உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کابل میں ہندوستانی سفارت خانہ بند، اسٹاف نکلنے کیلئے تیار، کابل ہوائی اڈہ پر سبھی اڑانیں روکی گئیں

    کابل میں ہندوستانی سفارت خانہ بند، اسٹاف نکلنے کیلئے تیار، کابل ہوائی اڈہ پر سبھی اڑانیں روکی گئیں .(Moritz Frankenberg/dpa via AP)

    کابل میں ہندوستانی سفارت خانہ بند، اسٹاف نکلنے کیلئے تیار، کابل ہوائی اڈہ پر سبھی اڑانیں روکی گئیں .(Moritz Frankenberg/dpa via AP)

    ادھر ہندوستانی وزارت خارجہ کا کہنا ہے کہ افغانستان کی صورتحال پر اعلی سطح پر مسلسل سخت نظر رکھی جارہی ہے اور حکومت وہاں پھنسے ہندستانی شہریوں کی حفاظت اور ملک کے مفادات کی حفاظت یقینی بنانے کے لئے تمام اقدامات کرے گی ۔

    • Share this:
      نئی دہلی : راجدھانی کابل پر طالبان کے قبضہ اور صدر اشرف غنی کے استعفی دے کر ملک چھوڑ کر فرار ہوجانے کے بعد ہر لمحہ افغانستان حالات بدل رہے ہیں ۔ ذرائع نے پیر کو سی این این نیوز ۱۸ کو بتایا کہ کابل میں حالات خراب ہونے کی وجہ سے ہندوستانی سفارتخانہ کو بند کردیا گیا ہے ۔ ذرائع نے کہا کہ ملازمین نکلنے کیلئے تیار ہیں ، کیونکہ سفارت خانہ میں صرف افغان ملازمین ہی کام کریں گے ۔ وہیں میڈیا رپورٹس کے مطابق کابل ایئرپورٹ پر سبھی اڑانیں روک دی گئی ہیں ۔

      ادھر ہندوستانی وزارت خارجہ کا کہنا ہے کہ افغانستان کی صورتحال پر اعلی سطح پر مسلسل سخت نظر رکھی جارہی ہے اور حکومت وہاں پھنسے ہندستانی شہریوں کی حفاظت اور ملک کے مفادات کی حفاظت یقینی بنانے کے لئے تمام اقدامات کرے گی  ۔ وزار ت خارجہ کے ترجمان ارندم باگچی نے افغانستان کی صورتحال سے متعلق میڈیا کے سوال کے جواب میں پیر کو کہا کہ کابل میں سیکورٹی صورتحال گزشتہ کچھ دنوں میں بہت خراب ہوئی ہے اور یہ بہت تیزی سے تبدیل ہورہی ہے۔

      انہوں نے کہا کہ حکومت افغانستان کے واقعات پر سخت نظر رکھے ہوئے ہے۔ وہاں پھنسے لوگوں کی حفاظت اور ہندستانی مفادات کی حفاظت کے لئے باقاعدہ طورپر ایڈوائزری جاری کی جارہی ہے۔ ساتھ ہی ان کی فوری طورپر واپسی کے لئے بھی کوشش کی جارہی ہے۔ وہاں پھنسے لوگوں کے لئے ہنگامی حالت میں رابطہ کرنے کے لئے نمبر جاری کئے گئے ہیں۔ اس کے علاوہ کمیونٹی کے اراکین کو بھی مدد پہنچائی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں اس بات کا پتہ ہے کہ اب بھی وہاں ہندستانی شہری ہیں جو واپس آنا چاہتے ہیں اور ہم ان کے ساتھ رابطہ قائم کئے ہوئے ہیں۔

      انہوں نے کہا کہ اس کے ساتھ ہی ہم وہاں پر مقیم افغان سکھ اور ہندو کمیونٹی کے ساتھ رابطہ میں بھی ہیں۔ جو بھی افغانستان سے واپس آنا چاہتا ہے ہم اس کی مدد کریں گے۔ ایسے بھی کئی افغانی شہری ہیں ، جنہوں نے ترقی، تعلیم اور لوگوں کے درمیان رابطہ بڑھانے میں ہمارے ساتھ شراکت داری کی تھی ، ہم ان کے ساتھ کھڑے رہیں گے۔

      ارندم باگچی نے کہا کہ کابل ہوائی اڈہ سے تجارتی پروازوں کو آج ملتوی کردیا گیا ہے جس سے لوگوں کو واپس لانے کی ہماری کوششوں میں رکاوٹ آئی ہے۔ ہم اس عمل کو شروع کرنے کے لئے پروازوں کے بحال ہونے کا انتظار کررہے ہیں ۔

      نیوز ایجنسی یو این آئی کے ان پٹ کے ساتھ ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: