உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جامعہ ملیہ اسلامیہ میں Common University Entrance Test کے ذریعہ ہوں گے داخلے

    جامعہ ملیہ اسلامیہ میں کامن یونیورسٹی انٹرنس ٹسٹ کے ذریعہ ہوں گے داخلے

    جامعہ ملیہ اسلامیہ میں کامن یونیورسٹی انٹرنس ٹسٹ کے ذریعہ ہوں گے داخلے

    جامعہ ملیہ اسلامیہ کی طرف سے باضابطہ طور پر ایک پریس ریلیز جاری کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ جامعہ یونیورسٹیوں کے لئے مرکزی حکومت کی پالیسی یعنی مشترکہ یونیورسٹی مقابلہ جاتی امتحانات (کامن یونیورسٹی انٹرنس ٹسٹ) کے طریقہ کار کو رواں برس سے اپنائے گی۔

    • Share this:
    نئی دہلی: مرکزی یونیورسٹیوں میں انڈرگریجویٹ داخلوں کے لئے لائی گئی  پالیسی پرجامعہ ملیہ اسلامیہ نے بھی مہر لگا دی ہے اور اس سلسلے میں جامعہ ملیہ اسلامیہ کی طرف سے باضابطہ طور پر ایک پریس ریلیز جاری کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ جامعہ یونیورسٹیوں کے لئے مرکزی حکومت کی پالیسی یعنی مشترکہ یونیورسٹی مقابلہ جاتی امتحانات (کامن یونیورسٹی انٹرنس ٹسٹ) کے طریقہ کار کو رواں برس سے اپنائے گی۔
    جامعہ ملیہ اسلامیہ کی طرف سے جاری کی گئی پریس ریلیز میں بتایا گیا ہے کہ جامعہ ملیہ اسلامیہ سال 23-2022 تعلیمی سال سے انڈر گریجویٹ پروگراموں میں داخلے کے لئے کامن یونیورسٹی انٹرنس ٹسٹ (سی یو ای ٹی) اپنائے گا۔ یونیورسٹی کے سرکردہ عہدیداروں کی میٹنگ میں فیصلہ کیا گیا کہ منتخب انڈرگریجویٹ پروگراموں میں داخلے کامن یونیورسٹی انٹرنس ٹسٹ (سی یو ای ٹی) سے دیئے جائیں گے۔

    جامعہ ملیہ اسلامیہ کی طرف سے جاری کی گئی پریس ریلیز میں بتایا گیا ہے کہ جامعہ ملیہ اسلامیہ سال 23-2022 تعلیمی سال سے انڈر گریجویٹ پروگراموں میں داخلے کے لئے کامن یونیورسٹی انٹرنس ٹسٹ (سی یو ای ٹی) اپنائے گا۔
    جامعہ ملیہ اسلامیہ کی طرف سے جاری کی گئی پریس ریلیز میں بتایا گیا ہے کہ جامعہ ملیہ اسلامیہ سال 23-2022 تعلیمی سال سے انڈر گریجویٹ پروگراموں میں داخلے کے لئے کامن یونیورسٹی انٹرنس ٹسٹ (سی یو ای ٹی) اپنائے گا۔


    یونیورسٹی نے یونیورسٹی گرانٹس کمیشن (یو جی سی) اور نیشنل ٹسٹنگ ایجنسی (این ٹی اے) کو اس فیصلہ کی اطلاع دے دی ہے۔ طلبا کو مشورہ دیاجاتا ہے کہ کورسیز اور دیگر تفصیلات کے لیے وہ یونیورسٹی کی ویب سائٹ  www.jmi.ac.inاور http://jmicoe.in  کو برابر چیک کرتے رہیں۔ ان کورسیز میں اپلائی کرنے کے خواہاں طلبا کو سی یو ای ٹی کے ساتھ ساتھ جامعہ کا فارم بھی بھرنا ہوگا۔

    یہ بھی پڑھیں۔

    وزیراعلیٰ Yogi Adityanath نے وزرا میں قلمدان تقسیم کئے، خود کے پاس رکھے 34 محکمے

    یونیورسٹی روایت کے مطابق، جے ای ای میں حاصل شدہ نمبرات کی بنیاد پر طلبا کو بی ٹیک پروگرام میں داخلے دے گی اور بی ڈی ایس میں نیٹ میں حاصل شدہ نمبرات کی بنیاد پر داخلے دیئے جائیں گے۔ بی ٹیک کے امیدوار جے ای ای کے ساتھ جامعہ کا بھی فارم بھریں گے۔

    غور طلب ہے کہ اس سے پہلے جامعہ ملیہ اسلامیہ یونیورسٹی کی سطح پر خود مقابلہ جاتی امتحانات کا انعقاد کرتی تھی، لیکن اب اب مرکزی حکومت کے ذریعہ جس طرح سے میڈیکل کے لئے نیٹ کا امتحان ہوتا ہے، اسی طرح سے انڈرگریجویٹ کورسز کے لئے بھی اب مقابلہ جاتی امتحانات ہوں گے اور کامیاب امیدواروں کو مرکزی یونیورسٹیوں میں داخلہ مل سکے گا۔
    Published by:Nisar Ahmad
    First published: