உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Akhilesh Yadav News:وزیراعلیٰ یوگی -موریہ کی راہ پر چل رہے ہیں اکھلیش یادو، پہلی بار لڑیں گے اسمبلی الیکشن

    پہلی بار اسمبلی الیکشن لڑیں گے سماجوادی پارٹی کے سربراہ اکھلیش یادو ۔

    پہلی بار اسمبلی الیکشن لڑیں گے سماجوادی پارٹی کے سربراہ اکھلیش یادو ۔

    فی الحال، اکھلیش یادو اعظم گڑھ سے سماج وادی پارٹی کے ایم پی ہیں اور اسمبلی الیکشن میں کس سیٹ سے اپنی قسمت آزمائیں گے، اس پر فیصلہ ہونا باقی ہے۔ ذرائع کی مانیں تو اعظم گڑھ، سیفئی یا مین پوری میں سے ہی کسی سیٹ پر اکھلیش یادو الیکشن لڑ سکتے ہیں۔

    • Share this:
      لکھنو: اُترپردیش (Uttar Pradesh Vidhan Sabha Chunav) میں ہونے والا اسمبلی الیکشن (UP Election 2022) اس مرتبہ اور بھی دلچسپ ہونے والا ہے۔ یوگی آدتیہ ناتھ کے بعد اب سماج وادی پارٹی کے صدر اکھلیش یادو (Akhilesh Yadav) نے بھی الیکشن لڑنے کا ارادہ کرلیا ہے۔ اکھلیش یادو پہلی مرتبہ اسمبلی الیکشن لڑیں گے۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ سی ایم یوگی آدتیہ ناتھ اور کیشو پرساد موریہ کے اعلان کے بعد اب اکھلیش یادو (Akhilesh Yadav News) نے بھی الیکشن لڑنے کا ارادہ کرلیا ہے۔ فی الحال کس سیٹ پر الیکشن لڑیں گے اس پر غور کیا جارہا ہے۔

      فی الحال، اکھلیش یادو اعظم گڑھ سے سماج وادی پارٹی کے ایم پی ہیں اور اسمبلی الیکشن میں کس سیٹ سے اپنی قسمت آزمائیں گے، اس پر فیصلہ ہونا باقی ہے۔ ذرائع کی مانیں تو اعظم گڑھ، سیفئی یا مین پوری میں سے ہی کسی سیٹ پر اکھلیش یادو الیکشن لڑ سکتے ہیں۔ خود اکھلیش نے بھی گزشتہ دنوں کہا تھا کہ اگر پارٹی طئے کرے گی تو وہ اسمبلی الیکشن بھی لڑیں گے۔

      بتادیں کہ اس سے پہلے یو پی کے وزیراعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ کو لے کر اعلان ہوچکا ہے کہ وہ گورکھپور سیٹ سے اسمبلی الیکشن لڑیں گے۔ یوگی آدتیہ ناتھ بھی پہلی مرتبہ اسمبلی الیکشن لڑنے جارہے ہیں۔ ان کے ساتھ ہی ڈپٹی سی ایم کیشو پرساد موریہ بھی ہیں، جو پہلی بار الیکشن لڑنے جارہے ہیں۔ ادھر، جینت چودھری کو لے کر بھی کہا جارہاہے کہ وہ بھی پہلی بار اسمبلی الیکشن لڑیں گے۔

      یوپی میں کب کب ہے ووٹنگ
      بتادیں کہ اُترپردیش کی 403 اسمبلی سیٹوں کے لئے سات مرحلوں میں ووٹنگ 10 فروری سے شروع ہوگی۔ اُترپردیش میں دیگر مرحلوں میں رائے دہی 14,20,23,27فروری ، 3 اور 7 مارچ کو ہوگی۔ وہیں یو پی الیکشن کے نتائج 10 مارچ کو آئیں گے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: