உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Artificial Intelligence In Defense:چین ہو یا پاکستان، ہندوستانی فوج کے کئی کام ہوجائیں گےآسان، جب ملیں گے 75 ہائی ٹیک فوجی آلات

    ہندوستانی فوج کو ملے گی مضبوطی۔

    ہندوستانی فوج کو ملے گی مضبوطی۔

    Artificial Intelligence In Defense: اے آئی پر مبنی کچھ ایپلی کیشنز کی درجہ بندی کی جائے گی، جن کے بارے میں معلومات کو عام نہیں کیا جائے گا۔ اجے کمار کے مطابق جدید جنگ بہت تیزی سے بدل رہی ہے، اس لیے فوج کے کام کاج اور فوجی ساز و سامان میں مصنوعی ذہانت کی خاص ضرورت ہے۔

    • Share this:
      Artificial Intelligence In Defense:ملک کی سرحد (LAC) پر تعینات فوجیوں کے بہت سے کام اب آسان ہو جائیں گے۔ جیسے ایل اے سی پر چین (China)کے فوجیوں کی مینڈرن زبان ہندی یا انگریزی میں سنناہو یا سرحد پر موجود فوجیوں کو اسلحہ یا رسد اور خوراک پہنچانا، یہ سب کام اب آسان ہونے والے ہیں۔ یہی نہیں بلکہ پاکستان (Pakistan)سے ملحق ایل او سی پر کسی دہشت گرد کی دراندازی پر نظر رکھنا یا سرحد پر کسی روبو سولجر کو تعینات کرنا یا پھر سرحد پر دشمن ملک کے فوجیوں کے مذموم عزائم کو بھانپنا۔اب سب کام فوج کے لیے ایک چٹکی میں ہو جائے گا۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ فوج کو اگلے ہفتے مصنوعی ذہانت (AI) پر مبنی 75 ایسی ٹیکنالوجی اور فوجی ساز و سامان ملنے جا رہے ہیں۔

      پیر کو دارالحکومت دہلی میں 'آرٹیفیشل انٹیلیجنس ان ڈیفنس' کے نام سے ایک نمائش اور سیمینار ہونے جا رہا ہے جس میں اے آئی پر مبنی فوجی سازوسامان کو لانچ کیا جائے گا۔ وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ خود اس نمائش کا افتتاح کریں گے۔

      جمعہ کو سکریٹری دفاع اجے کمار نے ایک پریس کانفرنس میں اس نمائش اور سیمینار کے بارے میں تفصیلی جانکاری دی۔ دفاعی سکریٹری نے کہا کہ آزادی کے امرت مہوتسو سال میں یہ 75 ٹیکنالوجیز اور مصنوعات لانچ کی جا رہی ہیں، جن کا پہلے ہی آرمی، ڈی آر ڈی او اور ڈیفنس PSUs نے تجربہ کیا ہے۔ وزیر دفاع کے مطابق یہ ملک کی پہلی AI پر مبنی نمائش ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:

      Madhya Pradesh کے اسکولی نصاب میں طلبا کو رام چرت مانس پڑھانے کا فیصلہ

      یہ بھی پڑھیں:
      مونسون سیشن سے پہلے راجناتھ سنگھ دیں گے Agnipath Schemeکے بارے میں مکمل تفصیل

      سیکرٹری دفاع کے مطابق، اے آئی پر مبنی کچھ ایپلی کیشنز کی درجہ بندی کی جائے گی، جن کے بارے میں معلومات کو عام نہیں کیا جائے گا۔ اجے کمار کے مطابق جدید جنگ بہت تیزی سے بدل رہی ہے، اس لیے فوج کے کام کاج اور فوجی ساز و سامان میں مصنوعی ذہانت کی خاص ضرورت ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: