உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Lulu Mall:لولو مال میں نماز پڑھنے پر گرفتار کیے گئے ملزمین کو عدالت نے دی مشروط ضمانت

    لولو مال میں نماز پڑھنے  کے الزام میں گرفتار ملزمین کو ملی ضمانت۔

    لولو مال میں نماز پڑھنے کے الزام میں گرفتار ملزمین کو ملی ضمانت۔

    Lulu Mall Namaz Row:سی جے ایم کورٹ نے ان لوگوں کو مشروط ضمانت دی ہے۔ عدالت نے شرط رکھی ہے کہ بلائے جانے پر تمام ملزمان عدالت میں پیش ہوں گے۔ ثبوتوں سے چھیڑ چھاڑ نہیں کریں گے۔ گواہوں کو دھمکیاں نہیں دیں گے۔

    • Share this:
      Lulu Mall Namaz Row: لکھنؤ کے لولو مال میں نماز پڑھنے پر ماحول کو خراب کرنے کے الزام کے تحت گرفتار کیے گئے ملزمان کو ضمانت پر رہا کر دیا گیا ہے۔ ضمانت پر جیل سے باہر آنے والے عاطف اور ریحان نے بتایا کہ وہ 12 جولائی کو مال گئے تھے۔ جب شام کی نماز کا وقت ہوا تو وہ جگہ تلاش کرنے لگے۔ اسی دوران وہاں ایک شخص نماز پڑھتا ہوا دکھائی دیا، تو اس کے بعد انہوں نے مال کے ایک کونے میں نماز ادا کی۔

      انہوں نے بتایا کہ نماز ایک کونے میں ادا کی گئی اور تقریباً 5 منٹ تک پوری نماز پڑھی گئی۔ نماز کی سمت کے بارے میں انہوں نے بتایا کہ نماز کے بعد دعا کے وقت گھوم کر بیٹھا جاتا ہے تو لوگوں نے اسے غلط طریقے سے بیان کیا۔ عاطف نے بتایا کہ تیسرے دن ویڈیو وائرل ہونے کے بعد انہیں ڈر تھا کہ کوئی انہیں مار نہ دے، اس لیے وہ سامنے نہیں آئے۔ ان لوگوں کو لکھنؤ پولیس نے لولو مال میں بغیر اجازت نماز پڑھنے پر گرفتار کیا تھا۔

      ان دو ملزمان کے علاوہ محمد عادل، محمد لقمان اور محمد نعمان کو بھی پولیس نے گرفتار کر لیا۔ عدالت نے ان لوگوں کو ضمانت پر رہا بھی کر دیا ہے۔ 12 جولائی کو ان کا لولو مال میں بغیر اجازت نماز پڑھنے کا ایک ویڈیو وائرل ہوا تھا۔ لولو مال کی انتظامیہ نے نماز پڑھنے کے سلسلے میں سوشانت گالف سٹی پولیس اسٹیشن میں رپورٹ درج کرائی تھی۔ یہ پانچوں ملزمان ایک ہی علاقے کے رہائشی ہیں۔

      یہ بھی پڑھیں:

      Madras High Court:دولہا7سمندرپار،ہندوستانی دلہن HC جا کر لے آئی آن لائن شادی کی منظوری

      یہ بھی پڑھیں:
      Nupur Sharma Row:نوپور شرما کی حمایت میں کیا کمنٹ، پاکستان سے آنے لگے دھمکی بھرے پیغام

      اگرچہ عاطف اور ریحان نے بتایا کہ بہت سے لوگوں نے مشورہ دیا کہ وہ شہر چھوڑ کر کہیں باہر چلے جائیں لیکن انہوں نے باہر نہ جانے کا فیصلہ کیا۔ عاطف اور ریحان کا کہنا تھا کہ انہیں افسوس ہے کہ ان کی وجہ سے ماحول خراب ہوا۔ سی جے ایم کورٹ نے ان لوگوں کو مشروط ضمانت دی ہے۔ عدالت نے شرط رکھی ہے کہ بلائے جانے پر تمام ملزمان عدالت میں پیش ہوں گے۔ ثبوتوں سے چھیڑ چھاڑ نہیں کریں گے۔ گواہوں کو دھمکیاں نہیں دیں گے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: