اے ایم یو نے نکالا ،'How's the Jaish' پلوامہ دہشت گردانہ حملے کے بعد کشمیری طالب علم نے لکھا 

اے ایم یو کے پی آرعمر سلیم پیرزادہ نے میڈیا سے بات چیت میں کہا، "ہمیں بسیم ہلال کے متنازعہ ٹویٹ کی جانکاری ملی ہے۔ جس کو فورا سنجیدگی سے لیتے ہوئے یونیورسٹی انتظامیہ نے اسے معطل کر دیا ہے۔

Feb 15, 2019 06:54 PM IST | Updated on: Feb 15, 2019 07:23 PM IST
اے ایم یو نے نکالا ،'How's the Jaish' پلوامہ دہشت گردانہ حملے کے بعد کشمیری طالب علم نے لکھا 

اے ایم یو اسٹوڈینٹ۔ وسیم ہلال

پلوامہ میں جمعرات کو ہوئے فدائین حملے کے بعد علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے بی ایس سی کے کشمیری طالب علم نے ایک متنازعہ ٹویٹ کیا۔ کشمیری اسٹوڈینٹ  بسیم ہلال نے حملے کی ذمہ داری لینے والی تنظیم جیش محمد کی حمایت میں ٹویٹ کیا۔ اس متنازع ٹویٹ میں اس نے دہشت گردانہ حملہ کارتے ہوئے لکھا ; ہاؤ از دا جیش'؟، گریٹ سر'۔

بسیم ہلال کے اس ٹویٹ کے وائرل ہوتے ہی یو پی پولیس اور سکیورٹی ایجنسیاں الرٹ ہو گئی ہیں۔ اس کے بعد جمعہ کو پولیس نے ا س کے خلاف آئی پی سی کی دفعہ 153اے، اور آئی ٹی ایکٹ کی دفعہ 67اے کے تحت معاملہ درج کرلیاہے۔ ساتھ ہی یونیورسٹی نے طالب علم کو معطل کر دیا ہے۔

اے ایم یو کے پی آرعمر سلیم پیرزادہ نے میڈیا سے بات چیت میں کہا، "ہمیں بسیم ہلال کے متنازعہ ٹویٹ کی جانکاری ملی ہے۔ جس کو فورا سنجیدگی سے لیتے ہوئے یونیورسٹی انتظامیہ نے اسے معطل کر دیا ہے۔ ہم نہیں چاہتے کہ یونیورسٹی کی شبیہ خراب ہو۔ اس طرح کے معاملے ہمارا رویہ زیرو ٹالرینس کا ہے۔ طالب علم کشمیر کا رہنے والا ہے اور بی ایس سی میتھ میٹکس کا اسٹوڈینٹ تھا'۔

بتایا جارہا ہے کہ ملزم طالب علم فی الحال علی گڑھ میں نہیں ہے۔ ابھی تک اس کی گرفتاری نہیں ہو پوئی ہے۔ پولیس مقدمہ درج کرکے اس کی گرفتاری میں مصروف ہو گئی ہے۔

پلوامہ خودکش حملہ: سی آر پی ایف قافلے کے حملہ آورکا ویڈیو، جب میرا پیغام دیکھو گے تب میں جنت میں مزے لوٹ رہا ہوں گا

'پلوامہ دہشت گردانہ حملے پر سی آر پی ایف کا بڑا بیان: 'نہ بھولیں گے ، نہ معاف کریں گے

Loading...