ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

اکھلیش یادو کو حراست میں لئے جانے کا معاملہ: ابوعاصم اعظمی نے نظر بندی کو جمہوریت کا قتل قرار دیا

ابوعاصم اعظمی نے دھمکی آمیز لہجہ اختیار کر تے ہوئے کہا کہ اگر یوپی میں اکھلیش کے ساتھ کچھ بھی ہوا تو اس کا انجام برا ہوگا اکھلیش جی اگر کسانوں کے حق کیلئے میدان عمل میں آگئے ہیں تو انہیں کیوں روکا جارہا ہے انہیں کسانوں کے مسائل پر آواز بلند کرنے کیوں نہیں دی جارہی ہے اپوزیشن کی آواز کو دبانے کیلئے انہیں نظر بند کرنا بی جے پی کی ایک سازش ہے یہ جمہوریت کے قتل کے مترادف ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Dec 07, 2020 09:39 PM IST
  • Share this:
اکھلیش یادو کو حراست میں لئے جانے کا معاملہ: ابوعاصم اعظمی نے نظر بندی کو جمہوریت کا قتل قرار دیا
اکھلیش یادو کی نظر بندی جمہوریت کا قتل: ابو عاصم اعظمی

ممبئی: سماجوادی پارٹی کے قومی صدر اکھلیش یادو کی نظربندی جمہوریت کا قتل ہے جمہوریت کا قتل ہے جو ہٹلر کی چال وہ ہٹلر کی موت مریگا سرکار عیاری و مکاری سے کسانوں کے مسئلہ میں اپوزیشن کی آواز دبانے کی کوشش کر رہے ہیں، اگر اکھلیش یادو کسانوں کے مسئلہ پر سرکار سے سوال کر رہے ہیں تو انہیں نظر بند یا گرفتار کیوں کیا جارہا ہے۔ اس قسم کا سخت تبصرہ آج سماجوادی پارٹی لیڈر و رکن اسمبلی ابو عاصم اعظمی نے اکھلیش یادو کی نظر بندی پرکیا ہے۔

ابو عاصم اعظمی نے مودی سرکار کو ہدف تنقید بناتے ہوئے کہا کہ یہ مودی سرکار اپوزیشن کی آواز دبانے کیلئے ہر طرح کے ہتھکنڈے استعمال کر رہی ہے اگر آپ کو کسانوں سے خطرہ نہیں ہے تو ان کے مطالبات کیوں پورا نہیں کر رہے ہیں اگر آپ کو کسانوں سے ہمدردری ہے تو اس فرسودہ کسان مخالف اصلاحات زرعی بل کو واپس کیوں نہیں لیا جارہا ہے یہ اس بات کا غماز ہے کہ اپنی انا کی خاطر سرکار کسانوں پر تشدد اور ظلم کر رہی ہے انہیں سردی میں سڑکوں پر بیٹھنے پر مجبور سرکار نہ کیا ہے۔


سماجوادی پارٹی کے قومی صدر اکھلیش یادو کی نظربندی جمہوریت کا قتل ہے جمہوریت کا قتل ہے جو ہٹلر کی چال وہ ہٹلر کی موت مریگا سرکار عیاری و مکاری سے کسانوں کے مسئلہ میں اپوزیشن کی آواز دبانے کی کوشش کر رہے ہیں، اگر اکھلیش یادو کسانوں کے مسئلہ پر سرکار سے سوال کر رہے ہیں تو انہیں نظر بند یا گرفتار کیوں کیا جارہا ہے۔
سماجوادی پارٹی کے قومی صدر اکھلیش یادو کی نظربندی جمہوریت کا قتل ہے جمہوریت کا قتل ہے جو ہٹلر کی چال وہ ہٹلر کی موت مریگا سرکار عیاری و مکاری سے کسانوں کے مسئلہ میں اپوزیشن کی آواز دبانے کی کوشش کر رہے ہیں، اگر اکھلیش یادو کسانوں کے مسئلہ پر سرکار سے سوال کر رہے ہیں تو انہیں نظر بند یا گرفتار کیوں کیا جارہا ہے۔


ابو عاصم اعظمی نے دھمکی آمیز لہجہ اختیار کر تے ہوئے کہا کہ اگر یوپی میں اکھلیش کے ساتھ کچھ بھی ہوا تو اس کا انجام برا ہوگا اکھلیش جی اگر کسانوں کے حق کیلئے میدان عمل میں آگئے ہیں تو انہیں کیوں روکا جارہا ہے انہیں کسانوں کے مسائل پر آواز بلند کرنے کیوں نہیں دی جارہی ہے اپوزیشن کی آواز کو دبانے کیلئے انہیں نظر بند کرنا بی جے پی کی ایک سازش ہے یہ جمہوریت کے قتل کے مترادف ہے۔ اکھلیش یادو کی نظر بندی کی ہم سخت الفاظ میں مذمت کر تے ہیں اورسرکار کو یہ باور کرواتے ہیں کہ اکھلیش جی کے ساتھ اس قسم کا سلوک قطعی برداشت نہیں کیا جائیگا اس کے خلاف احتجاج جاری ہے ابوعاصم اعظمی نے سماجوادی پارٹی کا مہاراشٹر میں موقف واضح کرتے ہوئے کہا کہ مہاراشٹر اور ممبئی میں سماجوادی پارٹی کسانوں کے ساتھ ہیں اور اس کے شانہ بشانہ 8 دسمبر کو بھارت بند میں شریک ہے۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Dec 07, 2020 09:39 PM IST