ہوم » نیوز » وطن نامہ

لوک سبھا الیکشن میں این ڈی اے کو ملیں گی سب سے زیادہ سیٹیں مگر اقتدار سے رہے گی دور: سروے

ٹائمس ناؤ اور سروے ایجنسی وی پی ایم کے اوپینین پول کے مطابق این ڈی اے کو 252 سیٹیں ملیں گی تاہم یو پی اے کو 147 سیٹیں حاصل ہوں گی۔

  • Share this:
لوک سبھا الیکشن میں این ڈی اے کو ملیں گی سب سے زیادہ سیٹیں مگر اقتدار سے رہے گی دور: سروے
ٹائمس ناؤ اور سروے ایجنسی وی پی ایم کے اوپینین پول کے مطابق این ڈی اے کو 252 سیٹیں ملیں گی تاہم یو پی اے کو 147 سیٹیں حاصل ہوں گی۔

لوک سبھا انتخابات سے پہلے الگ- الگ سروے آنے کا سلسلہ جاری ہے۔ اب ایک انگریزی نیوز چینل کے سروے میں کہا گیا ہے کہ آئندہ عام انتخابات میں بی جے پی کی قیادت والی این ڈی اے سب سے بڑی پارٹی کے طور پر ابھرے گی لیکن اسے اکثریت حاصل نہیں ہوگی۔ وہیں کانگریس کی قیادت والی یو پی اے کی حالت اس مرتبہ خراب ہی رہےگی۔


ٹائمس ناؤ اور سروے ایجنسی وی پی ایم کے اوپینین پول کے مطابق این ڈی اے کو 252 سیٹیں ملیں گی تاہم یو پی اے کو 147 سیٹیں حاصل ہوں گی۔ وہیں دوسری جانب مقامی اور قومی جماعتوں کو 144 سیٹیں مل سکتی ہیں۔


قابل غورہے کہ 543 رکنی لوک سبھا میں بی جے پی نے 2014 میں اکثریت کے لئے ضروری 272 سے 10 سیٹ زیادہ 282 پر جیت حاصل کی تھی۔ اس طرح سےاس کے اتحاد کو کل 336 سیٹیں ملی تھیں۔


سروے میں کہا گیا ہےکہ بی جے پی کو اوڈیشہ اور مغربی بنگال میں کافی فائدہ ہو گا۔ اس کے تحت بنگال میں بی جے پی کو نو اور اوڈیشہ میں 13 سیٹیں مل سکتی ہیں۔ پارٹی نے ان دونوں ریاستوں میں پوری طاقت لگا رکھی ہے۔ 2014 میں بی جے پی کو بنگال میں دو اور اوڈیشہ میں ایک سیٹ ملی تھی۔
سروے کے مطابق گجرات اور مہاراشٹر میں بی جے پی کا پلڑا بھاری رہےگا۔ مہاراشٹر میں اسے شیوسینا کے ساتھ 48 میں سے 43 اور گجرات میں 26 میں 24 سیٹیں مل سکتی ہیں۔  وہیں دوسری جانب اترپردیش میں بی جے پی کو زبردست جھٹکا لگ سکتا ہے۔ یہاں پر بی جے پی کی قیادت والی این ڈی اے کوصرف 27 سیٹوں سے مطمئن ہونا پڑ سکتا ہے۔ ایس پی اور بی ایس پی کا اتحاد بی جے پی کو بڑا نقصان پہنچا سکتا ہے۔
سروے میں کہا گیا ہے کہ مدھیہ پردیش، راجستھان، چھتیس گڑھ میں بی جے پی کو سیٹوں کا نقصان ہوگا لیکن سب سے پڑی پارٹی بن کر وہی ابھرے گی۔ راجستھان میں اسے 25 میں سے 17، ایم پی میں 29 میں سے 23 اور چھتیس گڑھ میں 11 میں سے 5 سیٹیں مل سکتی ہے۔ بہار میں بھی مہاگٹھ بندھن این ڈی اے کو زبردست جھٹکا دے سکتا ہے۔

جنوبی ہندوستان کی ریاستوں میں بی جے پی کے لئے اچھی خبر نہیں ہے۔ یہاں پر کانگریس اور دیگر مقامی جماعتوں کا پلڑا بھاری رہے گا۔ سروے میں بتایا گیا ہے کہ تمل ناڈو میں کانگریس اور ڈی ایم کے مل کر 39 میں سے 35 سیٹیں جیت سکتی ہیں۔

 
First published: Jan 31, 2019 08:54 AM IST