உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Amarnath Yatra:امرناتھ یاترا کے دوران16ہزار سے زیادہ عقیدتمندوں نے کیے درشن، ایک خاتون کی موت

    Amarnath Yatra 2022:حادثے کے بعد نئے جوش سے جاری ہے امرناتھ یاترا۔

    Amarnath Yatra 2022:حادثے کے بعد نئے جوش سے جاری ہے امرناتھ یاترا۔

    Amarnath Yatra: سانحہ کے بعد بالٹال ٹریک کی مرمت کی گئی ہے جس کی وجہ سے پہلگام سے جانے والے زیادہ تر مسافر بالٹال کے راستے سے واپس لوٹ رہے ہیں۔ جموں شہر بھی ہزاروں عقیدت مندوں کی آمد کی وجہ سے مذہبی رنگ میں رنگا ہوا ہے۔

    • Share this:
      Amarnath Yatra:پہلگام اور بالٹال کے راستوں سے امرناتھ یاترا جاری ہے۔ بدھ کو 16457 عقیدت مندوں نے مقدس غار میں بابا برفانی کے درشن کیے۔ اسی دوران سفر کے دوران سونمرگ کے گونڈ مقام پر ایک خاتون مسافر کی موت ہوگئی۔ ذرائع کے مطابق لاپتہ ہونے والے 40 مسافروں میں سے 32 افراد مل گئے ہیں۔ اب صرف 8 لاپتہ بتائے جاتے ہیں۔ تاہم سرکاری طور پر اس کی تصدیق نہیں کی گئی ہے۔

      موسم بھی شیو بھکتوں کا بھرپور ساتھ دے رہا ہے۔ بدھ کو 10,500 عقیدت مندوں کو بالٹال کے راستے سے مقدس غار روانہ کیا گیا۔ پہلگام سے بھی ہزاروں عقیدت مندوں کو مقدس غار کی طرف روانہ کیا گیا۔ اس درمیان، جموں کے بیس کیمپ بھگوتی نگر سے 6,415 یاتریوں کا ایک کھیپ کشمیر کے لیے روانہ ہوا، جو دیر شام تک اپنے ٹھہرنے کے مقامات پر پہنچ گیا تھا۔

      امرناتھ غار کے قریب پیش آنے والے سانحے کے باوجود عقیدت مندوں کے جوش اور ولولے میں کوئی کمی نہیں آئی ہے۔ ملک بھر سے ہر روز ہزاروں کی تعداد میں یاتری جموں و کشمیر پہنچ رہے ہیں۔ تتکال رجسٹریشن کے لیے لمبی قطاریں ہیں۔ جن مسافروں نے مسافروں کی پیشگی رجسٹریشن کرائی ہے وہ براہ راست بیس کیمپ پہلگام اور بالٹال پہنچ رہے ہیں۔ 2,428 یاتریوں کا ایک جتھہ جس میں 1,625 مرد، 794 خواتین اور 9 بچے شامل ہیں، بدھ کو جموں کے بیس کیمپ بھگوتی نگر سے بالٹال کے راستے مقدس غار کے لیے روانہ ہوئے۔

      یہ بھی پڑھیں:

      Amarnath Yatra 2022: امرناتھ میں بادل پھٹنے کے سانحہ سے متعلق مہنت دپیندرا گری کا بڑا بیان

      یہ بھی پڑھیں:
      Amarnath Yatra 2022: مقدس چھڑی مبارک پہنچ گئی پہلگام اور مٹن ہوا چھڑی کا مقدس اشنان

      اسی طرح 3,987 یاتریوں کا ایک کھیپ پہلگام کے راستے روانہ کیا گیا جس میں 2920 مرد، 950 خواتین، 34 بچے، 79 سادھو اور 4 سادھویاں شامل ہیں۔ جیسے جیسے سفر آگے بڑھ رہا ہے عقیدت مندوں کا جوش و خروش بھی بڑھتا جا رہا ہے۔ سانحہ کے بعد بالٹال ٹریک کی مرمت کی گئی ہے جس کی وجہ سے پہلگام سے جانے والے زیادہ تر مسافر بالٹال کے راستے سے واپس لوٹ رہے ہیں۔ جموں شہر بھی ہزاروں عقیدت مندوں کی آمد کی وجہ سے مذہبی رنگ میں رنگا ہوا ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: