اپنا ضلع منتخب کریں۔

    بچے نہ دیکھ پائیں فحش فلمیں، اس لئے فون میں آج ہی بدل دیں یہ سیٹینگ

    ۔ آج جب بچوں کے ہاتھ میں موبائل پہنچ گیا ہے تو ان کی انٹرنیٹ پر پورن تک رسائی بہت آسان ہو گئی ہے۔ جس کی وجہ سے ان کے غلط راستے پر جانے کا خطرہ بھی بہت بڑھ گیا ہے۔

    ۔ آج جب بچوں کے ہاتھ میں موبائل پہنچ گیا ہے تو ان کی انٹرنیٹ پر پورن تک رسائی بہت آسان ہو گئی ہے۔ جس کی وجہ سے ان کے غلط راستے پر جانے کا خطرہ بھی بہت بڑھ گیا ہے۔

    ۔ آج جب بچوں کے ہاتھ میں موبائل پہنچ گیا ہے تو ان کی انٹرنیٹ پر پورن تک رسائی بہت آسان ہو گئی ہے۔ جس کی وجہ سے ان کے غلط راستے پر جانے کا خطرہ بھی بہت بڑھ گیا ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi, India
    • Share this:
      نئی دہلی. ایک طرف جہاں ہم انٹرنیٹ کی دنیا میں تیزی سے آگے بڑھ رہے ہیں وہیں دوسری طرف اس کی وجہ سے خطرات اور خامیوں کا خطرہ بھی مسلسل بڑھ رہا ہے۔ آج جب بچوں کے ہاتھ میں موبائل پہنچ گیا ہے تو ان کی انٹرنیٹ پر پورن تک پہنچ بہت آسان ہو گئی ہے۔ جس کی وجہ سے ان کے غلط راستے پر جانے کا خطرہ بھی بہت بڑھ گیا ہے۔ ایسا ہی ایک معاملہ منگل کو حیدرآباد میں سامنے آیا جہاں پورن کے عادی پانچ نوجوانوں کو ایک 17 سالہ طالبہ کے ساتھ کئی بار ریپ کرنے کے الزام میں گرفتار کیا گیا ہے۔ واقعہ کے بارے میں معلومات دیتے ہوئے پولیس کمشنر نے کہا کہ یہ تمام ملزم نوجوان اکثر اسکول کے بعد علاقے میں گھومتے تھے اور اپنے موبائل فون پر فحش ویڈیوز دیکھتے رہتے تھے۔ ملزموں میں سے چار لڑکوں پر عصمت دری کا الزام ہے، جب کہ پانچویں لڑکے کے خلاف ریپ کے واقعے کی ویڈیو ریکارڈ کرنے اور پھر اسے واٹس ایپ پر شیئر کرنے کا مقدمہ درج کیا گیا ہے۔
      آج کی ضرورت کے مطابق والدین بچوں کے ہاتھ میں فون دے دیتے ہیں لیکن اس بات کا خدشہ ہوتا ہے کہ کہیں وہ کوئی ایسا مواد نہ دیکھ رہے ہوں جو ان کے لیے درست نہ ہو۔ کئی رپورٹس میں یہ بات بھی سامنے آئی ہے کہ بچوں میں پورن کی لت بہت تیزی سے بڑھتی ہے جس کی وجہ سے ان کا دماغ بری طرح متاثر ہوتا ہے۔

      فحش فلمیں دیکھنے کی تھی لت، 5 کلاس میٹ نے دوست لڑکی کا کیا ریپ، ویڈیو بھی بنایا اور۔۔۔۔

      بیٹی کو ڈیٹ کرنے والے مردوں کیلئے خاتون نے بنائے یہ پانچ قوانین، اسکے علاوہ چکانا ہوگا بل

      اسی لیے آج ہم آپ کو فون کی کچھ ایسی سیٹنگز کے بارے میں بتانے جا رہے ہیں، جنہیں آن کر کے والدین ایڈلٹ کنٹینٹ تک پہنچنے پر پابندی لگا سکتے ہیں۔

      اینڈرائیڈ پر ایڈلٹ Adult مواد کو کیسے بلاک کیا جائے؟

      پہلا طریقہ - گوگل پلے Google Play ریسٹریکشن
      فون کو بچوں کے لیے محفوظ بنانے اور اپنے بچوں کو ایڈلٹ مواد سے بچانے کے لیے، آپ کو سب سے پہلے اینڈرائیڈ پر گوگل پلے پابندیوں کو آن کرنا ہوگا۔ یہ بچے کو ایسی ایپس، گیمز اور دیگر ویب وسائل کو ڈاؤن لوڈ کرنے سے روکے گا جو ان کی عمر کے لحاظ سے مناسب نہیں ہے۔

      1) اس کے لیے پہلے بچے کی ڈیوائس پر گوگل پلے اسٹور پر جائیں۔

      2) اس کے بعد بائیں کونے میں سیٹنگز میں جائیں۔

      3) اس کے بعد آپ کو 'پیرنٹل کنٹرولز' کا آپشن ملے گا۔

      4) اس پر ٹیپ کرنے پر آپ سے ایک پن سیٹ کرنے کو کہا جائے گا۔ والدین ایک PIN سیٹ کرکے Parental controls سیٹنگ کو تبدیل کر سکتے ہیں۔

      5) PIN سیٹ ہونے کے بعد، آپ ہر زمرے کے لیے اسٹور پر مبنی عمر کی درجہ بندی کی بنیاد پر پابندیاں لگا سکتے ہیں۔ آپ کو صرف یہ ذہن میں رکھنا ہے کہ آپ کو یہ PIN اپنے بچے کو نہیں بتانا چاہیے۔

      دوسرا طریقہ- کروم پر آن کریں سیف سرچ
      نامناسب مواد کو بلاک کرنے کا دوسرا طریقہ یہ ہے کہ اینڈرائیڈ پر گوگل سیف سرچ فیچر کو آن کیا جائے۔ یہ یقینی بنانا اچھا ہے کہ جب بچے گوگل کروم ایپ کا استعمال کرتے ہوئے ویب براؤز کرتے ہیں، تو وہ غلطی سے کسی ایسی چیز پر نہ پہنچ جائیں جس کا ان کا مطلب نہیں تھا۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: