உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Andhra Pradesh: تروپتی جارہی مسافروں سے بھری ایک بس کھائی میں گری، 5 لوگوں کی موت، 40 زخمی

    تروپتی میں بھیانک سڑک حادثے میں پانچ لوگوں کی ہوئی موت۔

    تروپتی میں بھیانک سڑک حادثے میں پانچ لوگوں کی ہوئی موت۔

    Andhra Pradesh: بس کھائی میں گرتے ہوئے کئی درختوں سے ٹکرا گئی۔ جنہوں نے حادثہ دیکھا وہ متاثرین کو بچانے کے لئے پہنچ گئے اور چندراگیری پولیس کو اطلاع دی۔ تقریباً 9 ایمبولینسیں، اسٹیٹ ڈیزاسٹر ریسپانس فورس (ایس ڈی آر ایف) کی ایک خصوصی ٹیم اور فائر بریگیڈ کے عملے نے موقع پر پہنچ کر بچاؤ آپریشن شروع کیا۔

    • Share this:
      تروپتی: آندھرا پردیش (Andhra Pradesh) میں ہفتہ کو سگائی کے لیے تروپتی جا رہی مسافروں سے بھری بس توازن کھونے کے بعد گہری کھائی میں گر گئی۔ یہ معاملہ اننت پور ضلع کے دھرما ورم سے متعلق ہے، جہاں ہفتہ کو تقریباً 50 لوگ شادی سے پہلے منگنی کے لیے بس سے تروپتی جا رہے تھے۔ تروپتی کے قریب چتور ضلع کے بھکرپیٹ علاقے میں بس اپنا توازن کھو بیٹھی اور تقریباً 100 فٹ گہری کھائی میں گر گئی۔ اس ہولناک حادثے میں تقریباً 40 افراد کے زخمی ہونے کی اطلاع ہے جن میں کئی بچے بھی شامل ہیں۔ اس کے علاوہ کئی لوگوں کی حالت تشویشناک ہے۔ زخمیوں کو تروپتی کے رویا سرکاری اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے۔

      وہیں میڈیا رپورٹس کے مطابق اس حادثے میں اب تک 5 لوگوں کی موت ہو چکی ہے۔ مقامی لوگوں نے بتایا کہ انہوں نے چاروں طرف گوشت کے ٹکڑے بکھرے ہوئے دیکھے۔ چندراگیری پولیس کی ابتدائی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ہفتہ کو ایک نجی بس ضلع اننت پور کے دھرماوارم سے تروپتی کے لیے روانہ ہوئی۔ مبینہ طور پر ایک موڑ کو عبور کرتے ہوئے بس ڈرائیور نے کنٹرول کھو دیا اور بس نیچے کھائی میں گر گئی۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Bihar: دولہے کو پاگلوں کی طرح جھومتا دیکھ کر لڑکی نے شادی سے کردیا انکار

      بس کھائی میں گرتے ہوئے کئی درختوں سے ٹکرا گئی۔ جنہوں نے حادثہ دیکھا وہ متاثرین کو بچانے کے لئے پہنچ گئے اور چندراگیری پولیس کو اطلاع دی۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Bihar: دولہے کو پاگلوں کی طرح جھومتا دیکھ کر لڑکی نے شادی سے کردیا انکار
      تقریباً 9 ایمبولینسیں، اسٹیٹ ڈیزاسٹر ریسپانس فورس (ایس ڈی آر ایف) کی ایک خصوصی ٹیم اور فائر بریگیڈ کے عملے نے موقع پر پہنچ کر بچاؤ آپریشن شروع کیا۔ پولیس کا کہنا ہے کہ اندھیرے اور گھنے جنگل کی وجہ سے ریسکیو آپریشن میں رکاوٹ پیدا ہوئی۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: