ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

شہریت ترمیمی قانون کے خلاف حیدرآباد میں آل انڈیا پروفیشنل کانگریس کا احتجاج

شہریت ترمیمی قانون کے خلاف شہرحیدرآباد کے ٹینک بنڈ علاقہ کے امبیڈکر چوراہے کے قریب احتجاج

  • Share this:

آل انڈیا پروفیشنل کانگریس(اے آئی پی سی) تلنگانہ نے شہریت ترمیمی قانون کے خلاف شہرحیدرآباد کے ٹینک بنڈ علاقہ کے امبیڈکر چوراہے کے قریب احتجاج کیا۔اس موقع پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے تلنگانہ کانگریس کے صدر اتم کمار ریڈی نے کہاکہ شہریت ترمیمی قانون مناسب نہیں ہے جس کی مذمت ملک بھر کے تمام مذاہب،ذاتوں اور گروپس کے افراد احتجاج اور مذمت کررہے ہیں۔اس طرح کا قانون جمہوریت میں صحیح نہیں ہے۔


اتم کمار ریڈی نے کہاکہ شہریت ترمیمی قانون اور این آر سی پر عمل ہندوستان میں بڑا المیہ ہوگا۔آسام میں جہاں این آر سی پر عمل کیاگیا وہاں وہ مکمل ناکام ہوگیا۔جب کئی کروڑ روپئے خرچ کرتے ہوئے ایک ریاست میں بھی مناسب طورپراین آر سی پر عمل نہیں کیا جاسکا تو پھر ملک بھرمیں 55ہزارکروڑروپئے خرچ کرتے ہوئے اس پرعمل کرنا کہاں تک مناسب ہے؟ایک طرف ہندوستانی معیشت سست روی کا شکار ہوگئی ہے،ملک معاشی مندی سے گذررہا ہے،بے روزگاری میں اضافہ ہورہا ہے،سرمایہ کاری میں کمی ہوئی ہے۔ایسے وقت میں عوام کی توجہ ہٹانے کے لئے اس طرح کا کام کیاجارہا ہے۔


انہوں نے کہاکہ این آر سی پرعمل کے لئے حکومت واضح منصوبہ نہیں رکھتی۔اس طرح کی قانون سازی کے ذریعہ ملک کو الجھن میں مبتلا کیاجارہا ہے۔مودی اور امیت شاہ فاشست حکومت چلارہے ہیں۔پولیس کی زیادتی کے شکار کئی افراد ہوئے اور فائرنگ میں احتجاجیوں کی اموات ہوئیں۔کانگریس اس کی شدیدمذمت کرتی ہے۔انہوں نے کہا کہ اس مسئلہ پر اس ماہ کی 28تاریخ کو کانگریس کی ریلی نکالی جائے گی جس کے لئے اسمبلی میں کانگریس کے لیڈر ملو بھٹی وکرامارکا نے ڈی جی پی اور کمشنر پولیس حیدرآباد کو ریلی کی اجازت دینے کے لئے مکتوب روانہ کیا ہے۔دستور بچاو ہندوستان بچاو کے نام سے پُرامن پدیاتراکانگریس کے ہیڈ کوارٹرس گاندھی بھون سے نکالی جائے گی جس کے لئے انہیں یقین ہے کہ اس کی اجازت مل جائے گی۔

First published: Dec 22, 2019 03:16 PM IST