ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

امت شاہ نے مدھیہ پردیش کے گورنر لال جی ٹنڈن کی موت کو بی جے پی اور ملک کیلئے ناقابل تلافی نقصان قرار دیا

مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ نے مدھیہ پردیش کے گورنر لال جی ٹنڈن کی موت پر اظہار تعزیت کرتے ہوئے ان کی موت کو بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) اورملک کے لئے ناقابل تلافی نقصان قرار دیا۔

  • Share this:
امت شاہ نے مدھیہ پردیش کے گورنر لال جی ٹنڈن کی موت کو بی جے پی اور ملک کیلئے ناقابل تلافی نقصان قرار دیا
لال جی ٹنڈن کی موت بی جے پی اور ملک کیلئے ناقابل تلافی نقصان: امت شاہ

 نئی دہلی: مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ نے مدھیہ پردیش کے گورنر لال جی ٹنڈن کی موت پر اظہار تعزیت کرتے ہوئے ان کی موت کو بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) اورملک کے لئے ناقابل تلافی نقصان قرار دیا۔ لال جی ٹنڈن کا منگل کی صبح لکھنؤ میں انتقال ہوگیا۔ لال جی ٹنڈن کی موت پر تعزیت کرتے ہوئے امت شاہ نے ٹوئٹ کیا ’’بی جے پی کے سینئر رہنما اور مدھیہ پردیش کے گورنرلال جی ٹنڈن کے انتقال سے مجھے شدید دکھ ہوا ہے۔ ٹنڈن کی پوری زندگی اترپردیش میں عوامی خدمت کے لئے وقف تھی۔ تنظیم کی توسیع میں انہوں نے بہت اہم کردار ادا کیا‘‘۔



امت شاہ نے کہا’’ بطور سماجی خدمت گار لال جی ٹنڈن جی نے ہندوستانی سیاست پر گہری چھاپ چھوڑی۔ ان کی موت ملک اور بی جے پی کے لئے ناقابل تلافی نقصان ہے۔ میں ایشور(خدا) سے آنجہانی لال جی ٹنڈن کی آتما کی شانتی کیلئے دعا گو ہوں، اوران کے گھر والوں سے تعزیت، اوم شانتی شانتی شانتی‘‘۔



قابل ذکر ہے کہ مدھیہ پردیش کے گورنر لال جی ٹنڈن کا منگل کی صبح لکھنؤ کے میدانتا اسپتال میں انتقال ہوگیا۔ وہ 85  سال کے تھے۔ یوپی حکومت کے کابینہ وزیر اور ان کے بیٹے آشوتوش ٹنڈن نے ٹوئٹ کرکے یہ اطلاع دی۔ لال جی ٹنڈن کا میدانتا اسپتال میں تقریبا دیڑھ ماہ سے علاج چل رہا تھا۔ ان کی کڈںی اور جگرمیں پریشانی کے بعد انہیں اسپتال میں داخل کرایا گیا تھا۔ لال جی ٹنڈن کو گزشتہ 11  جون کو سانس لینے میں پریشانی، بخار اور پیشاب میں دشواری کی وجہ  اسپتال میں داخل کیا گیا تھا۔ ٹنڈن کی بگڑتی ہوئی صحت کی وجہ سے یوپی کی گورنر آنندی بین پٹیل کو مدھیہ پردیش کا اضافی چارج سونپا گیا ہے۔

مدھیہ پردیش کے گورنر لال جی ٹنڈن کا منگل کی صبح لکھنؤ کے میدانتا اسپتال میں انتقال ہوگیا۔ وہ 85 سال کے تھے۔
مدھیہ پردیش کے گورنر لال جی ٹنڈن کا منگل کی صبح لکھنؤ کے میدانتا اسپتال میں انتقال ہوگیا۔ وہ 85 سال کے تھے۔


دراصل اتر پردیش کی سیاست میں سرگرم  لال جی ٹنڈن کئی بار ریاست کی بی جے پی حکومتوں میں وزیر رہ چکے ہیں اور وہ اٹل بہاری واجپئی کے ساتھی کے طور پر جانے جاتے ہیں۔ انہوں نے اٹل بہاری واجپئی کے حلقہ لکھنؤ کی کمان سنبھالی اور ان کی موت کے بعد وہ لکھنؤ سے 15 ویں لوک سبھا کے لئے بھی منتخب ہوئے۔ لال جی ٹنڈن کو 2018 میں بہار کا گورنر بنایا گیا تھا۔ اس کے بعد 2019 میں  انہیں مدھیہ پردیش کا گورنر مقرر کیا گیا۔ لکھنؤ میں لال جی ٹنڈن کی مقبولیت معاشرے کے ہر طبقے میں تھی۔ وہ سابق وزیر اعظم آنجہانی اٹل بہاری واجپئی کے بہت قریبی تھے۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Jul 21, 2020 12:31 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading