உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    DGCA amends Rules:ڈاکٹر کی رائے پر ہی معذوروں کے سفر پر ایئرلائنس لے گی فیصلہ، ڈی جی سی اے نے نئے اصولوں کا مسودہ کیا تیار

    DGCA amends Rules:ڈاکٹر کی رائے پر ہی معذوروں کے سفر پر ایئرلائنس لے گی فیصلہ

    DGCA amends Rules:ڈاکٹر کی رائے پر ہی معذوروں کے سفر پر ایئرلائنس لے گی فیصلہ

    DGCA amends Rules: کوئی بھی ایئر لائن کسی مسافر کو صرف اس کی معذوری کی وجہ سے ہوائی جہاز میں سفر کرنے سے نہیں روک سکتی۔

    • Share this:
      DGCA amends Rules: ملک کی تمام ایئر لائنز کے لیے ڈائریکٹوریٹ جنرل آف سول ایوی ایشن (DGCA) نے جمعہ کو نئے قوانین کا مسودہ جاری کیا ہے۔ اس میں کہا گیا ہے کہ اگر کسی ایئر لائن کو لگتا ہے کہ دوران پرواز کسی معذور مسافر کی صحت خراب ہو سکتی ہے تو اسے ہوائی اڈے پر موجود ڈاکٹر سے رجوع کرنا چاہیے۔ اس بنیاد پر اسے مسافر کو پرواز کی اجازت نہ دینے یا نہ دینے کا مناسب فیصلہ کرنا ہوگا۔

      ڈاکٹر کی تحریری رائے لینی ہوگی
      28 مئی کو ڈی جی سی اے ریگولیٹر نے کہاتھا کہ مستقبل میں اس طرح کے حالات سے نمٹنے کے لیے نئے قوانین پر عمل کیا جانا چاہیے۔ ہوائی مسافروں کی صحت کے حوالے سے ایئرپورٹ کے ڈاکٹر کی تحریری رائے لینی ہوگی۔ اس بنیاد پر اسے طیارے میں سوار ہونے سے روکا جا سکتا ہے۔ کوئی بھی ایئر لائن کسی مسافر کو صرف اس کی معذوری کی وجہ سے ہوائی جہاز میں سفر کرنے سے نہیں روک سکتی۔

      DGCAنے عوام سے طلب کی رائے
      ڈی جی سی اے کی طرف سے جاری کردہ ڈرافٹ رولز میں ریگولیٹر نے کہا ہے کہ اگر مسافر جہاز میں اڑان بھرنے کے لیے صحتمند ہے تو صرف طبی بنیادوں پر اس کا ٹیسٹ کیا جائے گا۔ عوام سے ان نئے قوانین کے مسودے پر ڈی جی سی اے نے 2 جولائی تک رائے طلب کی ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      مکیش امبانی بنے ایشیا کے سب سے امیر شخص، جانئے ہندوستان کے دوسرے ارب پتیوں سے

      یہ بھی پڑھیں:
      Civil Services Exam:پچھڑے-غریب طلبہ کوسول سروس امتحان کی تیاری کرائینگے سینٹرل یونیورسٹیاں

      رانچی ہوائی اڈے کے معاملے میں صرف چھ دن پہلے ڈی جی سی اے نے انڈیگو ایئر لائنز پر 5 لاکھ روپے کے جرمانے کا اعلان کیا تھا۔ اس وقت کہا تھا کہ 7 مئی کو رانچی کے ہوائی اڈے پر ایک معذور بچے کو جہاز میں سوار نہ ہونے دینے پر یہ جرمانہ عائد کیا گیا ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: