ٹوجی اسپیکٹرم کیس : آئی ڈی اور سی بی آئی کی اپیل پر ہائی کورٹ نے راجہ ، کنی موزی اور دیگر کو جاری کیا نوٹس

دہلی ہائی کورٹ نے انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ اور سی بی آئی کی اپیل پر ٹوجی اسپیکٹرم کیس سے متعلق معاملے سے وابستہ سابق ٹیلی وم وزیر اے راجہ سمیت تمام ملزمین کو آج نوٹس جاری کیا ۔

Mar 21, 2018 07:40 PM IST | Updated on: Mar 21, 2018 07:40 PM IST
ٹوجی اسپیکٹرم کیس : آئی ڈی اور سی بی آئی کی اپیل پر ہائی کورٹ نے راجہ ، کنی موزی اور دیگر کو جاری کیا نوٹس

دہلی ہائی کورٹ ۔ فائل فوٹو

نئی دہلی : دہلی ہائی کورٹ نے انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ اور سی بی آئی کی اپیل پر ٹوجی اسپیکٹرم کیس سے متعلق معاملے سے وابستہ سابق ٹیلی وم وزیر اے راجہ سمیت تمام ملزمین کو آج نوٹس جاری کیا ۔دہلی ہائی کورٹ نے ای ڈی کی طرف سے پیش ہوئے وکیل راجیو اوستھی نے یہ بات میڈیا کو بتائی ہے۔انہوں نے کہا کہ عدالت نے عبوری درخواست پر اس معاملے میں صورت حال جوں کا توں برقراررکھنے کا حکم دیا ہے اس حکم کا مطلب یہ ہوا ہے جائیدادیں ای ڈی کے قبضے میں رہیں گی۔جج ایس پی گرگ نے نوٹس جاری کرتے ہوئے کہا کہ معاملے کی اگلی سماعت 25مئی کو ہوگی۔

اس معاملے میں اے راجہ کے علاوہ ڈی ایم کے ممبر پارلیمنٹ کنی موزی اور دیگر کو نچلی عدالت نے بری کردیا تھا۔ ای ڈی نے فیصلے کے خلاف پیر کو اور سی بی آئی نے کل اپیل دائر کی تھی۔

سی بی آئی کی خصوصی عدالت کے جج او پی سینی پچھلے سال 21دسمبر کو اے راجہ اور 18 دیگر کو جس میں ڈی ایم کے ایم کروناندھی کی اہلیہ دیالو امل اور بیٹی کنی موزی کو ٹوجی سے متعلق حوالہ کاروبار میں بری کردیا تھا۔ اس کے علاوہ ایس ٹی پی اے کے شاہد بلوا اور ونود گوئینکا ، کوسے گاوں فروٹس اینڈ ویجیٹیبلس پرائیوٹ لمیٹیڈ کے آصف بلو ااور راجیو اگروال ، فلم ساز کریم مورانی بھی بری کردئے گئے تھے۔ عدالت نے معاملے میں 223کروڑ روپے مالیت کی ضبط کی گئی جائیدادوں کو بھی ریلیز کرنے کا حکم دیا تھا۔

Loading...

Loading...