ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

تلنگانہ میں کورونا کاقہر:پیر کے دن6ہلاکتوں کی تصدیق،سی ایم او نے عوام سے کی یہ اپیل

تلنگانہ میں کورونا سے ہونے والی جملہ 6 ہلاکتوں کی حکومت نے تصدیق کردی ہے۔تلنگانہ سی ایم او کی جانب سے ٹویٹ کرکے بتایاگیا ہے

  • Share this:
تلنگانہ میں کورونا کاقہر:پیر کے دن6ہلاکتوں کی تصدیق،سی ایم او نے عوام سے کی یہ اپیل
جموں میں وائر س کے 19 مثبت معاملات پائے گئے ہیں جن میں 17 سرگرم ہیں اور دو شفایاب ہوئے ہیں۔ اودھم پور ضلع میں اب تک کورونا مریضوں کی کُل تعداد 18 ہوئی ہیں جن میں سے 17 معاملات سرگرم ہیں جبکہ ایک کی موت واقع ہوئی ہے۔دریں اثنا راجوری ضلع میں کورونا کے اب تک تین مریض پائے گئے ہیں جن کا علاج جاری ہے۔(تصویر: علامتی فوٹو،نیوز18)۔

تلنگانہ میں کورونا سے ہونے والی جملہ 6 ہلاکتوں کی حکومت نے تصدیق کردی ہے۔تلنگانہ سی ایم او کی جانب سے ٹویٹ کرکے بتایاگیا ہے کہ دہلی کے نظام الدین تبلیغی مرکز میں 13 تا 15 مارچ منعقدہ تبلیغی اجتماع میں شرکت کرنے والوں میں سے بعض کورونا وائرس سے متاثر ہوئے۔ ان میں سے تلنگانہ سے تعلق رکھنے والے 6 افراد بھی شامل ہے اور 6 کی اموات واقع ہوچکی ہیں۔وزیراعلیٰ کے دفتر سے جاری کردہ پریس نوٹ کے مطابق دو افراد کی موت گاندھی ہاسپٹل میں ہوئی جب کہ اپولو، گلوبل ہاسپٹلس میں دو افراد فوت ہوگئے۔ اس کے علاوہ نظام آباد میں ایک، گدوال میں ایک شخص فوت ہوا۔ شبہ کیا جاتا ہے کہ ان کے ذریعہ وائرس پھیلنے کا امکان ہے۔ اسی لئے اس وائرس سے متاثر ہونے والے مشتبہ افراد کی نشاندہی کیلئے ضلع کلکٹرس کی صدارت میں خصوصی ٹیمیں تشکیل دی گئی جو انہیں ہاسپٹل منتقل کررہی ہیں۔



ان کے طبی معائنے کرواتے ہوئے ان کا علاج کروایا جارہا ہے۔تلنگانہ حکومت نے مرکز کے تبلیغی اجتماع میں شامل ہونے والے افراد کے کوروناوائرس سے متاثر ہونے کی اطلاعات کے درمیان اجتماع میں شرکت کرنے والے تمام افراد کی تفصیلات حکام کے علم میں لانے کی اپیل کی ہے۔ حکومت کی جانب سے ان تمام کے معائنہ کرواتے ہوئے ان کا مفت علاج کروانے کا یقین دلایاگیاہے۔۔سی ایم او نے سے خواہش کی گئی ہے کہ مرکز کے اجتماع سے واپس ہونے والے تمام افراد اس بات کی اطلاع حکام کو دیں۔ وہیں عوام سے بھی درخواست کی گئی ہے کہ وہ ایسے افراد سے متعلق اطلاعات حکومت تک پہنچائے۔

