علی گڑھ مسلم یونیورسٹی میں یوم جمہوریہ تقریب جوش و خروش کے ساتھ منائی گئی

اے ایم یو میں آج جوش و خروش کے ماحول میں یوم جمہوریہ کی روایتی تقریب اسٹریچی ہال پر منعقد ہوئی

Jan 26, 2019 11:50 PM IST | Updated on: Jan 26, 2019 11:57 PM IST
علی گڑھ مسلم یونیورسٹی میں یوم جمہوریہ تقریب جوش و خروش کے ساتھ منائی گئی

علی گڑھ مسلم یونیورسٹی (اے ایم یو) میں یومِ جمہوریہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وائس چانسلر پروفیسر طارق منصور نے کہاکہ اس مبارک موقع پر ہم اپنے قومی پرچم کو سلام کرتے ہیں، جو ہمارے لئے قومی افتخار کی علامت ہے اور ہم احترام کے ساتھ بھارت رتن باباصاحب بھیم راؤ امبیڈکر کو یاد کرتے ہیں اور انھیں خراج عقیدت پیش کرتے ہیں جو ہندوستان کے پہلے وزیر قانون اور دستور ہند کے معمار تھے۔

اے ایم یو میں آج جوش و خروش کے ماحول میں یوم جمہوریہ کی روایتی تقریب اسٹریچی ہال پر منعقد ہوئی ۔ پرچم کشائی اور این سی سی رضاکاروں کی روایتی پریڈ کے بعد وائس چانسلر پروفیسر طارق منصور نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ ہم آج اپنے عظیم مجاہدین آزادی مہاتما گاندھی، جواہر لعل نہرو، مولانا ابوالکلام آزاد، سردار پٹیل، نیتاجی سبھاش چندر بوس اور دیگر محسنین کی قربانیوں کو یاد کرتے ہیں جنھوں نے برطانوی سامراج سے ٹکّر لی ، وطن کو آزاد کرایااور بے شمار قربانیاں دیں تاکہ ہم سامراج اور نوآبادیاتی استحصال سے آزاد ہوکر خوشحال زندگی بسر کرسکیں۔

پروفیسر منصور نے کہاکہ ہندوستان مختلف مذاہب و روایات ، زبانوں اور تہذیبی تنوع کا حامل ملک ہے ۔ انھوں نے کہا ’’ہندوستان کا تنوع اور اس کی سماجی، ثقافتی ، لسانی و مذہبی تکثیریت اس کی عظیم طاقت ہے۔ ملک کے معماروں نے سماج کے مختلف طبقات کی تمناؤں اور آرزوؤں کی نمائندگی کی اور یہ انھیں کی دوراندیشی اور فکر کا نتیجہ ہے کہ سیکولر اصولوں کو ہندوستانی دستور میں جگہ دی گئی‘‘۔ پروفیسر منصور نے کہا کہ ہندوستان کثرت میں وحدت، جمہوری قدروں، وفاقیت، رواداری اور سیکولر کردار کا علمبردار ملک ہے۔ انھوں نے کہا ’’سیکولرزم اور سرو دھرم سمبھاؤ کا تصور ہمیشہ سے ہندوستانی ثقافت کی روح رہا ہے اور یہ ایک ناقابل تردید حقیقت ہے کہ مختلف مذاہب سے تعلق رکھنے والے لاکھوں ہندوستانی باشندے برسہا برس سے امن و امان کے ساتھ رہتے آئے ہیں‘‘۔

Loading...

Loading...