உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    رام مندر کو ماضی کی ایک غیر معمولی تعمیر ماننے والے ’سنکیوں‘ کی کمی نہیں: امرتیہ سین

    اے نیوز 18 کریئٹیو

    اے نیوز 18 کریئٹیو

    بی جے پی حکومت کے بارے میں امرتیہ سین نے ایک ایسا بیان دیا ہے، جو لوک سبھا انتخابات کے پہلے بی جے پی کےلئے مشکلات کھڑی کر سکتا ہے

    • Share this:
      بی جے پی حکومت کے بارے میں نوبل انعام یافتہ ماہر اقتصادیات امرتیہ  سین نے ایک ایسا بیان دیا ہے، جو لوک سبھا انتخابات کے پہلے بی جے پی کےلئے مشکلات کھڑی کر سکتا ہے۔ جمعرات کے روز امرتیہ سین نے کہا کہ رام مندر کو ماضی کی ایک غیر معمولی تعمیر ماننے والے ’سنکی‘ لوگوں کی کمی نہیں ہے۔

      امرتیہ سین نے کہا کہ گئورکشا جیسے ایشو کا استعمال لوگوں کو اہم مسائل سے ورغلانے کے لئے کیا جا رہا ہے۔ نوبل انعام یافتہ ماہر اقتصادیات  نے متعدد  سرکاری تنظیموں پر حکومت کے کنٹرول کو لے کر فکر کا اظہار کیا۔ نیوز 18 کو دئے ایک انٹرویو میں انہوں نے رام مندر سے متعلق متعدد مسائل  پر اپنے خیالات  پیش کئے۔

      امرتیہ سین نے کہا، ’’ گئورکشا، رام مندر اور سبریمالا جیسے ایشو بے روزگاری جسیے حقیقی مسائل سے ورغلانے کے لئے ہیں۔ دراصل اقتصادی ترقی کی شرح زیادہ ضرور ہوئی ہے، لیکن اس کے باوجود غریبوں کی زندگی بہتر نہیں ہو پائی ہے۔ آج کافی لوگوں میں انسانی دفاع کے بجائے گئورکشا کو لے کر دیوانگی دیکھنے کو مل رہی۔ اور اسی طرح سے کافی لوگ آپ کو رام مندر کے مسائل  کو لے کر پر جوش نظر آئیں گے‘۔

      انہوں نے کہا، ’’ وہ رام مندر جو کہ پتہ نہیں تھا بھی یا نہیں، کسی نے دیکھا یا نہیں دیکھا۔ پتہ نہیں بعد میں وہاں مسجد بنائی گئی، جسے اِنہدام کردیا گیا اور اس کے بعد رام کی کہانی کو چاروں طرف پھیلاکر اسے تاریخ کا حصہ بنا دیا گیا۔ رام مندر تاریخ کا ایک غیر معمولی ڈھانچہ تھا۔ اسلئے میں کہتا ہوں کہ یہ ساری باتیں لوگوں کو حقیقی مسائل سے ورغلانے کے لئے ہیں‘‘۔

       
      First published: