطح پر کام کریں گے۔ آل انڈیا یونائٹیڈ مسلم مورچہ نے پٹنہ میں اپنے کارکنوں کے ساتھ باقاعدہ ایک پروگرام کرکے اس بات کا اعلان کیا۔ مورچہ کے قومی صدر ڈاکٹر اعجاز علی نے نیوز 18 سے بات کرتے ہوئے کہا کہ وزیر اعلیٰ کا امیدوار ایک طرف نتیش کمار ہیں تو دوسری طرف تیجسوی یادو۔  انہوں نے کہا کہ مورچہ نتیش کمار پر بھروسہ کرےگا اور وہ اس لئے کہ نتیش کمار نے جہاں بہار کی ترقیاتی کاموں میں دلچسپی دکھائی ہے۔ وہیں دلت مسلمانوں کو انصاف دلانے کی ہر ممکن کوشش کی ہے۔


ڈاکٹر اعجازعلی کے مطابق دلت مسلمانوں کو آئین کی دفعہ ۳۴۱ میں شامل کرانے کے معاملہ پر بھی نتیش کمار ہمیشہ آواز اٹھاتے رہے ہیں۔ مورچہ کے نائب صدر کمال اشرف کا کہنا ہے کہ دلت مسلمانوں کو سیاست میں حصہ داری دینے کی پہل بھی نتیش کمار نے کیا ہے۔ آل انڈیا یونائٹیڈ مسلم مورچہ نے اپنے کارکنان کے ساتھ میٹنگ کرکے تیجسوی یادو اور نتیش کمار میں موازنہ کیا اور یہ بتانے کی کوشش کی کہ نتیش کمار بہار کے لئے ایک بہتر وزیر اعلیٰ ثابت ہوئے ہیں۔


آل انڈیا یونائٹیڈ مسلم مورچہ کے مطابق ریاست کی 17 فیصد مسلم ووٹوں میں 80 فیصد آبادی دلت مسلمانوں کی ہے اور دلت مسلمان اس بار پھر سے نتیش کمارکو وزیر اعلیٰ بنانے کے لئے زمینی سطح پر کام کریں گے۔
آل انڈیا یونائٹیڈ مسلم مورچہ کے مطابق ریاست کی 17 فیصد مسلم ووٹوں میں 80 فیصد آبادی دلت مسلمانوں کی ہے اور دلت مسلمان اس بار پھر سے نتیش کمارکو وزیر اعلیٰ بنانے کے لئے زمینی سطح پر کام کریں گے۔


آل انڈیا یونائٹیڈ مسلم مورچہ نے یہ بھی اعلان کیا کہ ان کے لوگ مسلم اکثریتی علاقوں میں اسمبلی انتخابات کے درمیان کام کریں گے اور خاص طور سے جے ڈی یو کے امیدواروں کو کامیاب بنانے کی مہم چلائیں گے۔ جانکاروں کے مطابق مورچہ کی اپیل کا اثر دلت مسلمانوں پر ہوا تو مسلم ووٹوں کی تقسیم یقینی ہے اور یہ کہنا غیر مناسب نہیں ہوگا کہ اگر ایسا ہوتا ہے تو کئی سیاسی پارٹیوں کی بنی بنائی حکمت عملی ٹھنڈے بستہ میں پڑ جائےگی۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Oct 04, 2020 11:58 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading