ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

جنرل بپن راوت بنے ملک کے پہلے چیف آف ڈیفنس اسٹاف ، یہ ہوں گی ان کی ذمہ داریاں

ہندوستانی فوج کے سربراہ بپن راوت پہلے چیف آف ڈیفنس اسٹاف ہوں گے ۔ کابینہ کمیٹی نے راوت کے نام پر مہر لگا دی ہے ۔

  • Share this:
جنرل بپن راوت بنے ملک کے پہلے چیف آف ڈیفنس اسٹاف ، یہ ہوں گی ان کی ذمہ داریاں
فوجی سربراہ بپن راوت کی فائل فوٹو ۔

فوجی سربراہ جنرل بپن راوت کو ملک کا پہلا چیف آف ڈیفنس اسٹاف (سی ڈی ایس) مقرر کیا گیا ہے۔ آج دیر رات جاری سرکاری پریس ریلیز میں جنرل راوت کو سی ڈی ایس مقرر کرنے کی اطلاع دی گئی۔ سی ڈی ایس کے طور پر جنرل راوت کی مدت کار 31 دسمبر سے شروع ہوگی اور وہ اگلے حکمنامے تک اس عہدے پر فائز رہیں گے۔ وہ منگل کے روز فوجی سربراہ کے عہدے سے سبکدوش ہو رہے ہیں۔ جنرل راوت کو دسمبر 1978 میں فوج میں کمیشن ملا تھا اور وہ ایک جنوری 2017 کو فوجی سربراہ مقرر کیے گئےتھے۔


مرکزی کابینہ نے گذشتہ ہفتے وزارت دفاع میں فوجی امور کے ایک نئے محکمہ کی تشکیل اور اس (سی ڈی ایس) کے عہدے کے وجود، کردار، ضابطوں اور چارٹر کو منظوری دی تھی۔ سی ڈی ایس اس محکمہ کے سربراہ اور سکریٹری ہوں گے۔ سی ڈی ایس کے عہدے پر مقرر ہونے والا افسر چار اسٹار کے رینک والا جنرل ہوگا۔ اس کی تنخواہ فوج کے تینوں سربراہوں کے برابر ہوگی۔ وہ حکومت کو دفاعی امور میں صلاح دینے والا اعلیٰ افسر ہوگا۔ سی ڈی ایس فوجی امور کے محکمہ کے سربراہ کے ساتھ ساتھ سربراہوں کی اسٹاف کمیٹی کا مستقل صدر بھی ہوگا۔





چیف آف ڈیفنس اسٹاف کا عہدہ تینوں فوجی سربراہوں سے اوپر ہوگا ۔ 1999 کی کارگل جنگ کے بعد سے ہی سیکورٹی ماہرین اس کا مطالبہ کررہے ہیں ۔ کارگل جنگ کے بعد اس وقت کے ڈپٹی وزیر اعظم لال کرشن اڈوانی کی سربراہی میں بنے گروپ آف منسٹرس ( جی او ایم ) نے بھی تینوں فوج کے درمیان بہتر تال میل بنانے کیلئے سی ڈی ایس کی سفارش کی تھی ۔ جی او ایم نے اپنی سفارش میں کہا تھا کہ اگر کارگل جنگ کے دوران ایسا کوئی نظام ہوتا ، تو تینوں افواج بہتر تال میل سے جنگ کے میدان میں اترتیں اور نقصان کافی کم ہوتا ۔ 20 سال بعد اس کو لاگو کیا گیا ہے ۔
First published: Dec 30, 2019 11:01 PM IST