உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    New CDS: جنرل بپن راوت کا اچانک انتقال، حکومت اگلے 7 دنوں میں کرے گی نئے سی ڈی ایس کی تقرری

    جنرل بپن راوت فائل فوٹو

    جنرل بپن راوت فائل فوٹو

    جنرل راوت نے جنوری 2020 میں ملک کے پہلے سی ڈی ایس کے طور پر چارج سنبھالا تھا۔ عام طور پر سی ڈی ایس کے لیے عمر کی حتمی حد 65 سال مقرر کی گئی ہے۔ وزیراعظم مودی نے 2019 میں اپنے یوم آزادی کے خطاب میں ایک سی ڈی ایس کی تقرری کا اعلان کیا تھا۔

    • Share this:
      فوجی ہیلی کاپٹر حادثے میں چیف آف ڈیفنس اسٹاف (CDS) جنرل بپن راوت (Bipin Rawat) کی اچانک موت کے درمیان حکومت آنے والے دنوں میں نئے سی ڈی ایس کی تقرری پر غور کر رہی ہے۔ اعلیٰ ذرائع نے بتایا کہ چیف آف ڈیفنس اسٹاف کا عہدہ اگلے سات سے دس دنوں میں پُر کر دیا جائے گا۔ قوانین کے مطابق مسلح افواج کا کوئی بھی کمانڈنگ آفیسر یا فلیگ آفیسر اس عہدے کے لیے اہل ہیں۔

      جنرل راوت نے جنوری 2020 میں ملک کے پہلے سی ڈی ایس کے طور پر چارج سنبھالا تھا۔ عام طور پر سی ڈی ایس کے لیے عمر کی حتمی حد 65 سال مقرر کی گئی ہے۔ وزیراعظم مودی نے 2019 میں اپنے یوم آزادی کے خطاب میں ایک سی ڈی ایس کی تقرری کا اعلان کیا تھا جو تینوں افواج کے سربراہوں کا سربراہ ہوتا ہے۔

      مرکزی وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ جمعرات کو لوک سبھا میں تقریباً 11:15 بجے اور راجیہ سبھا میں 12 بجے کے قریب بیان دیں گے۔ جنرل راوت کی میت جمعرات کو تامل ناڈو سے نئی دہلی لائی جائے گی۔ آخری رسومات کل نئی دہلی میں ادا کی جائیں گی۔

      وزیر اعظم کی زیرقیادت کابینہ کمیٹی برائے سلامتی (CCS) نے اس حادثے کے بارے میں بریفنگ دی جس کی وجہ سے تمل ناڈو میں جنرل بپن راوت کی موت ہوئی تھی۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ پی ایم مودی کے علاوہ، میٹنگ میں وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ، وزیر داخلہ امت شاہ، وزیر خزانہ نرملا سیتارامن اور وزیر خارجہ ایس جے شنکر نے شرکت کی۔

      ٹویٹس کی ایک سیریز میں وزیر اعظم مودی نے اپنی تعزیت پیش کی اور انہوں نے ایک ٹویٹ میں کہا کہ وہ ہیلی کاپٹر کے حادثے سے شدید غمزدہ ہیں۔ جنرل بپن راوت ایک شاندار سپاہی تھے۔ ایک سچے محب وطن بھی تھے۔ انھوں نے ہماری مسلح افواج اور سیکورٹی کے آلات کو جدید بنانے میں بہت تعاون کیا۔ اسٹریٹجک معاملات پر ان کی بصیرت اور نقطہ نظر غیر معمولی تھا۔ ان کے انتقال نے مجھے گہرا صدمہ پہنچایا ہے۔ اوم شانتی‘‘۔

      یہ باق قابل ذکر ہے کہ سی ڈی ایس ویلنگٹن میں ڈیفنس اسٹاف کالج جا رہا تھے، جب ہیلی کاپٹر تمل ناڈو کے کنور کے قریب گر کر تباہ ہو گیا۔ ہندوستانی فضائیہ (IAF) نے کہا کہ حادثے کی کورٹ آف انکوائری کا حکم دے دیا گیا ہے۔

      قومی، بین الاقوامی اور جموں وکشمیر کی تازہ ترین خبروں کےعلاوہ تعلیم و روزگار اور بزنس کی خبروں کے لیے نیوز18 اردو کو ٹویٹر اور فیس بک پر فالو کریں ۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: