உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Right To Free Speech:سابق72بیوروکریٹس کاAGکوخط،کہا-’آزادی اظہار‘کا استعمال کرنے والوں کو ہراساں کرنا بند کیا جائے

    72 سرکاری نوکرشاہوں کے اٹارنی جنرل کو لکھے خط میں محمد زبیر اور نوپور شرما کا ذکر۔

    72 سرکاری نوکرشاہوں کے اٹارنی جنرل کو لکھے خط میں محمد زبیر اور نوپور شرما کا ذکر۔

    Right To Free Speech: خط میں سپریم کورٹ کا بھی حوالہ دیا گیا۔ جس میں سپریم کورٹ نے اپنے ایک حالیہ فیصلے میں کہا ہے کہ لوگوں کی اندھا دھند گرفتاریاں اور انہیں جیل میں ڈالنا ہندوستان کو ایک پولیس اسٹیٹ بنا رہا ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: 72 سابق سرکاری بیوروکریٹس نے اٹارنی جنرل کے کے وینوگوپال کو خط لکھا ہے۔ اس میں انہوں نے آزادی کا حق استعمال کرنے والے لوگوں کی تحقیقات کرنے کو کہا ہے۔ اس میں انہوں نے کہا کہ آپ حکومت کو مشورہ دیں کہ وہ پولیس افسران کو ہدایات جاری کریں کہ وہ ایسے شہریوں کے خلاف کسی بھی قسم کی ’وچ ہنٹ‘ کو روکیں جو آزادی رائے کا حق استعمال کر رہے ہیں ساتھ ہی اس بات کو یقینی بنائیں کہ آئندہ کوئی بے بنیاد مقدمہ درج نہ کیا جائے۔ اس خط میں سابق بیوروکریٹس نے آلٹ نیوز کے شریک بانی محمد زبیر کی ذاتی شہری آزادیوں کی مسلسل خلاف ورزی پر روشنی ڈالی۔

      سابق بیوروکریٹس نے کہا کہ قانون کے سامنے مساوات کے آئینی اصول کے حامیوں کے طور پر نوپور شرما اور محمد زبیر کے درمیان بظاہر امتیازی سلوک دیکھنا بہت پریشان کن ہے۔ سابق بیوروکریٹس نے یہ خط 15 جولائی کو لکھا تھا۔ اسے ہفتہ کو عام کیا گیا۔

      خط میں انہوں نے لکھا کہ ہم آپ سے اپیل کرتے ہیں کہ آپ حکومت کو مشورہ دیں کہ وہ پولیس افسران کو ہدایات جاری کریں کہ وہ اپنے آزادی رائے کا حق استعمال کرنے والے شہریوں کے خلاف کسی بھی قسم کی وچ ہنٹ کو روکے اور اس بات کو یقینی بنائیں کہ مستقبل میں کوئی بے بنیاد مقدمہ درج نہ کیا جائے۔ اس کے ساتھ ساتھ حکومتی وکلاء کو ہدایت کی جائے کہ وہ ضمانت کی درخواستوں کی باقاعدہ مخالفت نہ کریں۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Jagdeep Dhankhar VP Candidate:نائب صدارتی عہدے کیلئے دھنکڑکیوں بنےNDAکی پسند؟

      یہ بھی پڑھیں:
      صدارتی الیکشن 2022: AAP کا بڑا اعلان، اپوزیشن امیدوار یشونت سنہا کی حمایت کرے گی کیجریوال

      خط پر دستخط کرنے والوں میں سابق ہوم سکریٹری جی کے پلئی، سابق چیف انفارمیشن کمشنر وجاہت حبیب اللہ اور سابق ہیلتھ سکریٹری کے سجاتا راؤ شامل ہیں۔ خط میں سپریم کورٹ کا بھی حوالہ دیا گیا۔ جس میں سپریم کورٹ نے اپنے ایک حالیہ فیصلے میں کہا ہے کہ لوگوں کی اندھا دھند گرفتاریاں اور انہیں جیل میں ڈالنا ہندوستان کو ایک پولیس اسٹیٹ بنا رہا ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: