ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

سی اے بی کے خلاف احتجاج : پولیس فائرنگ میں دو مظاہرین کی موت ، کئی دیگر زخمی ، حالات کشیدہ

شہریت ترمیمی بل 2019 کے خلاف آسام میں جاری مظاہرہ جمعرات کو بھی پرتشدد رہا ۔ گوہاٹی میں پولیس اور مظاہرین کے درمیان جھڑپ میں دو لوگوں کی موت ہوگئی جبکہ اس میں متعدد افراد زخمی بھی ہوگئے ۔

  • UNI
  • Last Updated: Dec 12, 2019 11:42 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
سی اے بی کے خلاف احتجاج : پولیس فائرنگ میں دو مظاہرین کی موت ، کئی دیگر زخمی ، حالات کشیدہ
گوہاٹی میں سی اے بی کے خلاف لوگ احتجاج کرتے ہوئے ۔ تصویر : پی ٹی آئی / نیوز 18 ڈاٹ کام ۔

شہریت ترمیمی بل 2019 کے خلاف آسام میں جاری مظاہرہ جمعرات کو بھی پرتشدد رہا ۔ گوہاٹی میں پولیس اور مظاہرین کے درمیان جھڑپ میں دو لوگوں کی موت ہوگئی جبکہ اس میں متعدد افراد زخمی بھی ہوگئے ۔ زخمی مظاہرین کو اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے ۔ اس سے پہلے مظاہرین نے بی جے پی کے ایک ممبر اسمبلی کے گھر کو نذر آتش کردیا ۔ نیوز ایجنسی پی ٹی آئی کے مطابق ڈبروگڑھ ضلع میں واقع چبوا میں بی جے پی ممبر اسمبلی بنود ہزاریکا کے گھر میں آگ لگادی گئی ۔ علاوہ ازیں مظاہرین نے متعدد گاڑیوں کو بھی آگ کے حوالے کردیا ۔


میگھالیہ کی راجدھانی شیلانگ میں بھی کرفیو


سی اے بی کے خلاف احتجاج کی آگ میگھالیہ تک بھی پہنچ گئی ہے ۔ میگھالیہ کی راجدھانی شیلانگ کے کچھ حصوں میں جاری مظاہروں کے درمیان جمعرات کو کرفیو اور موبائل انٹرنیٹ خدمات پر پابندی عائد کردی گئی ۔ اس دوران شیلانگ کے پولیس بازار علاقے میں نامعلوم افراد نے ایک موٹر سائیکل سمیت تین گاڑیوں کو نذرآتش کردیا۔ موٹپھرن شہر میں سی اے بی کی مخالفت میں احتجاج کر رہے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لئے پولیس نے آنسو گیس چھوڑے ۔ ایک پولیس افسر نے کہا کہ حالات کشیدہ ہیں اور پولیس نے پوری ریاست میں سیکورٹی انتظامات سخت کر دیے ہیں۔


آسام میں کئی علاقوں میں کرفیو نافذ

ادھر آسام میں شہریت ترمیمی بل کی مخالفت احتجاج جاری ہے اور ریاست کی حالت میں تیزی سے بہتری لانے کے لئے انتظامیہ نے گوہاٹی سمیت مختلف شہروں میں غیر معینہ مدت کیلئے کرفیو لگانے ، انٹرنیٹ سروس معطل کرنے کے ساتھ ساتھ کسی بھی صورت حال سے نمٹنے کے لئے فوج کو طلب کیا ہے۔

آسام میں ہوائی اور ریلوے خدمات متاثر

سی اے بی کی مخالفت میں جاری مظاہروں کی وجہ سے گوہاٹی سے کئی پروازیں منسوخ ہونے کے ساتھ ہی ریاست میں ہوائی جہاز اور ریلوے خدمات بری طرح متاثر ہوئی ہیں۔ شمال مشرقی میں کم فاصلےکی مسافر ٹرینیں جمعرات کو منسوخ رہیں۔ ساتھ ہی جمعہ کو بھی ٹرینوں کو بھی منسوخ کر دیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ ڈبروگڑھ، تنسوكيا، سلچر اور اگرتلا سے چلنے والی لمبی دوری / ایکسپریس مسافر ٹرینوں کو مختصر وقت کے لئے اور گوہاٹی اور كامكھيا ریلوے اسٹیشن سے روانہ ہونے والی ٹرینوں کو جمعرات اور جمعہ کو ملتوی کر دیا گیا ہے۔

فوج کے جوانوں کی گشت جاری

سی اے بی کی مخالفت میں جاری احتجاج کو دیکھتے ہوئے گوہاٹی اور ڈبروگڑھ میں بدھ کے روز غیر معینہ مدت کا کرفیولگایا گیا ہے جبکہ سونت پور ضلع کے تیزپور اور ڈھكياجلي تھانہ علاقوں میں جمعرات کو کرفیو نافذ رہا ۔ تنسكيا اور جورہاٹ میں آج رات کے وقت میں کرفیو لگایا گیا ہے۔ گوہاٹی، ڈبروگڑھ، تنسكيا، تیزپوراور جورہاٹ میں مختلف جگہوں سے فوج کو بلا لیا گیا ہے اور صورت حال کو معمول پر لانے کے لئے فوج کے جوانوں نے گشت کی اور انتظامی حکام نے قانونی نظم و نسق کا جائزہ لیا۔ ریاست کے 10 اضلاع میں گذشتہ شام سے 24 گھنٹے کے لئے معطل کی گئی انٹرنیٹ خدمات اگلے حکم تک ملتوی کر دی گئی ہیں۔ ریاست کے 11 اضلاع میں تعلیمی ادارے 22 دسمبر تک کے لئے بند کر دیے گئے ہیں۔

نیوز ایجنسی یو این آئی کے ان پٹ کے ساتھ
First published: Dec 12, 2019 11:42 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading