ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

سی اے اے مخالف روشن باغ دھرنے کو ختم کرنے سے خواتین نے کیا صاف انکار ، کہی یہ بات

خواتین کا کہنا ہے کہ پولیس انتظامیہ کی طرف سے دھرنا ختم کرنے کے لئے مسلسل دباؤ بنایا جا رہا ہے ، لیکن شہریت ترمیمی قانون کے خلاف جاری احتجاجی دھرنے کو ختم نہیں کیا جائے گا ۔

  • Share this:
سی اے اے مخالف روشن باغ دھرنے کو ختم کرنے سے خواتین  نے کیا صاف انکار ، کہی یہ بات
سی اے اے مخالف روشن باغ دھرنے کو ختم کرنے سے خواتین نے کیا صاف انکار ، کہی یہ بات

الہ آباد : دہلی میں ہونے والے فرقہ وارانہ تشدد کے واقعات کے بعد الہ آباد کے روشن باغ میں احتجاجی دھرنے پر بیٹھی خواتین نے دھرنا ختم کرنے سے صاف انکار کر دیا ہے ۔ خواتین کا کہنا ہے کہ شہریتترمیمی قانون کے خلاف ملک بھر میں ہونے والے احتجاج پوری طرح سے پر امن ہیں ، ایسے میں احتجاجی دھرنا ختم کرنے کا کوئی سوال ہی نہیں پیدا ہوتا ۔ دہلی میں تشدد کے تناظر میں احتجاجی خواتین نے الزام لگایا ہے کہ حکومت کی شہہ پراحتجاج کو کچلنے کی سازش کی جا رہی ہے ۔

خواتین کا یہ بھی کہنا ہے کہ پولیس انتظامیہ کی طرف سے دھرنا ختم کرنے کے لئے مسلسل دباؤ بنایا جا رہا ہے ، لیکن اس کے با وجود شہریت ترمیمی قانون کے خلاف جاری احتجاجی دھرنے کو ختم نہیں کیا جائے گا ۔ شہریت ترمیمی قانون کے خلاف ہونے والے الہ آباد کے روشن باغ احتجاج کو 50 دن پورے ہو گئے ہیں ۔ اس دوران دھرنے پر بیٹھی خواتین کو مقامی پولیس انتظامیہ کی طرف سے طرح طرح کے دباؤ کا سامنا بھی کرنا پڑا ۔

گزشتہ دنوں دہلی میں ہونے والے پر تشدد واقعات  کے بعد روشن باغ کے دھرنے پر بیٹھی خواتین نے بھی اپنی سخت تشویش کا اظہار کیا ہے ۔ دھرنے پر بیٹھی خواتین نے دہلی میں ہوئے  تشدد کے خلاف اپنی تحریک اور بھی تیز کردی ہے ۔ اس وقت پورا روشن باغ  دہلی تشدد کے خلاف بینر اور پوسٹر سے سراپا احتجاج بنا ہوا ہے ۔ روشن باغ کی خواتین شہریت ترمیمی قانون اور این پی آر کے خلاف اپنا احتجاج جاری رکھنے کے لئے پرعزم دکھائی دے رہی ہیں ۔ بلکہ دہلی میں ہو نے والے تشدد کے بعد ان کے موقف میں اور بھی پختگی آگئی ہے ۔

خواتین کا الزام ہے کہ حکومت کی شہہ پر شر پسند عناصر پر امن احتجاج کو تباہ کرنے کی کوشش کر رہے ہیں ۔ خواتین کا سوال ہے کہ دہلی کو تشدد کی آگ میں جھونکے والوں کے خلاف حکومت سخت کارروائی کیوں نہیں کر رہی ہے ؟ اسی دوران روشن میں دہلی کے فرقہ وارانہ تشدد میں ہلاک ہونے والے افراد کو خراج عقیدت بھی پیش کیا گیا اور ان کی یاد میں دو منٹ کی خاموشی اختیار کی گئی ۔ خواتین نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ دہلی تشدد میں شامل شر پسند عناصر کے خلاف  سخت کا رروائی کی جائے اور تشدد کا شکار علاقوں میں امن بحال کیا جائے ۔

First published: Mar 01, 2020 10:49 PM IST