گورنر سے ملاقات کے بعد آدتیہ ٹھاکرے نے کہا : حکومت پر اودھو ٹھاکرے ہی کریں گے حتمی فیصلہ

آدتیہ ٹھاکرے نے کہا کہ ریاست میں حکومت کی تشکیل کے تعلق سے صرف شیوسینا کے سربراہ ادھوٹھاکرے کا فیصلہ حتمی ہوگا اور وہ فی الحال اس بارے میں کچھ نہیں کہیں گے۔

Oct 31, 2019 09:47 PM IST | Updated on: Oct 31, 2019 09:47 PM IST
گورنر سے ملاقات کے بعد آدتیہ ٹھاکرے نے کہا : حکومت پر اودھو ٹھاکرے ہی کریں گے حتمی فیصلہ

گورنر سے ملاقات کے بعد آدتیہ ٹھاکرے نے کہا : حکومت پر اودھو ٹھاکرے ہی کریں گے حتمی فیصلہ ۔ تصویر : نیوز 18 ہندی ۔

مہاراشٹرمیں یووا شیوسینا کے سربراہ اور نومنتخب ایم ایل اے آدتیہ ٹھاکرے نے آج کہا ہے کہ ریاست میں حکومت کی تشکیل کے تعلق سے صرف شیوسینا کے سربراہ ادھوٹھاکرے کا فیصلہ حتمی ہوگا اور وہ فی الحال اس بارے میں کچھ نہیں کہیں گے۔ راج بھون میں ریاستی گورنر بھگت سنگھ کوشیاری سے ملاقات کے بعد نامہ نگاروں سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے مزید کہا کہ ادھو کا فیصلہ آخری ہوگا۔

اس موقع پر شیوسینا کے تمام اراکین اور دیگر حامیوں نے بھی شرکت کی اور گورنر سے مطالبہ کیا کہ ریاست میں بے موسم بارش اور کئی علاقوں میں قحط سالی جیسے حالات سے نمٹنے کے لیے اقدامات کیے جائیں ۔ واضح رہے کہ فی الحال شیوسینا اور بی جے پی کے درمیان حکومت کی تشکیل کے سلسلے میں تنازع جاری ہے اور ایک ہفتے سے زیادہ عرصہ گزرجانے کے بعد بھی حکومت تشکیل نہیں دی جاسکی ہے۔

Loading...

مہاراشٹر میں اسمبلی الیکشن نتائج کے آٹھ روز گزرجانے کے باوجود حکومت کی تشکیل نہ ہونے کے نتیجے میں عوام میں بے چینی پائی جاتی ہے۔ دریں اثنا شیوسینا کے ترجمان سنجے راوت نے کہا ہے کہ مہاراشٹر میں وزیراعلیٰ کے عہدے پر ہونے والے تنازعہ کی وجہ سے ہم ہی ریاست میں حکومت کی تشکیل کے لیے کنڈلی بنائیں گے۔ انہوں نے فڑنویس کے ذریعہ 50 -50 کے فارمولے کو مسترد کیے جانے کے بیان پر پارٹی صدرادھوٹھاکرے کی ناراضگی کا اعتراف کرتے ہوئے کہا کہ آج ہونے والی گفتگو کو منسوخ کردیا گیا ہے ۔

انہوں نے کہا کہ شیوسینا ہی حکومت کی کنڈلی بنائے گی اور کس گھر کو زائچہ میں رکھا گیا ہے اور کون سے ستارے زمین پر لائے جانے ہیں ، کس طرح کی چمک دینی ہے۔ شیوسینا میں اب بھی اتنی طاقت ہے۔جبکہ ایکناتھ شندے کو آج یہاں پارٹی کی اسمبلی میں لیڈر منتخب کرلیا گیا ہے ، ان کانام ادیتہ ٹھاکرے نے پیش کیا تھا۔

حالانکہ انہوں نے کہا کہ کوئی بھی سیاستدان یا ایم ایل اے جس کی اکثریت 145 ہے وہ وزیر اعلی بن سکتا ہے۔ جس کی تعداد 145 ہو ، گورنر نے اسے مدعو کیا ہے۔ لیکن انہیں فرش پر اکثریت ثابت کرنا ہوگی ۔ واضح رہے کہ سنجے راوت نے جمعرات کو کہا کہ بی جے پی اور شیوسینا کے مابین آج چار بجے ملاقات طے تھی ، لیکن اگر وزیراعلیٰ خود کہتے ہیں کہ 50-50 کے فارمولے پر بات نہیں ہوئی ہے ، تو پھر ملاقات کا کیا فائدہ ہے ،اس لیے میٹنگ کو منسوخ کردیا گیا ہے اور ادھوٹھاکرے بھی فڑنویس کے بیان سے ناراض ہیں۔اس طرح آٹھ روز بعد بھی دونوں اتحادی پارٹیوں میں تال میل نہیں نظرآرہا ہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز شیوسینا لیڈرشپ کے رویہ میں نرمی دیکھی گئی تھی ، لیکن آج اس کے تیورسخت ہوگئے اور شیوسینا نے پھر سے ڈھائی ڈھائی سال کے لیے وزیراعلیٰ کے عہدہ کامطالبہ پیش کردیا ۔ پارٹی کے ترجمان اخبار سامنا کے اداریہ میں لکھا گیا ہے کہ دونوں پارٹیوں کے درمیان اختلافات برقرار ہیں اور شیوسینا اپنے مطالبہ پر قائم ہے۔

Loading...