ہوم » نیوز » وطن نامہ

یوم آزادی : طلاق ثلاثہ قانون کی منظوری اورآرٹیکل 370 کوہٹانے کا کارنامہ۔ وزیراعظم مودی کا خطاب

وزیراعظم نریندرمودی نے کہا کہ 10 ہفتوں کے اقتدار میں یہ حکومت نے تمام شعبوں میں مثالی کارگردگی کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ 10 ہفتوں کے اندر ہی جموں وکشمیر سے آرٹیکل 370 اور دفعہ 35اے کو ہٹایاگیاہے۔

  • Share this:
یوم آزادی : طلاق ثلاثہ قانون کی منظوری اورآرٹیکل 370 کوہٹانے کا کارنامہ۔ وزیراعظم مودی کا خطاب
جشن آزادی کے موقع پر وزیراعظم نریندرمودی لال قلعہ سے خطاب کرتے ہوئے۔(تصویر:نیوز18 اردو)۔

وزیراعظم نریندر مودی سلامتی کے چاک وچوبند انتظامات کے درمیان 73ویں یوم آزادی کے موقع پر جمعرات کو لال قلعہ پر پرچم کشائی انجام دی قومی پرچم لہرانے کے بعدوزیراعظم نریندرمودی قوم سے خطاب کیا۔ یادرہے کہ بی جے پی کی مرکز میں دوبارہ اقتدار حاصل کرنے کےبعد پہلی مرتبہ لال قلعہ سے اہل وطن کو خطاب کررہے تھے۔ وزیراعظم نریندرمودی نے کہا کہ 10 ہفتوں کے اقتدار میں یہ حکومت نے تمام شعبوں میں مثالی کارگردگی کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ 10 ہفتوں کے اندر ہی جموں وکشمیر سے آرٹیکل 370 اور دفعہ 35اے کو ہٹایاگیاہے۔ پی ایم مودی نے کہا کہ حکومت نے صرف ہفتوں کے اقتدارمیں مسلم خواتین کو ظلم سے نجات دلانے کے لیے طلاق ثلاثہ قانون کو منظورکروایاہے۔


آرٹیکل 370 ہٹنے سے’ایک ملک ایک آئین‘ لاگو: مودی


وزیر اعظم نریندر مودی نے جمعرات کو کہا کہ آرٹیکل 370 اور 35 اے کو ختم کر کے سردار پٹیل کے خواب پورا کیا اور اس کے ساتھ ہی’ایک ملک ایک آئین‘ نافذ کر دیا گیا۔پی ایم مودی نے 73 ویں یوم آزادی کے موقع تاریخی لال قلعہ کی فصیل سے قوم کو خطاب کرتے ہوئے کہا کہ 70 سال میں آرٹیکل 370 کو ہٹایا نہیں گیا، لیکن ان کی حکومت نے 70 دن کے اندر اندر اس کو ختم کر دیا۔ پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں نے اس قرارداد کو دو تہائی سے زیادہ اکثریت سے منظور کیا۔ اب یہ تاریخ بن چکا ہے۔ آرٹیکل 370، 35 اے کے ہٹنے سے اب ’ون نیشن، ون كانسٹی ٹيوشن‘ کا احساس حقیقت میں بدل گیاہے‘‘۔ انہوں نے کہا کہ ملک کے 130 کروڑ عوام کی یہ ذمہ داری تھی کہ وہ جموں و کشمیر کے لوگوں کے خوابوں کو پورا کرے اور ہم نے وہاں کے عوام کی توقعات پوری کرنے کی راہ میں آ رہی رکاوٹوں کو دور کر دیا ہے اور سردار پٹیل کے خوابوں کو پورا کرنے کی سمت میں اہم قدم اٹھایا ہے۔


وزیراعظم نے چھٹی بار لال قلعہ سے ترنگا لہراتے ہوئے اپوزیشن پر وار بھی کیا کہ آرٹیکل 370 کے خاتمہ کے لئے ہر کوئی ذہنی طور پر حمایت دیتا رہا، لیکن سیاست کے گلیاروں میں انتخابات کے ترازو سے تولنے والے کچھ لوگ 370 کے حق میں کچھ اور کہتے رہے ہیں۔ آرٹیکل 370 اتنا اچھا تھا تو 70 سال میں اسے مستقل کیوں نہیں کر دیا گیا تھا۔انہوں نے کہا’’ہم نہ تو مسائل کو ٹالتے ہیں، نہ پالتے ہیں‘‘۔

