ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

خاتون کا الزام، 4 سال کی تھی تب سے ماما کرتا تھا آبروریزی، تین بارکرانا پڑا اسقاط حمل

خاتون نے الزام لگایا کہ پہلی بار 1981 میں اس کی آبروریزی کی گئی تھی، جب وہ محض 4 سال کی تھی اوریہ گھناؤنی حرکت اس کے ماما نے کی تھی۔

  • Share this:
خاتون کا الزام، 4 سال کی تھی تب سے ماما کرتا تھا آبروریزی، تین بارکرانا پڑا اسقاط حمل
خاتون نے الزام لگایا ہے کہ 4 سال کی تھی تب سے ماما آبروریزی کرتا تھا۔

نئی دہلی: چارسال کی عمرسے ہی ماما کے ہاتھوں مسلسل آبروریزی کی شکارہوئی اوربعد میں کئی باراسقاط حمل  سے گزرچکی 40 سال کی ایک خاتون آخرکاراسےعدالت کے کٹہرے میں کھڑا کرنےمیں کامیاب ہوگئی۔ خاتون نے الزام لگایا کہ پہلی بار 1981 میں اس کا جنسی استحصال کیا گیا تھا، جب وہ محض 4 سال کی تھی۔ 10 ویں کلاس تک پہنچنے تک اسے تین باراسقاط حمل سے گزرنا پڑا۔


ایڈیشنل سیشن جج امیش سنگھ گریوال نے یہ کہتے ہوئے ملزم کے خلاف الزام طے کیا کہ پہلی نظرمیں آئی پی سی کے تحت آبروریزی اور مجرمانہ غنڈہ گردی کے مبینہ جرم کا معاملہ بنتا ہے، جومتاثرہ کی سوتیلی بہن کا شوہربھی ہے۔

ملزم نے 1981 میں کی تھی آبروریزی


خاتون نے 2016 میں ملزم کے خلف معاملہ درج کرایا تھا۔ اس نے عدالت سے کہا کہ اس شخص نے پہلی بار1981 میں اس کے ساتھ آبروریزی کی تھی اور10 ویں کلاس تک اس کے ساتھ ایسا ہوتا رہا جب اس کا آخری باراسقاط حمل کیا گیا۔ اس نے یہ بھی کہا کہ اگست 2014 میں اس کا طلاق ہوجانے کے بعد سے وہ (ملزم) اسے سیکس کے لئے پریشان کررہا ہے۔ متاثرہ نے کہا کہ اس نے ملزم (جواس کا ماما ہے) کی حرکتوں کے بارے میں اپنی ماں اورفیملی کے دیگرلوگوں کوبتایا تھا، لیکن کوئی اس کی مدد کے لئے آگے نہیں آیا۔ بلکہ اسے ہی شکایت کرنے کولےکرپھٹکارلگائی۔ اس سے یہ بات کسی اورکونہیں بتانے کے لئے کہا گیا۔ متاثرہ نے کہا کہ بعد میں اس کی سوتیلی بہن کی شادی اس شخص کے ساتھ ہوئی، جس کے بعد دونوں اس کے ہی گھرمیں رہنےلگے اوروہ اسے اب برابرپریشان کرنے لگا۔
ملزم کے بیٹوں نے دی جان سے مارنے کی دھمکی

متاثرہ نے اپنی شکایت میں کہا کہ 2016 میں اسے اپنی ماں کے آخری رسوم میں شامل نہیں ہونے دیا گیا اوراس سے کہا گیا کہ اس کے (ماں کے) آخری درشن کرنے کے لئے ملزم کا مطالبہ تسلیم کرلیں۔ خاتون کی یہ بھی شکایت ہے کہ ملزم کے بیٹوں اوردیگررشتہ داروں نے اسے جان سے مارڈالنے کی دھمکی دی۔ ملزم کے وکیل نے عدالت میں کہا کہ وہ ملزم کے خلاف لگائے گئے الزامات پرراضی ہورہے ہیں، لیکن اس معاملے میں دیگرلوگوں کے خلاف کوئی الزام نہیں بنتا ہے کیونکہ الزام عام اورواضح ہے۔

First published: Dec 10, 2019 10:13 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading