உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Amrit Ratna Samman: ادار پونا والا بنے’امرت رتن‘، کہا- مودی حکومت کے تعاون سے ویکسین بنا کورونا کو ہرایا

    حکومت کی آزادی کے امرت مہوتسو کے پس منظر میں نیوز 18 انڈیا امرت رتن ایوارڈ پروگرام کا انعقاد کر رہا ہے۔ اس میں مختلف علاقوں میں کام کرنے والے خصوصی لوگوں کو سرفراز کیا جا رہا ہے۔ پروگرام میں سیرم انسٹی ٹیوٹ آف انڈیا کے سی ای او ادار پونا والا کو کورونا وبا سے لڑائی میں انمول تعاون کے لئے سرفراز کیا گیا۔

    حکومت کی آزادی کے امرت مہوتسو کے پس منظر میں نیوز 18 انڈیا امرت رتن ایوارڈ پروگرام کا انعقاد کر رہا ہے۔ اس میں مختلف علاقوں میں کام کرنے والے خصوصی لوگوں کو سرفراز کیا جا رہا ہے۔ پروگرام میں سیرم انسٹی ٹیوٹ آف انڈیا کے سی ای او ادار پونا والا کو کورونا وبا سے لڑائی میں انمول تعاون کے لئے سرفراز کیا گیا۔

    حکومت کی آزادی کے امرت مہوتسو کے پس منظر میں نیوز 18 انڈیا امرت رتن ایوارڈ پروگرام کا انعقاد کر رہا ہے۔ اس میں مختلف علاقوں میں کام کرنے والے خصوصی لوگوں کو سرفراز کیا جا رہا ہے۔ پروگرام میں سیرم انسٹی ٹیوٹ آف انڈیا کے سی ای او ادار پونا والا کو کورونا وبا سے لڑائی میں انمول تعاون کے لئے سرفراز کیا گیا۔

    • Share this:
      نئی دہلی: سیرم انسٹی ٹیوٹ آف انڈیا کے سی ای او ادار پونا والا کو کورونا وبا سے لڑائی اور اس کا ٹیکہ بنانے میں کامیاب تعاون دینے کے لئے منگل کو ’امرت رتن‘ سے سرفراز کیا گیا۔ امرت رتن ایوارڈ تقریب کے موقع پر مرکزی وزیر برائے ریلوے اشونی ویشنو نے انہیں پیش کیا۔

      اس موقع پر ادار پونا والا نے کہا کہ کورونا ویکسین کی کامیابی اوراس کو تیار کرنا ایک بہت بڑا چیلنج تھا۔ اس میں کافی خطرہ بھی تھا، لیکن اس وقت ہاتھ پر ہاتھ رکھ کر بھی نہیں بیٹھا جاسکتا تھا۔ ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن (ڈبلیو ایچ او) نے کورونا کو عالمی وبا قرار دیا تھا۔ ایسے مشکل دور میں وزیر اعظم نریندر مودی کی حکومت نے کو آپریشن اور کو آرڈینیشن کی مثال پیش کی، جس سے ویکسین بنانے میں آںے والے چیلنجز کو پار کیا گیا۔ حکومت نے بہت مدد کی، جس سے ہم آخر کار ویکسین بنانے میں کامیاب رہے۔

      ایک ہزار لوگوں کو کام پر لگایا

      ادار پونا والا نے کہا، یہ کام کتنا چیلنج بھرا تھا، اس کا اندازہ اسی بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ ہم نے صرف ویکسین توسیع کرنے اور اس کے تیارکرنے پر ہی 1,000 لوگوں کی ٹیم لگائی۔ اس دوران ہماری کمپنی کے ایک حصے میں آگ بھی لگ گئی۔ باوجود اس کے مسلسل کوشش اور صبر سے آخر کار ہمیں کامیابی حاصل ہوئی۔ ابتدائی چیلنجز کے بعد جب ہر ماہ سب کچھ ٹھیک ہو رہا تھا تو سبھی کے چہرے پر مسکان کھل گئی۔

      وزیر اعظم مودی نے لوگوں کا ڈر بھگایا

      ادار پونا والا نے کہا، کورونا کا ٹیکہ بنانے کے پہلے چیلنج پار کرنے کے بعد ہمارے سامنے دوسری بڑی پریشانی آگئی، کیونکہ اسے لے کر لوگوں میں طرح طرح کی بھرتیاں پھیل رہی تھیں اور لوگ ویکسین لگوانے سے پیچھے ہٹنے لگے۔ ایسے میں وزیر اعظم نریندر مودی کی اپیل نے لوگوں میں بھروسہ پیدا کیا اور انہوں نے ٹیکے لگوانے شروع کئے۔ یہ بڑی پریشانی تھی، جسے وزیر اعظم نے لوگوں کے دل میں بیٹھے خوف کو دور بھگاکر حل کیا اور ہم ویکسینیشن میں کامیاب ہوئے۔

       

      پہلے امریکہ سے مدد مانگی پھر اسے پیچھے چھوڑ دیا

      ادار پونا والا نے کہا کہ ہمارے پاس ویکسین بنانے کا فارمولہ تو تھا، لیکن کچے مال کے لئے دوسرے ممالک پر منحصر تھے۔ ہم نے امریکہ سے کچے مال کے لئے گزارش کی۔ اس وقت آلات اور انجینئرز حاصل کرنا ایک بڑا چیلنج تھا، لیکن ہم آگے بڑھتے رہے۔ ہر ماہ کچھ نہ کچھ دیری یا بری خبر آرہی تھی اور ہر ماہ کچھ نہ کچھ راحت بھی مل رہی تھی۔ خوشی کے ساتھ تشویش بھی تھیں، لیکن مسلسل کوشش سے ہندوستان دیکھتے ہی دیکھتے امریکہ سے آگے نکل گیا اور دنیا کا سب سے بڑی ٹیکہ کاری مہم کامیابی کے ساتھ پورا ہوا۔

       
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: