உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ایمیزون انڈیا کے ڈائریکٹرز کے خلاف ایم پی میں مقدمہ درج، چرس کی اسمگلنگ کا الزام

    اناکوٹی کے ایس پی رتی رنجن دیبناتھ نے کہا کہ وہ شمالی تریپورہ کے ضلع میں مورتی سے متعلق ایک واقعہ کی تحقیقات کر رہے ہیں۔

    اناکوٹی کے ایس پی رتی رنجن دیبناتھ نے کہا کہ وہ شمالی تریپورہ کے ضلع میں مورتی سے متعلق ایک واقعہ کی تحقیقات کر رہے ہیں۔

    پولیس نے ایک بیان میں کہا کہ ای کامرس سائٹ ایمیزون کے ذریعہ فراہم کردہ دستاویزی ثبوت اور پولیس کی تحقیقات میں سامنے آنے والے حقائق میں فرق کو مدنظر رکھتے ہوئے اے ایس ایس ایل ایمیزون کے ایگزیکٹو ڈائریکٹرز پر این ڈی پی ایس ایکٹ 1985 کی دفعہ 38 کے تحت ملزم کے طور پر ہفتہ کے روز مقدمہ درج کیا گیا۔

    • Share this:
      مدھیہ پردیش کے بھنڈ ٹاؤن میں ماریجوانا کیس (Marijuana Case) کی چونکا دینے والی آن لائن ڈیلیوری کے سلسلے میں پولیس نے ہفتے کے روز انکشاف کیا کہ ایگزیکٹیو ڈائریکٹروں کے خلاف بھی پولیس نے مقدمہ درج کیا ہے۔

      ۔ 13 نومبر کو این ڈی پی ایس ایکٹ کے تحت گوہد پولیس اسٹیشن میں دفعہ 228/21 اور 8/20 کے تحت مقدمہ درج کیا گیا تھا۔ پولیس نے پنٹو تومر اور سورج پاویا سے 21.7 کلو گرام بھنگ ضبط کی تھی، دونوں بھنڈ کے رہنے والے تھے۔ گوالیار کا رہنے والا مکل جیسوال بھی پکڑا گیا اور خریداروں میں سے ایک چترا والملی کو بھی پولس نے پکڑ لیا۔

      امیزون فائل فوٹو
      امیزون فائل فوٹو


      پولیس کی جانچ میں یہ بات سامنے آئی کہ سورج اور مکل جیسوال نے ایک فرم بابو ٹیکس (Babu Tex) بنایا تھا اور ایمیزون کے ساتھ بطور وینڈر رجسٹرڈ ہوا تھا اور وشاکھاپٹنم سے اپنے منتخب صارفین کو بھنگ کی آن لائن سپلائی کی تھی۔

      پولیس نے ایک بیان میں کہا کہ ای کامرس سائٹ ایمیزون کے ذریعہ فراہم کردہ دستاویزی ثبوت اور پولیس کی تحقیقات میں سامنے آنے والے حقائق میں فرق کو مدنظر رکھتے ہوئے اے ایس ایس ایل ایمیزون کے ایگزیکٹو ڈائریکٹرز پر این ڈی پی ایس ایکٹ 1985 کی دفعہ 38 کے تحت ملزم کے طور پر ہفتہ کے روز مقدمہ درج کیا گیا۔

      بھنڈ کے پولیس سپرنٹنڈنٹ منوج سنگھ نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے اس بات کی تصدیق کی کہ ایمیزون کے ایگزیکٹو ڈائریکٹرز کو چرس کی اسمگلنگ کیس میں ملزم بنایا گیا ہے۔

      مدھیہ پردیش کے وزیر داخلہ نروتم مشرا (Narottam Mishra) نے قبل ازیں ای کامرس پورٹل کے خلاف سخت کارروائی کا انتباہ دیا تھا اگر کمپنی تحقیقات میں تعاون کرنے میں ناکام رہتی ہے۔

      ایمیزون کی نمائندگی کرنے والے وکلا نے پولیس افسران سے ملاقات کی تھی اور تحقیقات میں ہر ممکن تعاون کا یقین دلایا تھا۔ تحقیقات میں انکشاف ہوا ہے کہ اس گروہ میں شامل افراد نے گٹھ جوڑ کا پردہ فاش ہونے تک 1.1 کروڑ روپے کی منشیات کا آن لائن لین دین کیا تھا۔

      کنفیڈریشن آف آل انڈیا ٹریڈرز (CAIT) نے بھی نارکوٹکس کنٹرول بیورو (NCB) کو خط لکھا ہے کہ وہ ملک میں چرس کی غیر قانونی آن لائن فروخت میں ایمیزون کے کردار کی تحقیقات کرے۔ پولیس نے کہا کہ یہ پروڈکٹ مبینہ طور پر وشاکھاپٹنم سے حاصل کیا گیا تھا اور اسے ایک غیر رجسٹرڈ کمپنی کے ذریعے جعلی جی ایس ٹی نمبر کے ساتھ فروخت کیا گیا تھا، اب ایمیزون افسران کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: