اترپردیش کے ایک مدرسےمیں پولیس کی چھاپہ ماری، غیرقانونی ہتھیارملنے کا الزام

پولیس نے مدرسہ کے انچارج محمد ساجد سمیت 6 لوگوں کو گرفتارکرلیا ہے اوران سے پوچھ گچھ کی جارہی ہے۔

Jul 10, 2019 10:07 PM IST | Updated on: Jul 10, 2019 10:07 PM IST
اترپردیش کے ایک مدرسےمیں پولیس کی چھاپہ ماری، غیرقانونی ہتھیارملنے کا الزام

بجنورکےایک مدرسہ میں بھاری مقدارمیں ہتھیارملنے کا الزام عائد کیا ہے۔

اترپردیش کے بجنورسے ایک بڑی خبرسامنےآئی ہے، جہاں پولیس نےمدرسہ میں چھاپہ ماری کی ہے۔ الزام عائد کیا جارہا ہے کہ چھاپہ ماری کے بعد پولیس نے مدرسے سے غیر قانونی ہتھیاراورزندہ کارتوس برآمد کیا ہے۔ وہیں اس حادثہ سے پورے علاقے میں سنسنی پھیل گئی ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ پولیس نے مدرسہ کےانچارج سمیت 6 لوگوں کے خلاف معاملہ درج کر کے آگےکی کارروائی شروع کردی ہے۔

اطلاعات کے مطابق معاملہ بجنورکے شیرکوٹ علاقہ میں واقع مدرسہ دارالعلوم حمیدیہ کا ہے۔ اس مدرسہ میں گزشتہ کئی سالوں سے تعلیم کا نظم کیا جارہا ہے۔ اس میں تقریباً 25 بچے پڑھتے ہیں۔ اسی درمیان جمعرات کوالزام عائد کیا گیا ہےکہ مدرسے میں ہتھیاررکھے ہوئے یں۔ اس کے بعد پولیس نےفوراً موقع پرپہنچ کرمدرسہ میں چھاپہ ماری کی۔ بتایا جاتا ہےکہ چھاپہ ماری کے دوران پولیس نے 6 طمنچے اورکئی زندہ کارتوس برآمد کئے۔

Loading...

مدرسے کا انچارج گرفتار

اطلاعات کے مطابق پولیس نے وہاں سے مدرسہ کے انچارج محمد ساجد سمیت 6 لوگوں کو گرفتارکرلیا۔ فی الحال گرفتارسبھی لوگوں سے تھانے میں پوچھ گچھ کی جارہی ہے۔ ساتھ ہی پولیس نے معاملہ درج کرکےآگے کی کارروائی شروع کردی ہے۔

Loading...