ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

ملک میں کورونا وائرس کاقہر:5865مریض،169اموات،15ہزار کروڑروپئے منظور

ملک میں کورونا وائرس (كووڈ -19) سے متاثرہ افراد کی تعداد بڑھ کر 5865 اور اس کی وجہ سے 169 افراد کے ہلاک ہونے کے ساتھ ہی مرکزی حکومت نے اس وبا سے نمٹنے کے لئے قومی اور ریاستی سطح پر طبی نظام کو مضبوط بنانے کے مقصد سے 15000 کروڑ روپے کی رقم منظور کی ہے ۔

  • UNI
  • Last Updated: Apr 10, 2020 07:51 AM IST
  • Share this:

ملک میں کورونا وائرس (كووڈ -19) سے متاثرہ افراد کی تعداد بڑھ کر 5865 اور اس کی وجہ سے 169 افراد کے ہلاک ہونے کے ساتھ ہی مرکزی حکومت نے اس وبا سے نمٹنے کے لئے قومی اور ریاستی سطح پر طبی نظام کو مضبوط بنانے کے مقصد سے 15000 کروڑ روپے کی رقم منظور کی ہے ۔مرکزی وزارت برائے صحت اور خاندانی بہبود نے ریاستوں کو ارسال کئے گئے مکتوب میں کہا ہے کہ ’ كووڈ -19 ایمرجنسی رسپانس اینڈ ہیلتھ سسٹم پری پیئرڈ نس پیکج‘ کا مقصد ملک بھر میں کورونا وائرس کی تشخیص اور علاج و معالجہ کی سہولیا ت کو بڑھانا ہے ۔ اس کے تحت لازمی طبی آلات اور ادویات کی خریداری، لیبارٹری بنانا، نگرانی بڑھانا اور وسیع پیمانے پرطبی نظام کو مضبوط بنانا شامل ہے ۔ وزارتی گروپ نے اعلیٰ سطحی میٹنگ کر کے صورتحال کا جائزہ لیا اور کورونا کی روک تھام ، انتظامات اور کورونا وائرس کے علاج کے لئے مقرر اسپتالوں کے قیام پر تبادلہ خیال کیا گیا ۔


ملک میں کورونا وائرس کا  قہر:5865مریض،169اموات،15 ہزار کروڑروپئے منظور
ملک میں کورونا وائرس کا قہر:5865مریض،169اموات،15 ہزار کروڑروپئے منظور


وزارت صحت کے ترجمان لو اگروال نے جمعرات کو یہاں پریس کانفرنس میں کہا کہ ملک میں پي پی ای اور دیگر آلات کے لئے ملک میں 20 گھریلو مینوفیکچرر کو آرڈر دئے گئے ہیں اور پہلے جو آرڈر دیے گئے تھے، ان کی سپلائی شروع ہو گئی ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ تقریبا1.7 کروڑ پی پی ای اور 49 ہزار وینٹی لیٹر کے آرڈر دیے جا چکے ہیں ۔ مرکزی حکومت نے غیر سرکاری تنظیموں اور خیراتی تنظیموں کو راحتی کارروائیوں کے لئے کھلی مارکیٹ کی شرح پر راست طور پر فوڈ کارپوریشن سے اناج خریدنے کی اجازت دی ۔اڈیشہ میں پر کورونا متاثرین کی مسلسل بڑھتی ہوئی تعداد کے پیش نظر ریاستی حکومت نے لاك ڈان کو 30 اپریل تک بڑھا دیا ۔ وزیر اعلی نوین پٹنائک نے جمعرات کو ریاستی کابینہ کے اجلاس کے بعد ویڈیو پیغام کے ذریعے اس کی اطلاع دی ۔مہاراشٹر میں کورونا وائرس متاثرین کی تعداد 1،135 تک پہنچ گئی ہے اور اس سے 72 افراد ہلا ک ہو ئے ہیں ۔ اس کے بعد تمل ناڈو ہے جہاں اس سے 738 افراد متاثر ہیں اور ہلاک شدگان کی تعداد آٹھ ہو گئی ہے ۔ مہاراشٹر میں واقع ایشیا کی سب سے بڑی جھگی بستی دھاراوی میں کورونا وائرس سے 14 افراد متاثر پائے گئے ہیں اور وہاں تین افرا د جاں بحق ہو ئے ہیں۔


تمل ناڈو میں ایک دن میں کم از کم 96 افراد کے کورونا متاثرہ پائے جانے کے بعد وزیر اعلی کے پلانی سوامي نے کہا ہے کہ کورو نا کی روک تھام کی تمام کوششوں کے درمیان ریاست میں یہ انفیکشن تیسری اسٹیج یعنی کمیونٹی ٹرانسمیشن کی طرف بڑھ رہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت اس جان لیوا وائرس کو دوسری اسٹیج میں ہی روکنے کے لئے ہر ممکن کوشش کر رہی ہے لیکن خدشہ ہے کہ یہ وائرس ریاست میں تیسری اسٹیج میں پہنچے گا ۔ حکومت اسے تیسری اسٹیج میں پہنچنے سے پہلے روکنے کی حکمت عملی اپنا رہی ہے ۔ دارالحکومت دہلی میں گزشتہ چند دن میں متاثرین کی تعداد میں تیزی سے اضافہ ہونے کی وجہ سے وزیر اعلی اروند کیجریوال نے گھر سے باہر ماسک پہن کر نکلنا لازمی کر دیا ہے ۔دہلی حکومت نے پہلے ہی 20 علاقوں کو سیل کر دیا ہے ۔ ان علاقوں سے کسی بھی شخص کو گھر سے نکلنے کی اجازت نہیں ہے اور اشیائے ضروری ان کے گھر پر مہیاکرائی جائیں گی ۔ اتر پردیش میں متاثرین کی تعداد 410 تک پہنچ گئی ہے اور حکومت نے 100 علاقوں کو سیل کر دیا ہے ۔

مرکزی وزارت صحت کے تازہ ترین اعداد و شمار کے مطابق تلنگانہ میں اب تک کورونا وائرس کے 442 کیسز درج کئے گئے اور سات اموات ہوئی ہیں جبکہ راجستھان میں 383 کیسز درج کئے گئے اور تین اموات ہوئیں ۔ کیرالہ میں دو اموات کے ساتھ 345 کیسز، مدھیہ پردیش میں 259 کیسز اور 16 اموات،کرناٹک میں 181 کیسز اور پانچ اموات، گجرات میں 179 کیسز اور 16 اموات اور ہریانہ میں 169 کیسز اور تین اموات، پنجاب میں 101 کیسز اور آٹھ اموات ہوئی ہیں ۔ جموں و کشمیر میں 158 کیسز اور چار اموات ہوئی ہیں، مغربی بنگال میں 103 کیسزاور پانچ اموات، اڈیشہ میں 42 کیسز اور ایک موت، بہار میں 39 کیسزاور ایک موت، آسام میں 28 کیسز، چندی گڑھ میں 18 کیسز، ہماچل پردیش میں 18 کیسز اور ایک موت، لداخ میں 14 کیسز، جھارکھنڈ میں 13، انڈو مان نکوبار جزائر میں 11، چھتیس گڑھ میں 10 کیسز، گوا میں سات کیسز، پڈوچیري میں پانچ، منی پور میں دواور اروناچل پردیش، تریپورہ اور میزورم میں ایک ایک معاملہ سامنے آیا ہے۔۔اگروال نے بتایا کہ ہندوستانی ریلوے نے کورونا وائرس کے خلاف لڑائی میں تعاون کے لئے ڈھائی ہزار سے زائد ڈاکٹر اور 35 ہزار سے زائد پیرامیڈیکل اسٹاف تعینات کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ اس کے علاوہ ریلوے نے قرنطینہ اور آئیسولیشن کی سہولت کے لئے کوچوں کو تبدیل کر نے کا کام شروع کیا ہے ۔

ابتدائی مرحلے میں 80000 بستروں کا انتظام کرنے کیلئے قرنطینہ اور آئیسولیشن کی سہولت کے لئے ملک بھر میں 5000 ٹرین کوچوں کو تبدیل کیا جا رہا ہے ۔ اس کے لئے زونل ریلوے کی طرف سے جنگی بنیادوں پر کام شروع کر دیا گیا ہے اور 3250 ڈبوں کے تبدیلی کا کام مکمل ہو چکا ہے ۔ مرکزی وزیر زراعت نریندر سنگھ تومر نے گیہوں کی فصل کٹائی کے لئے تیار ہو جانے کی وجہ سے ریاستوں کو زراعت سے متعلق سرگرمیوں میں چھوٹ کے تعلق سے علاقائی ایجنسیوں کو بیدار کرنے اور زرعی مصنوعات، کھاد اور زرعی سامان اور مشینری کی نقل و حرکت کی اجازت دینے کے لئے کہا ۔اس دوران دنیا کے زیادہ تر ممالک میں لاک ڈاؤن ہونے کے پیش نظر بین الاقوامی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) کی منیجنگ ڈائریکٹر كرسٹینا لی جور جیوا نے کورونا وائرس وبا کو غیر معمولی بحران قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس سال صدی کی سب سے بڑی عالمی اقتصادی گراوٹ کا خدشہ ہے ۔ انہوں نے کہا کہ آج دنیا کے سامنے غیر معمولی بحران ہے ۔

First published: Apr 10, 2020 07:51 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading