آرٹیکل 370 کی منسوخی کے بعد جموں وکشمیر میں حالات بہتر، اسکول کھلے، مسجدوں میں ادا کی گئی نماز

انتظامیہ نے پابندیوں میں تھوڑی ڈھیل دی ہے جس کے سبب لوگ گھروں سے نکل رہےہیں۔ جموں اور سری نگر کے بازوروں میں جمعہ کو ہلکی۔ہلکی ہلچل دیکھنے کو ملی ہے۔ جمعہ کی نماز ادا کرنے کے بعد لوگ مسجدوں کے باہر نظر آئے۔ وہیں فون اور انٹرنیٹ خدمات کو بھی جزوی طور پر بحال کیا گیا ہے

Aug 09, 2019 07:00 PM IST | Updated on: Aug 09, 2019 07:11 PM IST
آرٹیکل 370 کی منسوخی کے بعد جموں وکشمیر میں حالات بہتر، اسکول کھلے، مسجدوں میں ادا کی گئی نماز

جموں وکشمیرسے آرٹیکل 370 کی منسوخی کے بعد معمول پرلوٹ رہے ہیں حالات۔(تصویر:نیوز18ڈاٹ کام)۔

آرٹیکل 370کے جموں وکشمیر سے ہٹائے جانے کے کچھ دن بعد اب دھیرے۔دھیرے زندگی پٹری پر لوٹ رہی ہے۔ انتظامیہ نے پابندیوں میں تھوڑی ڈھیل دی ہے جس کی وجہ لوگ گھروں سے نکل رہےہیں۔ جموں اور سری نگر کے بازوروں میں جمعہ کو ہلکی۔ہلکی ہلچل دیکھنے کو ملی ہے۔ جمعہ کی نماز ادا کرنے کے بعد لوگ مسجدوں کے باہر نظر آئے۔ وہیں فون اور انٹرنیٹ خدمات کو بھی جزوی طور پر بحال کیا گیا ہے۔

انظامیہ کی ایسی کوشش ہے کہ لوگوں کو عید کے موقع پر کسی طرح کی پریشانی کا سامنا نہ کرنا پڑے۔ افسران نے بتایا کہ جمعہ کو نماز ادا کرنے کیلئے کرفیو میں چھوٹ دی گئی ہے۔ حالانکہ سکیورٹی کے سخت انتظام بھی کئے گئے ہیں۔ سکیورٹی اہلکار ابھی بھی ہائی الرٹ پر ہیں۔ اجیت ڈوبھال نے سکیورٹی میں چھوٹ دینے کا فیصلہ لیا ہے۔

اس کے ساتھ ہی ڈوبھال نے یہ بھی یقینی کرنے کیلئے کہا ہے کہ کشمیر کے لوگوں کو کسی طرح کی دقت کا سامنا نہ کرنا پڑے۔ آرٹیکل 370 کے مد نظر کسی کو بھی مظاہرہ کرنے کی اجازت نہیں ہے۔ ایسے میں سکیورٹی فروسزکو ہائی الرٹ پر رکھا گیا ہے۔

Loading...

Loading...