உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    MCD انتخابات سے قبل دہلی کے لیفٹیننٹ گورنر کو بدلنے کی تیاری، وزیر اعلیٰ نے ٹوئٹ کرکے کہی یہ بڑی بات

    MCD انتخابات سے قبل دہلی کے لیفٹیننٹ گورنر انل بیجل کو بدلنے کی تیاری

    MCD انتخابات سے قبل دہلی کے لیفٹیننٹ گورنر انل بیجل کو بدلنے کی تیاری

    MCD Elections 2022: دہلی کے وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال (Arvind Kejriwal) نے ایک ٹوئٹ کرتے ہوئے لکھا ہے کہ کیا لکشدیپ کے ایڈمنسٹریٹر پرفل پٹیل ((Praful Patel)) کو دہلی کا اگلا ایل جی بنایا جا رہا ہے؟ وزیر اعلیٰ کے اس ٹوئٹ کے بعد دہلی کی سیاست میں کارپوریشن الیکشن سے متعلق بحث مزید تیز ہوگئی ہیں۔

    • Share this:
      نئی دہلی: پنجاب اسمبلی انتخابات (Punjab Assembly Elections) میں زبردست جیت حاصل کرنے والی عام آدمی پارٹی اب آئندہ میونسپل کارپوریشن انتخابات (MCD Elections) پر پوری توجہ مرکوزکئے ہوئے ہے۔ اس کو لے کر اب دہلی میں سیاست مزید تیز ہوگئی ہے۔ حالانکہ مرکزی حکومت کی مداخلت کے بعد لیفٹیننٹ گورنر انل بیجل کی طرف سے ریاستی الیکشن کمیشن کو بھیجی گئی ایک تجویز کے سبب فی الحال دہلی میونسپل کارپوریشن کو ملتوی کردیا گیا ہے۔ اس درمیان اب دہلی کے لیفٹیننٹ گورنر انل بیجل کو بدلے جانے کی قیاس آرائیاں بھی اقتدار کے گلیاروں میں تیز ہوگئی ہیں۔

      MCD Elections 2022:

      دہلی کے وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال (Arvind Kejriwal) نے ایک ٹوئٹ کرتے ہوئے لکھا ہے کہ کیا لکشدیپ کے ایڈمنسٹریٹر پرفل پٹیل ((Praful Patel)) کو دہلی کا آئندہ وزیر اعلیٰ بنایا جا رہا ہے؟ وزیر اعلیٰ کے اس ٹوئٹ کے بعد ہلی کی سیاست میں کارپوریشن الیکشن سے متعلق بحث مزید تیز ہوگئی ہیں۔



      گجرات کی مودی حکومت میں رہ چکے ہیں وزیر داخلہ

      اس درمیان دیکھا جائے تو پرفل کھوڑا بھائی پٹیل لکشدیپ کے ایڈمنسٹریٹر ہیں۔ وہ گجرات میں نریندر مودی حکومت میں وزیر داخلہ بھی رہ چکے ہیں۔ گزشتہ دنوں ان کے کچھ فیصلوں سے مقامی لوگوں میں زبردست ناراضگی دیکھنے کو ملی۔ لوگوں کا ماننا ہے کہ ان فیصلوں سے ان کی ثقافتی اور مذہبی شناخت کو نقصان پہنچے گا۔ وہ پہلے بھی کئی بار تنازعہ میں رہے ہیں۔

      واضح رہے کہ پنجاب اسمبلی انتخابات میں عام آدمی پارٹی کو زبردست اکثریت حاصل ہوئی ہے۔ پنجاب کی 117 سیٹوں میں سے عام آدمی پارٹی کو 92 سیٹیں حاصل ہوئی ہیں۔ پنجاب میں اکثریت کے لئے 59 سیٹوں کی ضرورت تھی۔ کانگریس کو محض 18 سیٹیں حاصل ہوئی ہیں اور وزیر اعلیٰ چرنجیت سنگھ چنی کو اپنی دونوں سیٹوں پر شکست کا سامنا کرنا پڑا۔ وہیں کانگریس کے ریاستی صدر نوجوت سنگھ سدھو بھی اپنی سیٹ ہار گئے۔ وہیں کانگریس سے باغی ہوئے سابق وزیر اعلیٰ کیپٹن امریندر سنگھ کو بھی شکست کا سامنا کرنا پڑا۔ شرومنی اکالی دل کو محض تین سیٹیں جبکہ بی جے پی کو دو سیٹ حاصل ہوئی ہے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: