உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    وزیرداخلہ امت شاہ آج لوک سبھا میں پیش کریں گے دلی میونسپل کارپوریشن ترمیمی بل، مرکز نے تینوں MCD کو ایک کرنے کا لیا ہے فیصلہ

    مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ۔

    مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ۔

    سی ایم کجریوال نے بی جے پی کو کھلا چیلنج دیا ہے۔ انہوں نے چیلنج کرتے ہوئے کہا ہے کہ بی جے پی ایم سی ڈی انتخابات وقت پر کرائے اور جیت کر دکھائے۔ کجریوال نے کہا کہ اگر ہم ہارے تو سیاست چھوڑ دیں گے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ لوک سبھا میں دہلی میونسپل کارپوریشن (ترمیمی) بل 2022 پیش کریں گے۔ آپ کو بتادیں کہ مرکزی حکومت نے دہلی کی تین میونسپل کارپوریشنوں کو ایک کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ کابینہ نے اس فیصلے کی منظوری دے دی ہے۔ 2012 میں بلدیاتی انتخابات سے قبل دہلی میونسپل کارپوریشن کو تین حصوں میں تقسیم کیا گیا تھا۔ اسے تین کارپوریشنوں، جنوبی میونسپل کارپوریشن، شمالی میونسپل کارپوریشن اور مشرقی میونسپل کارپوریشن میں تقسیم کیا گیا تھا۔ مرکزی حکومت کے اس فیصلے کے بعد تین میونسپل کارپوریشنوں کو متحد کرنے کے ساتھ ساتھ صرف 272 وارڈ ہی رکھے جائیں گے، لیکن میئر کی میعاد کم از کم ڈھائی سال تک بڑھائی جا سکتی ہے۔ تاہم اس انتظام میں کوئی تکنیکی خرابی ہو سکتی ہے کیونکہ موجودہ نظام کے مطابق ریزرویشن سسٹم میں ایک بڑا پینچ ہے۔

      آپ کو بتادیں کہ دہلی میونسپل کارپوریشن کو تین کارپوریشنوں میں تقسیم کرنے کا تجربہ اب تک ناکام رہا ہے۔ میونسپل کارپوریشن کی تقسیم کے بعد سے میونسپل کارپوریشنوں کے کام کاج میں کوئی خاص بہتری نہیں آئی، اس کے برعکس کارپوریشن ایسے مالی بحران میں پھنس گئی کہ ملازمین کو تنخواہیں دینا مشکل ہوگیا۔ سال 2011 میں جب شیلا دکشت دہلی کی وزیر اعلیٰ تھیں، انہوں نے دہلی اسمبلی میں ایک قرارداد پاس کی، جسے مرکزی حکومت نے منظور کر لیا۔ اس کے بعد 2012 میں پہلی بار تین میونسپل کارپوریشنوں کے انتخابات ہوئے۔ اس وقت دہلی اور مرکز دونوں میں کانگریس پارٹی کی حکومت تھی اور میونسپل کارپوریشن پر بھارتیہ جنتا پارٹی کی حکومت تھی۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Uttarakhand میں لاگو ہوگا یونیفارم سول کوڈ، وزیر اعلی نے کیا بڑا اعلان، جانئے پوری تفصیل

      اپنائی جاسکتی ہے میئر ان کونسل سسٹم
      بتایا جا رہا ہے کہ کارپوریشن میں دہلی حکومت کی مداخلت کو کم کرنے کے لیے میئر ان کونسل سسٹم کو اپنایا جا سکتا ہے، جس میں میئر اور ان کے کونسلروں کا انتخاب شہر کے لوگوں کے ذریعے براہ راست کیا جائے گا۔ اگر ایسا ہوتا ہے، تو وہ ریاست کے وزیراعلیٰ اروند کیجریوال سے زیادہ اثر و رسوخ رکھنے والے سمجھے جائیں گے، کیونکہ وزیراعلیٰ صرف ایک اسمبلی سے ایم ایل اے کے طور پر منتخب ہوتے ہیں۔ ساتھ ہی میئر اور کونسلرز کی مدت ملازمت میں توسیع پر بھی غور کیا جا رہا ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      آج ہوگی چینی FM وانگ ای اورجئے شنکر کی ملاقات،دوطرفہ تعلقات معمول پرلانے کی ہوگی کوشش

      بی جے پی ایم سی ڈی الیکشن جیت گئی تو چھوڑ دیں گے سیاست: اروند کجریوال

      اروند کجریوال نے دہلی ایم سی ڈی انتخابات کو لے کر ایک بار پھر بی جے پی پر حملہ کیا ہے۔ اس بار سی ایم کجریوال نے بی جے پی کو کھلا چیلنج دیا ہے۔ انہوں نے چیلنج کرتے ہوئے کہا ہے کہ بی جے پی ایم سی ڈی انتخابات وقت پر کرائے اور جیت کر دکھائے۔ کجریوال نے کہا کہ اگر ہم ہارے تو سیاست چھوڑ دیں گے۔ اروند کجریوال نے کہا کہ آج یوم شہادت ہے۔ بھگت سنگھ، سکھ دیو اور راج گرو کو آج پھانسی دے دی گئی۔ تینوں نے ملک کو آزاد کرانے کے لیے اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کیا تھا۔ ملک آزاد ہوا، آئین بنا، آئین میں عوام کو مکمل اختیار دیا گیا کہ عوام اپنی حکومت منتخب کریں اور وہ حکومت عوام کے خواب پورے کرے۔

      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: