உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ممبئی دورے کے دوران امت شاہ کی سکیورٹی میں چوک، خود کو MP کا PA بتاکر ارد۔گرد گھومتا رہا شخص

     پولیس کا کہنا ہے کہ اس معاملے کی تمام پہلوؤں سے تفتیش کی جا رہی ہے۔ ملزم کو وزیراعلیٰ اور ڈپٹی وزیراعلیٰ کی رہائش گاہ کے آس پاس بھی دیکھا گیا۔

    پولیس کا کہنا ہے کہ اس معاملے کی تمام پہلوؤں سے تفتیش کی جا رہی ہے۔ ملزم کو وزیراعلیٰ اور ڈپٹی وزیراعلیٰ کی رہائش گاہ کے آس پاس بھی دیکھا گیا۔

    پولیس کا کہنا ہے کہ اس معاملے کی تمام پہلوؤں سے تفتیش کی جا رہی ہے۔ ملزم کو وزیراعلیٰ اور ڈپٹی وزیراعلیٰ کی رہائش گاہ کے آس پاس بھی دیکھا گیا۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Mumbai | Delhi
    • Share this:
      وزیر داخلہ امت شاہ کی سکیورٹی میں کوتاہی کے معاملے میں ہیمنت پوار (مہاراشٹر کے دھولے کا رہنے والا) نامی شخص کو گرفتار کیا گیا ہے اور اسے پانچ دن کی پولیس ریمانڈ پر بھیج دیا گیا ہے۔ وہ گھنٹوں امت شاہ کے گرد گھومتا رہا۔ ملزم کا نام ہیمنت پوار ہے اور وہ دھولے کا رہنے والا ہے۔ بتایا جا رہا ہے کہ جب وزارت کے اہلکاروں کو ہیمنت پر شک ہوا تو پولیس کو اطلاع دی گئی۔ پولیس کا کہنا ہے کہ اس معاملے کی تمام پہلوؤں سے تفتیش کی جا رہی ہے۔ ملزم کو وزیراعلیٰ اور ڈپٹی وزیراعلیٰ کی رہائش گاہ کے آس پاس بھی دیکھا گیا۔

      امت شاہ ممبئی کے دورے پر تھے۔
      آپ کو بتا دیں کہ امیت شاہ حال ہی میں ممبئی کے دورے پر تھے اور کئی پروگراموں میں حصہ لیا تھا۔ اب سوال یہ ہے کہ اتنے زیادہ حفاظتی انتظامات کے بعد یہ غلطی کیسے ہوئی؟ امت شاہ کی سیکورٹی کئی راؤنڈ میں ہوتی ہے اور جب ان کا پروگرام ہوتا ہے تو ان سے ملنے والے تمام لوگوں کی اچھی طرح جانچ پڑتال کی جاتی ہے۔ اب سوال یہ ہے کہ اتنی تحقیقات کے بعد یہ کیسے ممکن ہوا؟

       

      ٹیم انڈیا میں ہوں گی یہ بڑی تبدیلیاں! یہ پلئینگ 11 ٹیم کو دلائیں گے جیت


      6 سال سے اپنے ہی بھائی کے ساتھ رلیشن شپ میں تھی لڑکی، جب سامنے آئی سچائی تو اڑ گئے ہوش

      بتایا جا رہا ہے کہ جب ملزم نے کچھ سی آر پی ایف اہلکاروں سے امت شاہ کے بارے میں سوال کیا تو شک ہوا کہ بغیر کسی سیاق و سباق کے معلومات حاصل کرنے کا مقصد کیا ہے۔ اس حوالے سے ممبئی پولیس کا کہنا ہے کہ ملزم اس سوال کا جواب نہیں دے سکا کہ وہ آندھرا پردیش کے ایم پی کا PA کب اور کس وقت بنا۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: