Choose Municipal Ward
    CLICK HERE FOR DETAILED RESULTS
    ہوم » نیوز » وطن نامہ

    پاک مقبوضہ کشمیر کو لے کر فوجی سربراہ کا بڑا بیان ، کہا : حکم ملا تو کریں گے کارروائی

    پارلیمنٹ نے 1990 کی دہائی میں اتفاق رائےسے ایک تجویز پاس کی تھی ، جس میں کہا گیا ہے کہ پاکستان کے قبضے والا کشمیر مکمل جموں اور کشمیرہندوستان کا اٹوٹ حصہ ہے۔

    • UNI
    • Last Updated: Jan 11, 2020 05:17 PM IST
    • Share this:
    پاک مقبوضہ کشمیر کو لے کر فوجی سربراہ کا بڑا بیان ، کہا : حکم ملا تو کریں گے کارروائی
    پاک مقبوضہ کشمیر کو لے کر فوجی سربراہ کا بڑا بیان ، کہا : حکم ملا تو کریں گے کارروائی

    ہندوستانی فوج کے سربراہ جنرل منوج نرونے کا کہنا ہے کہ اگر پارلیمنٹ پاک مقبوضہ کشمیر کو ملک میں شامل کرنے کا حکم دیتی ہے ، تو فوج کارروائی کرنے کےلئے تیار ہے۔ جنرل نرونے نے سالانہ پریس کانفرنس میں اس بارے میں پوچھے گئے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ پارلیمنٹ نے کئی برسوں پہلے ایک تجویز پاس کی تھی کہ اس وقت کا مکمل جموں و کشمیر ہمارا حصہ ہے۔اگر پارلیمنٹ چاہتی ہے کہ یہ علاقہ ہمارا ہو ، تو حکم ملنے پر کارروائی کی جائےگی۔


    واضح رہے کہ پارلیمنٹ نے 1990 کی دہائی میں اتفاق رائےسے ایک تجویز پاس کی تھی ، جس میں کہا گیا ہے کہ پاکستان کے قبضے والا کشمیر مکمل جموں اور کشمیرہندوستان کا اٹوٹ حصہ ہے۔ جنرل نرونے سے یہ بھی پوچھا گیا تھا کہ کیا انہیں حکومت کی جانب سے پی او کے پر کارروائی کرنے کے بارے میں کوئی حکم ملا ہے ۔ حالانکہ انہوں نے اس بارے میں براہ راست طورپر کچھ نہیں کہا۔


    بی جے پی کے سینئرلیڈر وقت وقت پر کہتے رہے ہیں کہ پاکستان کے قبضے والا جموں وکشمیر ہندوستان کا حصہ ہے اور اب حکومت کا اگلا قدم اسے ملک کے نقشے میں ملانا ہے۔ پاکستان کی جانب سے بھی اس بارے میں کئی بار خدشہ ظاہر کیا گیا ہے کہ مودی حکومت اس کے قبضے والے کشمیر کو ہندوستان میں ملانا چاہتی ہے۔


    فوجی سربراہ نے مزید کہا کہ فوج چین سے ملحق سرحد پر اب پہلے سے زیادہ توجہ دے رہی ہے اور ایک ساتھ دو مورچوں پر کسی بھی صورت حال سےنمٹنے کے لئے ضروری توازن برقرار رکھا جارہا ہے۔ جنرل نروانے نے چین سے ملحق سرحد سے متعلق سوالات کے جواب میں کہا کہ دونوں ممالک کی سیاسی قیادت کے درمیان دو چوٹی میٹنگوں کے بعد سرحد پر صورت حال بہتر ہوئی ہے اور وہاں امن اورخوشگوار ماحول ہے۔

    انہوں نےکہا کہ ساتھ ہی اس بات سے بھی وہ اچھی طرح واقف ہیں کہ پاکستان اور چین دونوں طرف سے خطرہ ہے۔ پہلے پاکستان سے ملحق مغربی مورچے پر ہی فوج کی زیادہ توجہ رہتی تھی لیکن اب ان کا ماننا ہے کہ چین سے ملحق شمالی مورچہ بھی اتنا ہی اہم ہے اور اس لئے دونوں کے درمیان توازن قائم کیا جارہاہے۔
    First published: Jan 11, 2020 05:17 PM IST
    corona virus btn
    corona virus btn
    Loading