بنگلورو کے ایک قدیم وقف ادارے کی خستہ حالت۔ کرایہ داروں کی من مانی

اسکول کی عمارت کے ایک حصہ کی حالت خستہ اوربوسیدہ ہے۔ تعلیمی ترقی کیلئے قائم اس قدیم وقف ادارے کی ملکیت کروڑوں روپئے کی ہے۔لیکن ماہانہ آمدنی صرف 70ہزارروپئے حاصل ہورہی ہے۔ اس سے صاف ظاہر ہوتاہے کہ ملت کےہی چند افراد وقف کی زمین کاناجائزاستعمال کررہےہیں۔

May 20, 2019 04:42 PM IST | Updated on: May 20, 2019 04:55 PM IST
بنگلورو کے ایک قدیم وقف ادارے کی خستہ حالت۔ کرایہ داروں کی من مانی

ہمیں تواپنوں نے لوٹا۔۔۔ کچھ ایسا ہی تصویرہے بنگلورو کے اس قدیم وقف ادارےکی۔ جی ہاں۔۔ انجمن اسلامیہ مدرسہ نسوان کے کرایہ دارآج بھی صرف500سے600روپئہ ماہانہ کرایہ ادا کررہےہیں۔ ایسے کئی کرایہ دار ہیں جنہوں نے کئی سالوں تک بقایاجات بھی ادا نہیں کئےہیں۔ اتنا ہی نہیں مدرسہ کےایک جانب بڑا کوڑا دان پریشانی کا سبب بنا ہوا ہے تو دوسری طرف چند افراد اپنی گاڑیاں پارک کرتے ہوئےقبضہ جمائے ہوئےہیں۔ بنگلورو ضلع وقف مشاورتی کمیٹی کے صدر شجاع الدین نے اس ادارے کا دورہ کیا اور افسوس کا اظہارکیا۔بنگلورو کا ایک قدیم وقف ادارہ انجمن اسلامیہ مدرسہ نسوان مختلف مسائل سے دوچارہے۔

مسلم خواتین کی تعلیمی ترقی کیلئے شہر کے بزرگوں نے سوسال قبل انجمن اسلامیہ مدرسہ نسوان کی بنیاد رکھی تھی۔ فی الوقت یہاں پرائمری سے لیکر کالج تک کی تعلیم کا انتظام ہے۔تقریبا400لڑکیاں تعلیم حاصل کررہے ہیں۔ لیکن کریہ داروں کی من مانی، لوٹ کھسوٹ سے اب یہاں کی اسکول کوچلانا مشکل ہوگیاہے۔شہر کے بیچوں بیچ موجود اس وقف ادارے کی وسیع ترجگہ اب بھی خالی پڑی ہوئی ہے۔ اسکول کی عمارت کے ایک حصہ کی حالت خستہ اوربوسیدہ ہے۔ تعلیمی ترقی کیلئے قائم اس قدیم وقف ادارے کی ملکیت کروڑوں روپئے کی ہے۔لیکن ماہانہ آمدنی صرف 70ہزارروپئے حاصل ہورہی ہے۔ اس سے صاف ظاہر ہوتاہے کہ ملت کےہی چند افراد وقف کی زمین کاناجائزاستعمال کررہےہیں۔ آپ بھی دیکھئے بنگلورو سے رؤف احمد ہلور کی یہ رپورٹ

Loading...

Loading...