உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Mohammad Zubair:سیتاپورکیس میں محمد زبیرکی عبوری ضمانت میں توسیع،4ہفتوں میں یوپی حکومت داخل کریگی جواب

    Youtube Video

    Supreme Court:عدالت عظمیٰ کی بنچ نے صحافی زبیر کی درخواست پر 7ستمبر کو حتمی سماعت کرنے کی بات کہی اور اتر پردیش حکومت سے کہا کہ وہ چار ہفتوں کے اندر اپنا جواب داخل کرے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: سپریم کورٹ (Supreme Court)نے منگل کو آلٹ نیوز (Alt News)کے معاون بانی محمد زبیر (Mohammad Zubair)کی عبوری ضمانت(Bail) میں توسیع کر دی ۔ز بیر سیتا پور میں مذہبی جذبات کو ٹھیس پہنچانے کی ایف آئی آر کے سلسلے میں ملزم ہے۔ اترپردیش حکومت کی طرف سے پیش ہوئے ایڈیشنل سالیسٹر جنرل ایس وی راجو نے جسٹس ڈی وائی چندر چور اور جسٹس اے ایس۔ بوپنا نے کہا کہ وہ محمد زبیر کی جانب سے سیتا پور میں درج ایف آئی آر کو منسوخ کرنے کے لیے دائر درخواست کے خلاف حلف نامہ داخل کرنا چاہتے ہیں۔ اس کے بعد، بنچ نے صحافی زبیر کی درخواست پر 7ستمبر کو حتمی سماعت کرنے کی بات کہی اور اتر پردیش حکومت سے کہا کہ وہ چار ہفتوں کے اندر اپنا جواب داخل کرے۔

      یہ بھی پڑھیں

      عدالت عظمیٰ کے تعطیلاتی بنچ نے 8 جولائی کو اس کیس میں زبیر کو پانچ دن کے لیے عبوری ضمانت دی تھی۔ عدالت نے یوپی حکومت کی طرف سے جواب داخل کرنے تک محمد زبیر کی ضمانت جاری رکھنے کا حکم دیا ہے۔ ساتھ ہی زبیر کے وکلاء کو یوپی حکومت کے جواب کا جواب دینے کے لیے دو ہفتے کا وقت دیا گیا ہے۔ حکم نامے کے مطابق محمد زبیر کی عبوری ضمانت 7 ستمبر تک جاری رہے گی۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق اتر پردیش حکومت نے سپریم کورٹ کو بتایا ہے کہ وہ سیتا پور میں درج ایف آئی آر کو منسوخ کرنے کے لیے محمد زبیر کی جانب سے دائر درخواست کے خلاف حلف نامہ داخل کرنا چاہتی ہے۔

      2 جولائی کو مجسٹریل کورٹ نے زبیر کی درخواست ضمانت مسترد کرتے ہوئے انہیں 14 روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر بھیج دیا تھا۔ مجسٹریل کورٹ نے زبیر کے خلاف الزامات کی نوعیت اور سنگینی کا حوالہ دیتے ہوئے کہا تھا کہ کیس تحقیقات کے ابتدائی مرحلے میں ہے۔ عدالت نے زبیر کو پانچ دن کی تحویل میں پوچھ تاچھ کے بعد عدالتی تحویل میں بھیج دیاتھا۔
      Published by:Mirzaghani Baig
      First published: