اپنا ضلع منتخب کریں۔

    وزیراعظم مودی کے سارے ریکارڈ توڑنا چاہتے ہیں اروند کجریوال: اسدالدین اویسی

    اسدالدین اویسی ۔  فائل فوٹو ۔

    اسدالدین اویسی ۔ فائل فوٹو ۔

    حیدرآباد کے رکن پارلیمنٹ نے عوامی جلسہ میں دعویٰ کیا کہ،دہلی کے وزیر اعلیٰ نے تبلیغی جماعت کے خلاف ایف آئی آر درج کرائی۔ وہ 2013 کے نریندر مودی ہیں اور اپنے تمام ریکارڈ توڑنا چاہتے ہیں۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • New Delhi, India
    • Share this:
      آل انڈیا مجلس اتحادالمسلمین (اے آئی ایم آئی ایم) کے سربراہ اسدالدین اویسی نے اتوار کو اروند کجریوال کی عام آدمی پارٹی (عاپ) پر طنز کرنے کے لیے ’چھوٹا رچارج‘ لفظ کا استعمال کیا اور الزام لگایا کہ دہلی کے وزیراعلیٰ نے مسلمانوں کو بدنام کیا تھا وہ نریندر مودی کے سبھی ریکارڈ توڑنا چاہتے ہیں۔ ایم آئی ایم نے ایم سی ڈی الیکشن میں 16 امیدوار اتارے ہیں۔

      چار دسمبر کو ہونے والے دلی میونسپل (ایم سی ڈی) الیکشن میں سیلم پور سے ایم آئی ایم کے امیدوار کے لیے تشہیر کرتے ہوئے اسدالدین اویسی نے الزام لگایا کہ فروری 2020 میں شمال مشرقی دلی میں ہوئے فسادات کے دوران کجریوال غائب ہوگئے تھے جب کہ وہ شہریت ترمیمی قانون (سی اے اے) کے خلاف شاہین باغ میں مظاہرہ کرنے والوں کے خلاف بولے تھے۔ صدر مجلس نے کہا، ’جب لوگ کوویڈ-19 سے پریشان تھے، آکسیجن اور اسپتال میں بستروں کے لیے جدوجہد کررہے تھے تب دہلی کے وزیراعلیٰ زہر اگلا اور کہا کہ تبلیغی جماعت کی وجہ سے کورونا وائرس پھیل رہا ہے۔ انہوں نے تبلیغی جماعت کو بدنام کیا۔‘

      انہوں نے کہا کہ ’دہلی میں کوویڈ کیسیز کی فہرست میں ایک کالم تھا جس میں تبلیغی جماعت کے ارکان کو ’سوپر اسپریڈرس‘ کے طور پر بتایا جاتا تھا۔ پورا ملک مسلمانوں پر شک کرنے لگا۔ نفرت بڑھ گئی اور کئی لوگوں پر حملہ کیا گیا۔ اس کے لیے دہلی کے وزیراعلیی ذمہ دار ہیں۔ ‘ اویسی نے الزام لگایا کہ دہلی کے وزیراعلیٰ نے کہا تھا کہ وہ آدھے گھنٹے میں شاہین باغ میں (سی اے اے مخالف) مظاہرین کو ہٹادیتے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      ’کانگریس نےدہشت گردوں کےبجائےمجھ پرحملہ کیا‘ پی ایم مودی نےگجرات ریلی میں کیاجوابی حملہ

      یہ بھی پڑھیں:
      میسور:مسجد نما بس اسٹاپ کو راتوں رات مکمل طورپرکیاگیا تبدیل، BJP MP کی ورننگ کا شاخسانہ!

      حیدرآباد کے رکن پارلیمنٹ نے عوامی جلسہ میں دعویٰ کیا کہ، ’ان کی پارٹی کے ایک شخص نے، جو بعد میں بی جے پی میں شامل ہوگیا، ’گولی مارو‘ کا نعرہ لگایا۔ انہوں نے آگے کہا کہ، 'دہلی کے وزیر اعلیٰ نے تبلیغی جماعت کے خلاف ایف آئی آر درج کرائی، لیکن اس شخص کے خلاف ایف آئی آر درج نہیں کی۔ یہ ان کا اصلی چہرہ ہے۔ وہ 2013 کے نریندر مودی ہیں اور اپنے تمام ریکارڈ توڑنا چاہتے ہیں۔اویسی نے کہا، “گھروں کو جلایا گیا اور لوگ مارے گئے (2020 کے فسادات میں)۔ دہلی کے وزیر اعلیٰ کہیں نظر نہیں آئے۔ اے آئی ایم آئی ایم کے سربراہ نے کہا کہ ان کی پارٹی بی جے پی کو جیتنے میں مدد نہیں کرتی ہے لیکن عاپ اور کانگریس کرتے ہیں اور پھر "وہ کہتے ہیں کہ اویسی کی وجہ سے بی جے پی کو فائدہ ہو رہا ہے"۔ اویسی نے مسلم کمیونٹی سے کہا کہ وہ اے آئی ایم آئی ایم کے امیدواروں کو ووٹ دے کر اپنی قیادت تشکیل دیں۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: