உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اکھلیش یادو کو خوف- کہیں اعظم خان کی جوہر یونیورسٹی سے برآمد نہ ہوجائے بم یا AK-47؟

    اکھلیش یادو نے یوپی اسمبلی میں اٹھایا اعظم خان کے ساتھ نا انصافی کا معاملہ

    اکھلیش یادو نے یوپی اسمبلی میں اٹھایا اعظم خان کے ساتھ نا انصافی کا معاملہ

    اکھلیش یادو نے اسمبلی اسپیکر سے ایوان میں کہا کہ ’ایوان کے بہت ہی سینئر لیڈر اعظم خان صاحب کی یونیورسٹی کو گھیر لیا اور پہلی بار نہیں گھیرا گیا ہے۔ جناب اسپیکر، مسلسل گھیر رہے ہیں اور اس بار تو یہ ہے کہ کہیں کچھ ایسا نہ ہوجائے جیسے ایک بم رکھ دیا یا پھر AK-47 رکھ دی۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Lucknow, India
    • Share this:
      لکھنو: اکھلیش یادو اپنی پارٹی کے سینئر لیڈر اعظم خان سے متعلق پریشان ہیں۔ یہ پریشانی انہوں نے اسمبلی سیشن میں بھی ظاہر کی۔ دراصل مانسون سیشن کے تیسرے دن ابھی ایوان کی کارروائی شروع ہی ہوئی تھی کہ اس سے پہلے ہی اکھلیش یادو نے اسمبلی اسپیکر ستیش مہانا کے سامنے اعظم خان سے متعلق ان کے دل میں بیٹھے خوف کے بارے میں بولنا شروع کردیا۔

      اکھلیش یادو بولتے وقت بہت پریشان تھے۔ انہوں نے کہا کہ انہیں اس بات کا خوف ہے کہ کہیں اعظم خان کی یونیورسٹی سے کوئی بم یا پھر AK-47 رائفل نہ برآمد کرلی جائے۔

      اعظم خان کو مسلسل تقریباً دو سال تک جیل میں رہنا پڑا تھا، لیکن انہیں سپریم کورٹ سے ضمانت مل گئی ہے۔
      اعظم خان کو مسلسل تقریباً دو سال تک جیل میں رہنا پڑا تھا، لیکن انہیں سپریم کورٹ سے ضمانت مل گئی ہے۔


      اکھلیش یادو نے اسمبلی اسپیکر سے ایوان میں کہا کہ ’ایوان کے بہت ہی سینئر لیڈر اعظم خان صاحب کی یونیورسٹی کو گھیر لیا اور پہلی بار نہیں گھیرا گیا ہے۔ جناب اسپیکر، مسلسل گھیر رہے ہیں اور اس بار تو یہ ہے کہ کہیں کچھ ایسا نہ ہوجائے جیسے ایک بم رکھ دیا یا پھر AK-47 رکھ دی۔ ہو سکتا ہے کہ اعظم خان صاحب کے یہاں یہ سب جھوٹی چیزیں رکھ دی جائیں اور مقدمہ درج کرلیا جائے۔ جناب اسپیکر، میں چاہتا ہوں کہ اس پر کم از کم کچھ ہوجائے‘۔

      دو معاملوں کا دیا حوالہ

      واضح رہے کہ اکھلیش یادو نے منگل کو ایوان میں پرتاپ گڑھ کے اس طالب علم کا معاملہ اٹھایا تھا، جس نے نائب وزیر اعلیٰ کیشو پرساد موریہ کے قافلے کو کالا جھنڈا دکھایا تھا۔ اسے گرفتار کرکے جیل تو بھیجا ہی گیا تھا، لیکن اس کے گھر سے پانچ دیسی بم بھی برآمد کئے گئے تھے۔ اس سے پہلے بھدوہی کے گیان پور رکن اسمبلی وجے مشرا کے ٹھکانے سے اے کے AK-47 رائفل اور کارتوس برآمد کئے گئے تھے۔ اکھلیش یادو انہیں دونوں دونوں حادثات کو بنیاد بناکر حکومت پر یہ الزام لگا رہے تھے کہ کہیں اعظم خان کو گھیرنے کے لئے حکومت ان کی یونیورسٹی سے بم یا پھر رائفل برآمد نہ کروا دے۔

      جوہر یونیورسٹی میں چل رہا ہے سرچ آپریشن

      واضح رہے کہ گزشتہ دو تین دنوں سے جوہر یونیورستی کے کیمپس میں سرچ آپریشن چل رہا ہے۔ اس دوران زمین کی کھدائی میں رامپور نگر پالیکا کی کروڑوں روپئے کی ایک صفائی مشین برآمد کرنے کا دعویٰ کیا گیا تھا، جسے نگر پالیکا چیئرمین نے مسترد کرتے ہوئے اسے جھوٹ اور سازش قرار دیا ہے۔ اب بتایا جا رہا ہے کہ بڑی تعداد میں کتابیں ملی تھیں۔ اس پورے معاملے کے بعد اکھلیش یادو کو ڈر ہے کہ حکومت عداوت میں اعظم خان کی یونیورسٹی سے کہیں بم یا رائفل نہ برآمد کروا دے۔

       
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: