உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ہندوستان سمیت 34 ملکوں نے جاری کیا مشترکہ بیان،سیکورٹی کونسل میں فوری جامع اصلاحات پر دیا زور

    ہندوستان سمیت 34 ملکوں نے جاری کیا مشترکہ بیان،سیکورٹی کونسل میں فوری جامع اصلاحات پر دیا زور

    ہندوستان سمیت 34 ملکوں نے جاری کیا مشترکہ بیان،سیکورٹی کونسل میں فوری جامع اصلاحات پر دیا زور

    مشترکہ بیان میں کہا گیا ہے کہ اقوام متحدہ میں فوری اور جامع اصلاحات کی ضرورت ہے۔ اس بات پر زور دیا گیا ہے کہ کونسل اقوام متحدہ کے چارٹر کی اکثریت پر مشتمل ترقی پذیر دنیا کی خواہشات اور تصورات کی عکاسی کرے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • New Delhi | Mumbai
    • Share this:
      UNGA : ستاہترویں یو این جی اے کی میٹنگ میں جمعہ کو اقوام متحدہ سلامتی کونسل میں فوری جامع اصلاحات کی ضرورت پر زور دیا گیا۔ ہندوستان سمیت قریب 34 ممالک نے اس تعلق سے ایک مشترکہ بیان بھی جاری کیا ہے۔ یہ جانکاری ہندوستانی وزارت خارجہ نے ٹوئٹ کے ذریعے دی ہے۔

      نیویارک میں 77ویں یو این جی اے کی میٹنگ میں ایل69 گروپ کے ارکان اور دیگر مدعوین یکسان نظریات کے حامل ممالک نے اقوام متحدہ سلامتی کونسل کے احیا اور مناسب اصلاحات کو لے کر ایک اعلیٰ سطحی میٹنگ منعقد کی۔


      وزارت نے کہا کہ ہندوستان سمیت 34 ممالک نے ایک مشترکہ بیان جاری کیا ہے جس میں اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں اصلاحات کا مطالبہ کیا گیا ہے۔ مشترکہ بیان میں کہا گیا ہے کہ اقوام متحدہ میں فوری اور جامع اصلاحات کی ضرورت ہے۔ اس بات پر زور دیا گیا ہے کہ کونسل اقوام متحدہ کے چارٹر کی اکثریت پر مشتمل ترقی پذیر دنیا کی خواہشات اور تصورات کی عکاسی کرے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      پی ایف آئی کے دہشت گرد تنظیموں سے روابط، ISIS، سمی اور اے بی ٹی کیلئے کام کرنے کا انکشاف

      یہ بھی پڑھیں:
      اسلاف کو فراموش کرنے والی قوم کبھی نہیں کر سکتی ہے ترقی

      آسٹریلیا-ہندوستان-انڈونیشیا کی سہ رخی میٹنگ
      دوسری جانب، وزیر خارجہ ڈاکٹر ایس جئے شنکر نے ایک ٹوئٹ کے ذریعے سے آسٹریلیا، بھارت، انڈونیشیا کی سہ رخی میٹنگ ہونے کی جانکاری دی ہے۔ انہوں نے ٹوئٹ میں لکھا کہ آج (جمعہ کو) نیویارک میں پہلا آسٹریلیا۔ہندوستان۔انڈونیشیا سہ رخی انعقاد شاندار رہا۔ سمندری مسائل، سمندری اقتصادیات، ڈیجیٹل اور شفاف توانائی پر آگے بڑھنے کا ہمارا خیال واضح ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: