ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

Positive News:ہواسےآکسیجن پیداکرنےکی صلاحیت والی مشینیں حیدرآبادکےگاندھی اسپتال میں کی جائیں گی نصب

مرکزی مملکتی وزیرداخلہ جی کشن ریڈی کہا”یہ تجرباتی مشینیں ہیں جو ہوا سے آکسیجن کو پیداکرنے کی صلاحیت کی حامل ہیں۔ہم گاندھی اسپتال میں ایسی دو مشینیں نصب کریں گے۔ہر مشین ہوا سے ا یک منٹ میں 960تاایک ہزار لیٹرآکسیجن پیداکرنے کی صلاحیت کی حامل ہے اس طرح دو مشینیں ایک منٹ میں گاندھی اسپتال میں تقریبا دو ہزار لیٹر آکسیجن کی پیداوار کی صلاحیت کی حامل ہوں گی۔‘‘

  • Share this:
Positive News:ہواسےآکسیجن پیداکرنےکی صلاحیت والی مشینیں حیدرآبادکےگاندھی اسپتال میں کی جائیں گی نصب
مرکزی مملکتی وزیرداخلہ جی کشن ریڈی کہا”یہ تجرباتی مشینیں ہیں جو ہوا سے آکسیجن کو پیداکرنے کی صلاحیت کی حامل ہیں۔

مرکز نے آکسیجن کنسنٹریکٹرآلات جن کے ذریعہ چاروں طرف کی وسیع ہوا سے آکسیجن کو پیدا کیاجاسکتا ہے کی تنصیب کی منظوری دے دی ہے۔اس کے ذریعہ تلنگانہ میں کوویڈ کے مریضوں کیلئے آکسیجن حاصل کیاجائے گا۔شہر حیدرآباد کے گاندھی اسپتال کے ساتھ ساتھ تلنگانہ کے کریم نگر اور ورنگل کے سرکاری ٹیچنگ اسپتالوں میں ان مشینوں کو نصب کیاجائے گا۔یہ آلات مئی کے پہلے ہفتہ میں ہوا میں اڑتے ہوئے تین مقامات پر جمع ہوں گے۔ان کے ذریعہ آکسیجن کو تیار کیا جائے گا۔مرکزی مملکتی وزیرداخلہ جی کشن ریڈی نے یہ بات بتائی۔انہوں نے کہا”یہ تجرباتی مشینیں ہیں جو ہوا سے آکسیجن کو پیداکرنے کی صلاحیت کی حامل ہیں۔ہم گاندھی اسپتال میں ایسی دو مشینیں نصب کریں گے۔ہر مشین ہوا سے ا یک منٹ میں 960تاایک ہزار لیٹرآکسیجن پیداکرنے کی صلاحیت کی حامل ہے اس طرح دو مشینیں ایک منٹ میں گاندھی اسپتال میں تقریبا دو ہزار لیٹر آکسیجن کی پیداوار کی صلاحیت کی حامل ہوں گی۔



اسی طرح کریم نگر اور ورنگل میں بھی ان مشینوں کو نصب کیاجائے گا“۔شہر حیدرآباد کے گاندھی اسپتال جہاں کورونا کے مریض بڑی تعداد میں زیر علاج ہیں،کے ساتھ ساتھ ڈسٹرکٹ اسپتال کنگ کوٹھی کا معائنہ کرنے کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے مسٹرریڈی نے کہا کہ مرکز نے تلنگانہ کے لئے 360 میٹرک ٹن آکسیجن 12اسٹیل انڈسٹریز سے الاٹ کی ہے۔تمام ریاستوں بشمول تلنگانہ کیلئے آکسیجن کے حصول کو یقینی بنانے کے اقدامات کئے جارہے ہیں۔مرکز نے ہندوستانی فضائیہ کے طیاروں کو آکسیجن ٹینکرس کی فوری منتقلی کے لئے دستیاب رکھا ہے۔انہوں نے کہا کہ تلنگانہ کو ریمڈیسور انجکشن اور آکسیجن کی فراہمی میں کوئی امتیاز نہیں کیاجارہا ہے۔مرکزی وزارت صحت نے کوویڈ کے معاملات اور اموات کی بنیاد پر وسائل الاٹ کئے ہیں۔ہر ریاست میں ایک طریقہ کار پر عمل کیاگیا ہے۔انہوں نے واضح کیا کہ عوام اور ریاستی حکومتوں کے درمیان تعاون ہے اور مرکز کوویڈ کی دوسری لہر کو شکست دینے کے طریقہ کار پر کام کررہا ہے۔انہوں نے کہاکہ وہ مزید چند اسپتالوں کا معائنہ کریں گے اور وزیراعظم کورپورٹ پیش کریں گے۔


کشن ریڈی نے تلنگانہ کے وزیر صحت ای راجندر کے ان الزامات کو مسترد کردیا جس میں انہوں نے کہا تھا کہ آکسیجن کی سپلائی اور دیگر معاملات میں مرکز کی بی جے پی حکومت تلنگانہ کے ساتھ امتیاز برت رہی ہے۔ کشن ریڈی نے کہا کہ بی جے پی حکومت کو تلنگانہ کے ساتھ ہمدردی ہے۔ کشن ریڈی نے کہا کہ مرکزی حکومت عوام کی جانوں کو بچانے کے لئے ہر ممکنہ اقدامات کررہی ہے لیکن چندرشیکھرراو خاندان مرکز پر غیر ضروری الزامات عائد کررہا ہے انہوں نے چندرشیکھرراو حکومت پر لاشوں پر سیاست کرنے کا الزام عائد کیا۔کشن ریڈی نے کہا کہ ویکسین کی قیمت کا تعین مرکزی حکومت نہیں کرتی ہے۔ اس معاملہ میں مرکز کو موردالزام ٹہرانا غلط بات ہے۔ کرناٹک اور اڈیشہ سے تلنگانہ کو 360 میٹرک ٹن آکسیجن سپلائی کیا جانے والا ہے۔ مرکزی وزیر نے کہا کہ لاک ڈاون یا دیگر سخت پابندیوں کے نفاذ کا فیصلہ ریاستی حکومت کے دائرہ اختیار میں ہے۔ اس سلسلہ میں ریاستی حکومتیں خود اپنی ریاست کے حالات کا جائزہ لینے کے بعد کریں گے۔انہوں نے کہا کہ ریاست میں درج ہونے والے کورونا کے معاملات اور اموات کی مناسبت سے مرکزی حکومت ٹیکے اور آکسیجن و دیگر ادویات سپلائی کرتی ہے۔ آئندہ دو تین دن میں تلنگانہ کو مزید آکسیجن اور ریمیڈیسور انجکشن سپلائی کیاجائے گا۔

یو این آئی ان پٹ کے ساتھ
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: Apr 24, 2021 09:29 PM IST