وہیں اس سے پہلے تلنگانہ ریاست میں پیر کے روز کورونا وائرس کے 6 نئے کیسس سامنے آئے۔ اس طرح سے ریاست میں مثبت وائرس رکھنے والوں کی تعداد جملہ 61 ہوگئی ہے۔ آج کورنٹائن میں رکھے گئے 13 افرادکو روبہ صحت ہونے پر ڈسچارج کردیا گیا۔ اس طرح سے ڈسچارج ہونے والوں کی تعداد 14 ہوگئی ہے۔ کورونا وائرس کے سبب جس شخص کے انتقال کی تفصیلات آج فراہم کی گئی۔ ان پانچ میں ایک محمد پاشاہ ولد محمد غلام عمر 55 برس ساکن متصل آنگن واڑی اسکول وینکٹ گری‘یوسف گوڑہ کے رہنے والے بتائیں گئے ہیں۔ وہ آئسکریم بنانے کا کام کرتے تھے۔ ان کا سردی‘ کھانسی اور بخار کی علامتوں کے ساتھ آج دوپہر اپولو ہاسپٹل جوبلی ہلز میں انتقال ہوگیا۔ محمد پاشاہ دیگر 2 افراد سید محمد 55 برس ساکن کرشنا نگر اور 29 سالہ عبدالقدیر امام مسجد پیلارم موضع وقار آباد کے ہمراہ 13 مارچ کو مذہبی اجتماع میں شرکت کے لئے دہلی گئے تھے اور 18 مارچ کو حیدرآباد واپس ہوئے تھے۔ انہوں نے تلنگانہ ایکسپریس میں بی 4 کوچ تھرڈ اے سی میں سفر کیا تھا۔ سفر کے دوران وہ بخار میں مبتلا ہوگئے تھے اور انہیں 27 مارچ کو سردی‘ کھانسی اور بخار کے علامات کے ساتھ ہی اپولو ہاسپٹل جوبلی ہلز میں شریک کیا گیا تھا۔ پیر کے دن دوپہر 12 بجے دن دوران علاج ان کا انتقال ہوگیا۔ ڈائریکٹر صحت و خاندانی بہبود کی جانب سے عوام سے خواہش کی گئی ہے کہ وہ گھروں میں رہیں اور پریشان نہ ہوں۔ وائرس کو روکنے کے لئے حکومت ممکنہ اقدامات کررہی ہے۔ انہوں نے افواہوں پر بھروسہ نہ کرنے اور سوشیل پلیٹ فارمس کی جھوٹی خبروں پر یقین نہ کرنے کی خواہش کی۔ اسی دوران کریم نگر میں کورونا وائرس کے مزید 2 مثبت کیسس سامنے آئے۔ کلکٹر کریم نگر ششانک نے بتایا کہ حالیہ دنوں کے دوران جو لوگ انڈونیشیاء سے کریم نگر آئے تھے ان کے ساتھ ایک شخص ساتھ رہتا تھا۔ اس کی رپورٹ مثبت برآمد ہوئی تھی۔ آج 2 نئے تازہ کیسس جو درج کئے گئے ہیں وہ اس شخص کی بہن اور ماں ہیں۔

کلکٹر کریم نگر نے بتایا کہ متاثرہ بیٹا‘ بہن اور ماں کے ساتھ جو لوگ بھی مل چکے ہیں ان تمام کی تفصیلات جمع کی جارہی ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ متاثرہ شخص کے گھر میں 8 افراد رہتے ہیں جن میں 3 کمسن بچے شامل ہیں۔ ان تمام 8 افراد کو گاندھی ہاسپٹل حیدرآباد منتقل کردیا گیا ہے۔ منتقلی کے بعد 8 میں سے 5 افراد کے نتائج منفی برآمد ہوئے۔ بچوں کے نتائج بھی منفی نکلے ہیں‘ بہن اور ماں ہی مثبت بتائے گئے ہیں۔ کلکٹر کریم نگر نے بتایا کہ مکرم پورہ جسے ریڈ زون قرار دیا گیا ہے‘ مکرم پورہ میں رہنے والوں کو گھروں کے باہر نکلنے نہیں دیا جارہا ہے۔ اس علاقہ میں رہنے والوں کو اشیائے ضروریہ‘ اجناس‘ دودھ‘ ترکاری وغیرہ ان کے گھروں پر کارپوریشن کی جانب سے سربراہ کی جارہی ہے۔

یادرہے کہ ضلع کریم نگر میں جملہ 622 کو ہوم کورنٹائن میں رکھا گیا ہے۔ سرکاری کورنٹائن مرکز شاہاتا واہانا یونیورسٹی میں قائم کیا گیا ہے جہاں 35 افراد کو رکھا گیا ہے۔ چلمڈا نرسنگ ہوم میں 49 کو رکھا گیا ہے جبکہ 2 افراد کو سرکاری مرکز میں آئیسولیشن میں رکھا گیا ہے۔ ضلع کریم نگر میں نقل مکانی کرنے والے 14995 مزدور ہیں۔ انہیں فی کس 12 کیلو چاول اور 500 روپئے کی امداد منگل کو دی جائے گی۔
First published: Mar 31, 2020 01:05 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading