ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

ڈاکٹر آرتی لال چندانی کے خلاف الہ آباد ہائی کورٹ میں عرضی داخل ، یوگی حکومت سے جواب طلب

درخواست گزار کے وکیل کاشف عباس رضوی کا کہنا ہے کہ ڈاکٹر آرتی لال چندانی کے خلاف ٹھوس شواہد موجود ہیں ، جن کوعدالت میں پیش کردیا گیا ہے ۔ وکیل کاشف عباس کا کہنا ہے کہ ان کو عدالت سے انصاف ملنے کی پوری امید ہے ۔

  • Share this:
ڈاکٹر آرتی لال چندانی کے خلاف الہ آباد ہائی کورٹ میں عرضی داخل ، یوگی حکومت سے جواب طلب
ڈاکٹر آرتی لال چندانی کے خلاف الہ آباد ہائی کورٹ میں عرضی داخل ، یوگی حکومت سے جواب طلب

الہ آباد : تبلیغی جماعت سے وابستہ افراد کے تعلق سے نفرت انگیز تبصرہ کرنے والی جی ایس وی میڈیکل کالج کی کانپور کی  سابق پرنسپل ڈاکٹر آرتی لال چندانی کے بارے میں الہ آباد ہائی کورٹ نے یوگی حکومت سے جواب طلب کیا ہے ۔ سماجی تنظیم انڈین مسلم فار پروگریس اینڈ ریفارم  کی طرف سے داخل مفاد عامہ کی درخواست پر الہ آباد ہائی کورٹ کے چیف جسٹس کی ڈویزنل بینچ نے معاملہ کی سماعت کی ۔ ہائی کورٹ میں داخل عرضی میں ڈاکٹر آرتی لال چندانی کے نفرت انگیز بیان کی عدالتی جانچ ، ان کے خلاف قانونی کارروائی اور اس بارے میں ریاستی حکومت کو مناسب ہدایت دینے کی عدالت سے درخواست کی گئی ہے ۔


الہ آباد ہائی کے چیف جسٹس گووند ماتھر اور جسٹس ایس ڈی سنگھ  نے معاملہ کی سماعت کی ۔ عدالت میں پیش کی گئی درخواست کو سنجیدگی سے لیتے ہوئے چیف جسٹس کی بنچ نے اس معاملہ میں یوگی حکومت سے جواب طلب کر لیا ہے ۔ عرضی میں کہا گیا ہے کہ  وائرل ویڈیوں میں ڈاکٹر لال چندانی نے ایک مخصوص فرقہ کے خلاف اپنی شدید نفرت اظہار کیا اوراس ویڈیوں میں تبلیغی جماعت کے بارے  خطرناک تبصرے بھی کئے ہیں ۔


عرضی میں کہا گیا ہے کہ ایک میڈیکل کالج کی پرنسپل کی طرف سے نفرت انگیز خیالات سامنے آنے کہ وجہ سے میڈیکل کالج میں پڑھنے والے طلبہ و طالبات پر غلط اثر پڑے گا ۔ درخواست گزار کے وکیل کاشف عباس رضوی کا کہنا ہے کہ ڈاکٹر آرتی لال چندانی کے خلاف ٹھوس شواہد موجود ہیں ، جن کوعدالت میں پیش کردیا گیا ہے ۔ وکیل کاشف عباس کا کہنا ہے کہ ان کو عدالت سے انصاف ملنے کی پوری امید ہے ۔


واضح رہے کہ جون ماہ میں وائرل ہوئے ایک ویڈیو میں کانپور میڈیکل کالج کی پرنسپل ڈاکٹر لال چندانی نے تبلیغی جماعت سے وابستہ افراد کے خلاف نفرت امیز باتیں کہی تھیں ۔ ویڈیو وائرل ہونے کے کئی دنوں بعد یوگی حکومت نے ان کا تبادلہ کانپور سے لکھنو کر دیا تھا ۔ ڈاکٹر آرتی لال چندانی کا ویڈیو وائرل ہونے کے بعد مسلم  تنظیموں کے علاوہ کئی سماجی تنظیموں نے بھی اپنے سخت رد عمل کا اظہار کیا تھا ۔ اب اس  معاملہ کی سماعت آئندہ 20 جولائی کو ہوگی ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jul 08, 2020 05:47 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading