உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پاکستان F-16 جنگی طیارہ مار گرانے والے ونگ کمانڈر ابھینندن ورتھمان کو ملا پرموشن

    ذرائع کا کہنا ہے کہ رینک کی منظوری دے دی گئی ہے اور انہیں مقررہ عمل مکمل ہونے کے بعد مل جائے گا۔

    ذرائع کا کہنا ہے کہ رینک کی منظوری دے دی گئی ہے اور انہیں مقررہ عمل مکمل ہونے کے بعد مل جائے گا۔

    ذرائع کا کہنا ہے کہ رینک کی منظوری دے دی گئی ہے اور انہیں مقررہ عمل مکمل ہونے کے بعد مل جائے گا۔

    • Share this:
      نئی دہلی. ہندوستانی فضائیہ (Indian Air Force) نے ونگ کمانڈر ابھینندن ورتھمان  (Abhinandan Varthaman)  کو 'گروپ کیپٹن' کے عہدے کی منظوری دے دی ہے۔ سرکاری ذرائع نے بدھ کو یہ اطلاع دی۔ ابھینندن ورتھمان نے فروری 2019 میں پاکستان کے ساتھ فضائی جھڑپ کے دوران دشمن کے ایک جنگی طیارے کو مار گرایا تھا اور انہیں پڑوسی ملک پاکستان (Pakistan) میں تین دن تک یرغمال بنائے رکھا گیا تھا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ رینک کی منظوری دے دی گئی ہے اور انہیں مقررہ عمل مکمل ہونے کے بعد مل جائے گا۔ اس عمل کو تفصیل سے بتاتے ہوئے انہوں نے کہا کہ نیا رینک ملنے کے بعد جب کوئی عہدہ خالی ہوتا ہے تو کوئی بھی افسر اس پر فائز ہوتا ہے۔

      ونگ کمانڈر ابھینندن ورتھمان نے 27 فروری 2019 کو ایک پاکستانی جنگی طیارہ مار گرایا تھا، جب پڑوسی ملک نے بالاکوٹ فضائی حملے کو لیکر  ایک دن پہلے ہندوستان کے خلاف جوابی کارروائی شروع کی تھی۔ ونگ کمانڈر ابھینندن کو پاکستان نے اس وقت پکڑ لیا تھا جب ان کا مگ 21 طیارہ دونوں ممالک کے درمیان فضائی جھڑپ کے دوران گر گیا۔ یہ واقعہ دو جوہری ہتھیاروں سے لیس پڑوسیوں کے درمیان دہائیوں میں سب سے سنگین فوجی بحران تھا۔

      ابھینندن ورتھمان نے اپنے طیارے کے گرنے سے پہلے پاکستان کے F-16 جنگی طیارے کو مار گرایا تھا۔ ابھینندن کو پاکستان نے یکم مارچ کی رات رہا کردیا تھا۔ انہیں فضائی جھڑپ کے دوران مگ 21 بائیسن سے چھلانگ لگاتے ہوئے چوٹیں آئی تھیں۔ اسی سال کے آخر میں، انہیں ویر چکر سے نوازا گیا، جو ہندوستان کا تیسرا اعلیٰ ترین جنگی تمغہ ہے۔

       
      Published by:Sana Naeem
      First published: