علی گڑھ میں امت شاہ نے کہا : یوپی میں 74 سیٹیں جیت کر بوا - بھتیجے کی زبان پر لگائیں گے تالا

اترپردیش کے علی گڑھ میں برج علاقہ کے بوتھ صدور کو خطاب کرتے ہوئے بی جے پی کے صدر امت شاہ نے ایس پی -بی ایس پی اتحاد اور کانگریس پر تیکھا حملہ کیا ۔

Feb 06, 2019 08:06 PM IST | Updated on: Feb 06, 2019 08:06 PM IST
علی گڑھ میں امت شاہ نے کہا : یوپی میں 74 سیٹیں جیت کر بوا - بھتیجے کی زبان پر لگائیں گے تالا

امت شاہ ۔ فائل فوٹو

اترپردیش کے علی گڑھ میں برج علاقہ کے بوتھ صدور کو خطاب کرتے ہوئے بی جے پی کے صدر امت شاہ نے ایس پی -بی ایس پی اتحاد اور کانگریس پر تیکھا حملہ کیا ۔ انہوں نے کارکنان سے کہا کہ مہاگٹھ بندھن ایک ڈھکوسلہ ہے ، اس سے ڈرنے کی ضرورت نہیں ہے۔ امت شاہ نے کہا کہ بی جے پی اترپردیش میں 74 سیٹیں جیت کر بوا -بھتیجے کی زبان پر علی گڑھ کا تالا لگا دے گی ۔

بی جے پی صدر نے کہا کہ میں بوا - بھتیجے سے کہنا چاہتا ہوں کہ تم سب ایک ہو جاو اور راہل بابا کو بھی ایک کرلو ، لیکن بی جے پی کی 73 سے 74 سیٹیں آنے والی ہیں۔ وہیں کانگریس صدر پر نشانہ سادھتے ہوئے شاہ نے کہا کہ راہل بابا کو یہ تک نہیں پتہ کے آلو زمین کے نیچے ہوتا ہے یا فیکٹری میں ہوتا ہے اور وہ کسانوں کی بات کررہے ہیں ۔

امت شاہ نے کہا کہ ہماری حکومت نے ایک کروڑ سے زیادہ ہیکٹیئر اراضی کو آزاد کرانے کا کام کیا ہے ، ان اراضی پر ایس پی اور بی ایس پی کی حکومت میں غیر قانونی طریقہ سے قبضہ کیا گیا تھا ۔ اترپردیش میں زمین مافیا کے خلا ف مہم چلانے کا کام بی جے پی حکومت نے کیا ۔ حال ہی میں ایک ہی تحصیل کے اندر سے 140 ہیکٹیئر اراضی ایس پی بی اور بی ایس پی کے غنڈوں سے آزاد کرائی گئی ہے۔

بی جے پی صدر نے کہا کہ بی جے پی چاہتی ہے کہ ایودھیا میں اسی مقام پر عظیم الشان رام مندر کی تعمیر ہو ۔ کانگریس ، ایس پی اور بی ایس پی کیلئے یہی کہنا چاہتا ہوں کہ ہمارا موقف تو واضح ہے ، لیکن اگر ہمت ہے تو یہ رام مندر پر اپنا ایجنڈہ واضح کریں ۔

Loading...

اس دوران انہوں نے سرجیکل اسٹرائیک کا معاملہ بھی اٹھایا ۔ انہوں نے کہا کہ جب سے بی جے پی کی نریندر مودی حکومت آئی ہے تو دشمنوں کو اینٹ کا جواب پتھر سے دیا جاتا ہے ۔ اپنے ملک کے دشمنوں کو جواب اب تک صرف دو ہی ممالک دیتے تھے ، لیکن اب تیسرا نام ہندوستان کا ہوگیا ہے۔

این آر سی کے معاملہ پر امت شاہ نے کہا کہ اس کو ہٹانے کیلئے ایس پی ، بی ایس پی ، ٹی ایم سی اور کانگریس سبھی نے مخالفت کی ، کیونکہ ملک کی سیکورٹی ان کیلئے کوئی معنی نہیں رکھتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ملک کی سیکورٹی کیلئے خطرہ بنے دراندازوں کی کانگریس پارٹی حمایت کررہی ہے ۔ ملک کے کونے کونے سے دراندازوں کو چن چن کر باہر نکالنے کا کام مودی حکومت کرے گی ۔

اس دوران انہوں نے اترپردیش کی یوگی حکومت کی بھی جم کر تعریف کی۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں کیسا اترپردیش ملا تھا ، اس وقت فسادات والا اترپردیش تھا ، لیکن اب دنگا کرنے والے یوپی سے بھاگتے نظر آرہے ہیں ۔ اب وہ کام کرنے لگے ہیں ۔ انہوں نے کنبہ پروری سے بدحال اترپردیش دیا تھا ، لیکن ہم نے ذات پات کو ہٹاکر سب کا ساتھ سب کا وکاس کرنے کا کام کیا ۔

Loading...