உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Telangana:تلنگانہ میں کانگریس کو جھٹکا، پارٹی کے ایک اور سینئر لیڈر ایم اے خان نے دیا استعفیٰ، بتائی وجہ

    تلنگانہ کانگریس کے سینئر لیڈر ایم اے خان نے چھوڑی پارٹی۔

    تلنگانہ کانگریس کے سینئر لیڈر ایم اے خان نے چھوڑی پارٹی۔

    Telangana News: انہوں نے لکھا کہ میرے پاس کانگریس پارٹی کے معاملوں سے خود کو الگ کرنے کے علاوہ کوئی متبادل نہیں ہے، اس لئے میں فوری اثر سے انڈین نیشنل کانگریس (INC) پارٹی کی رکنیت سے اپنا استعفیٰ دے دیتا ہوں۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Hyderabad | New Delhi | Lucknow | Jammu | Punjab
    • Share this:
      Telangana News: کانگریس سب سے خراب دور سے گزر رہی ہے۔ آئے دن پارٹی سے سینئر لیڈر استعفیٰ دے رہے ہیں۔ غلام نبی آزاد کی جانب سے جمعہ کو استعفی دینے کے بعد تلنگانہ کے راجیہ سبھا کے سابق رکن ایم اے خان نے بھی کل ہفتہ کو کانگریس پارٹی چھوڑ دی ہے۔ ساتھ ہی انہوں نے خط لکھ کر وجہ بھی بتائی ہے۔

      ایم اے خان نے پارٹی کو بھیجے اپنے خط میں لکھا ہے کہ انڈین نیشنل کانگریس پارٹی عوام کو یہ سمجھانے میں پوری طرح ناکام رہی ہے کہ وہ اپنی وراثت کو پاسکتی ہے اور ملک کو آگے بڑھا سکتی ہے۔ انہوں نے آگے کہا کہ اپنی طالب علم کی زندگی سے ہی چار دہائیوں سے زیادہ وقت سے وہ پارٹی کے ساتھ جڑے رہے تھے۔

      سینئر لیڈروں کی نہیں سنی باتیں
      آگے انہوں نے خط میں لکھا کہ جی 23 کے سینئر رہنماؤں نے پارٹی کے اچھے کام اور اس کے لیے آواز اٹھائی جسے قیادت نے مسترد کر دیا اور ان کی بات تک نہیں سنی۔ خط میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ اگر ان لیڈروں پر بھروسہ کیا جاتا اور پارٹی ان کے درد کو سمجھتی تو حالات مختلف ہوتے۔

      استعفیٰ دینے کے لئے مجبور کیا گیا
      خط میں ایم اے خان نے کہا کہ سینئر رہنماؤں کو پارٹی سے استعفیٰ دینے پر مجبور کیا گیا۔ اعلیٰ قیادت پارٹی کے نچلی سطح کے کارکنوں کو دوبارہ متحرک کرنے کے لیے کوئی کوشش نہیں کر رہی۔ پنڈت نہرو، اندرا گاندھی کی قیادت میں پارٹی نے اسی عزم اور لگن کے ساتھ ملک کی خدمت جاری رکھی ہے۔ لیکن اس صورتحال میں میرے پاس یہ سخت فیصلہ لینے کے سوا کوئی چارہ نہیں تھا۔

      یہ بھی پڑھیں:

      India China News:سری لنکا کی آڑ میں اپنا ایجنڈہ نہ چلائے چین، چینی سفیر پر بھڑکا ہندوستان

      یہ بھی پڑھیں:
      Twin Towers:ملک میں پہلی مرتبہ گرائی جائیں گی اتنی اونچی عمارتیں، سیکورٹی ایجنسیاں الرٹ

      انہوں نے لکھا کہ میرے پاس کانگریس پارٹی کے معاملوں سے خود کو الگ کرنے کے علاوہ کوئی متبادل نہیں ہے، اس لئے میں فوری اثر سے انڈین نیشنل کانگریس (INC) پارٹی کی رکنیت سے اپنا استعفیٰ دے دیتا ہوں۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: