ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

آل انڈیا شیعہ پرسنل لا بورڈ کا مطالبہ ، سی اے اے کو لے کر علما کے دروازوں پر نہیں عوام کے درمیان جائیں وزیر

حال ہی میں حکومت اتر پردیش کے اقلیتی بہبود کے وزیر محسن رضا نے معروف عالم دین مولانا کلب جواد کی رہائش گاہ پر ملاقات کرکے سی اےاے اور این آر سی پر تبادلہ خیال کیا تھا ۔

  • Share this:
آل انڈیا شیعہ پرسنل لا بورڈ کا مطالبہ ، سی اے اے کو لے کر علما کے دروازوں پر نہیں عوام کے درمیان جائیں وزیر
آل انڈیا شیعہ پرسنل لا بورڈ کا مطالبہ ، سی اے اے کو لے کر علما کے دروازوں پر نہیں عوام کے درمیان جائیں وزیر

آل انڈیا شیعہ پرسنل لا بورڈ نے حکومت اتر پردیش سے اپیل کی ہے کہ وہ این آر سی اور سی اے اے کے فائدے اور اغراض ومقاصد سمجھانے کے لئے اپنے نمائندوں کو علما کے دروازوں پر نہیں بلکہ ان لوگوں کے درمیان بھیجے ، جو احتجاج ومظاہرے کررہے ہیں ۔ شیعہ بورڈ کے ترجمان مولانا یعسوب عباس نے کہا کہ اتر پردیش حکومت کے ایک وزیر صرف ان علما کے ڈرائنگ رومس میں بیٹھ کر این آر سی کے فائدے سمجھارہے ہیں جو پہلے سے ہی ذاتی اغراض ومقاصد کے لئے کام کرتے رہے ہیں ۔


اہم بات یہ ہے کہ حال ہی میں حکومت اتر پردیش کے اقلیتی بہبود کے وزیر محسن رضا نے معروف عالم دین مولانا کلب جواد کی رہائش گاہ پر ملاقات کرکے سی اےاے اور این آر سی  پر تبادلہ خیال کیا تھا ، جس کی تصویریں اور ویڈیوز بھی وزیر موصوف کی جانب سے وائرل کئے گئے تھے ۔ اسی تناظر میں آل انڈیا شیعہ پرسنل لا بورڈ نے تنقید کرتے ہوئے واضح کیا کہ ڈرائنگ روم میں بیٹھ کر قہقہے لگانے والے وزرا کو حکومت کے اشارے پر کام و کلام کرنے والے لوگوں تک پہنچنے کا وقت ہے ، لیکن وہیں چند قدم کے فاصلے پر شدید سردی و شدید بارش وگرمی میں دھرنا اور مظاہرہ کر رہے لوگوں تک جانے کی فرصت نہیں ۔ یعسوب عباس یہ بھی کہتے ہیں کہ وزیر موصوف  کو معلوم ہے کہ جب وہ مظاہرین کے درمیان پہنچیں گے تو ان کے ساتھ کیا سلوک کیا جائے گا ۔ لہٰذا ان میں عوام کا سامنا کرنے کی ہمت نہیں ۔ بس سماج کے چند نام نہاد لوگوں سے مل کر تصویریں کھینچوانا اور وہ تصویریں اپنے سیاسی آقاوں کو دکھا کر شاباشی حاصل کرنا ہی ایسے لوگوں کا مقصد ومشن ہے ۔


بورڈ کے صدر مولانا صائم مہدی نے بھی صاف طور پر کہا کہ سماج میں ایسے بہت سے سیاست داں اور مولوی موجود ہیں جو ملک وملت کے لئے نہیں بلکہ ذاتی مفاد کے حصول کے لئے لوگوں کو بیوقوف بناتے ہیں اور موجودہ عہد میں ایسے موقع پرست لوگوں کی تعددا بہت ہے ۔ مولانا صائم مہدی نے کسی کا نام لئے بغیر یہ بھی کہا کہ کچھ مفاد پسندوں نے کرسیوں کی لالچ میں پوری شیعہ قوم کو بدنام کردیا ہے ۔ ایسے لوگوں کا بائیکاٹ ہونا چاہئے ۔ آل انڈیا شیعہ پرسنل لا بورڈ نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ ایسے نمائندوں کو منتخب کریں ، جن کی کوئی سماجی حیثیت ہو اور جن کے اندر عوام سے مکالمہ کرنے کا حوصلہ ہو ، تب کہیں یہ منظر نامہ بہتری کے لئے تبدیل ہوسکتا ہے ۔

First published: Mar 16, 2020 10:13 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading