ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

شہریت ترمیمی قانون کے خلاف شاہین باغ کی طرح پٹنہ میں بھی جگہ جگہ ہورہا ہے احتجاج

پٹنہ کے سبزی باغ ، عالم گنج اور ہارون نگر میں خواتین کا احتجاج ہورہا ہے اور اس کے بعد اب کرجی دیگھہا میں بھی خواتین سڑک پر اتر گئی ہیں ۔

  • Share this:
شہریت ترمیمی قانون کے خلاف شاہین باغ کی طرح پٹنہ میں بھی جگہ جگہ ہورہا ہے احتجاج
کرجی دیگھہا میں بھی خواتین سڑک پر اتر گئی ہیں ۔

سی اے اے ، این پی آر اور این آر سی پر شاہین باغ سے شروع ہوا احتجاج بہار کے مختلف ضلعوں میں بھی پہنچ گیا ہے ۔ پٹنہ کے سبزی باغ ، عالم گنج اور ہارون نگر میں خواتین کا احتجاج ہورہا ہے اور اس کے بعد اب کرجی دیگھہا میں بھی خواتین سڑک پر اتر گئی ہیں ۔ سی اے اے کی مخالفت میں سڑکوں پر اتری خواتین جہاں اس قانون کو آئین کے خلاف بتا رہی ہیں وہیں این پی آر میں تبدلی کرنے کا بھی مطالبہ کررہی ہیں ۔خاص بات یہ ہے کہ خواتین کے احتجاج کو سبھی سماج کے لوگوں کی حمایت حاصل ہے ۔ گھر کا کام کو پورا کرنے کے بعد خواتین سیدھے احتجاج کے مقام پر پہنچتی ہیں اور گھنٹوں حکومت کے خلاف اپنے غصے کا اظہار احتجاج کی شکل میں درج کراتی ہیں۔

نوجوانوں کا کہنا ہے کہ ملک میں مہنگائی آسمان چھونے لگی ہے ، دال سے لے کر روٹی ، پیاز اور سبزی تک مہنگی ہوگئی ہیں ۔ معمولی کمانے والا شخص ایک مہینہ میں کبھی جاکر اپنے پسند کا کھانا کھا پاتا ہے۔ روزگار نہیں ہے، نتیجہ کے طور پر بے روزگار نوجوانوں کی ایک بڑی تعداد در در کی ٹھوکر کھانے پر مجبور ہے۔ ایسے میں سی اے اے ، این پی آر اور این آرسی جیسے امور ملک کی معیشت کو نہ صرف مزید خراب کریں گے ، بلکہ سماج کے تانے بانے کو بھی نقصان پہنچائیں گے ۔

اس قانون کے خلاف سبھی سماج کے لوگ احتجاج کررہے ہیں ۔ لیکن ابھی بھی بہت ایسے لوگ ہیں جو ساحل پر کھڑا ہوکر اس مسئلہ کو سمجھنے کی کوشش کررہے ہیں ۔ دیگھہا ایکشن کمیٹی کے مطابق وہ ایسے لوگوں کو بیدار کرنے کی بھی کوشش کررہے ہیں ، تاکہ بڑی تعداد میں عام لوگوں کا ساتھ مل سکے ۔

First published: Jan 20, 2020 10:34 PM IST