پی ایم مودی نے کہا کہ آرٹیکل 370 اور 35 اے کے پرانے سسٹم سے جموں و کشمیر میں دہشت گردی، کنبہ پروری اور بدعنوانی کو فروغ ملتا تھا. لیکن اب اسے ختم کر دیا گیا ہے‘‘۔وزیر اعظم نے کہا کہ آرٹیکل 370 کی وجہ سے وادی کے لوگوں کو کئی مراعات کا فائدہ نہیں مل پا رہا تھا. یہاں پر کرپشن اور علیحدگی پسندی نے اپنے پاؤں پھیلالئے تھے۔ وہاں کے دلتوں، گوجر سمیت دوسرے لوگوں کو ان کے حقوق نہیں مل پا رہے تھے، جو اب انہیں ملنے والے ہیں۔ جموں و کشمیر اور لداخ خوشحالی اور امن کے نقطہ نظر سے ملک کے لئے نظیر بن سکتے ہیں اور ترقی کے سفر میں بہت بڑا کردارادا کر سکتے ہیں۔



وزیراعظم مودی نے غربت کے خاتمہ اورپانی کی قلت پرقابوپانے کے لیے اقدامات کرنے کی بات کہی ۔ انہوں نے کہا کہ مودی حکومت نے کہا کہ ملک کے کئی علاقوں میں آج بھی پانی سربراہی نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ پانی کی قلت کو دور کرنے کے لیے پانی کا تحفظ ضروری ہے۔ پی ایم مودی نے کہا کہ سوچھ بھارت کی طرح پانی کے تحفظ کی مہم چلائی جانی چاہیے۔

وزیراعظم مودی نے آبادی میں مسلسل اضافہ پرتشویش کا اظہارکیاہے۔ انہوں نے عوام سے اپیل کی ہے کہ وہ آبادی پرقابوپانے کے متعلق فکرکریں ۔ انہو ںے کہا کہ بچوں کی پیدائش سے پہلے اس بات کا جائزہ لیاجائے کہ بچے کی نگہداشت آپ کرپائیں گے یہ نہیں۔ انہوں نے کہا کہ 21 ویں صدی کا بھارت خواب کو پورا کرنے والا ملک ہے۔ اگرآبادی میں صحت مند نہیں اور تعلیم یافتہ نہیں ہوتو ملک کی ترقی ممکن نہیں ہے۔

لال قلعہ سے خطاب کے دوران مودی نے کہا کہ دہشت گردی سے نمٹنے کے لیے حکومت نے کئی اہم قوانین میں تبدیلیاں کی گئیں ہیں۔ وزیراعظم مودی نے کہا کہ ملک میں ڈاکٹروں کی ضرورت ہے اس لیے حکومت نے اس سلسلہ میں اقدامات شروع کردیئے ہیں۔ پی ایم مودی نے اپنے خطاب کے آغاز کے موقع پر رکشا بندھن تہوار کے موقع پرمبارکباد پیش کی۔اس موقع پرانہوں نے کہا کہ پسماندہ طبقات اور سماج کے کمزور طبقات کی ترقی کے لیے ممکنہ اقدامات کیے جارہےہیں۔ انہوں نے کہا کہ 2014 سے 2019 کے سفرملک کی ترقی کے لیے اہم رہا۔



پی ایم مودی نے کہا کہ آئندہ 5 سال کا منصوبہ بنالیاگیاہے اور اس سلسلہ میں مودی حکومت، سردارپٹیل کے خوابوں کا ہندوستان حاصل کرنے کے لیے اقدامات کیے جارہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ 2014 میں لوگوں پر مودی حکومت پراعتماد نہیں تھا لیکن 2019ء میں عوام کے مایوسی، امید میں تبدیل ہوگئی ہے۔

اس موقع پر وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ، وزیر مملکت برائے دفاع شری پد نائک اور دفاعی سکریٹری سنجے سمترا لال قلعہ کے لاہوری گیٹ پر وزیراعظم کا استقبال کیا۔ دفاعی سکریٹری وزیراعظم کا تعارف دہلی علاقے کے جنرل آفیسر کمانڈنگ لفٹننٹ جنرل اسیت مستری سے نے کی۔ لفٹننٹ جنرل اسیت مستری وزیراعظم کو سلامی منچ کی جانب لیکر گئے۔ جہاں فوج اور پولیس گارڈ کے جوانوں انہیں سلامی دیاور وزیراعظم گارڈ آف آنر کا جائزہ لیا۔

وزیراعظم کو سلامی دینے والے دستے میں فوج کے تینوں بازوؤں اور دہلی پولیس فورس سے ایک ایک افسر اور 24۔24 جوان شامل تھے۔ سلامی دینے والا دستہ قلعہ کے دیوار کے نیچے کھائی کے نزدیک قومی پرچم کے سامنے موجودتھا۔

فضائیہ کے ونگ کمانڈر انوج بھاردواج گارڈ آف آنر کی قیادت کی۔ وزیراعظم کے گارڈ آف آنر میں شامل بری فوج کے دستے کی کمان میجر لیش رام ٹونی سنگھ نے سنبھالی تو بحری دستے کی قیادت لفٹننٹ کمانڈرپرشانت پربھاکرنے کی جبکہ فضائیہ کے دستے کی کمان اسکوارڈن لیڈر ایس بی گوڑا کے ہاتھوں میں ہوگی۔
First published: Aug 15, 2019 08:01 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading