உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    نواب ملک نے پھر پھوڑا لیٹر بم، این سی بی افسر سمیر وانکھیڑے پر عائد کئے 26 سنگین الزامات

    نواب ملک نے پھر پھوڑا لیٹر بم، این سی بی افسر سمیر وانکھیڑے پر عائد کئے 26 سنگین الزامات

    نواب ملک نے پھر پھوڑا لیٹر بم، این سی بی افسر سمیر وانکھیڑے پر عائد کئے 26 سنگین الزامات

    مہاراشٹر حکومت میں وزیر نواب ملک (Nawab Malik) نے دعویٰ کیا ہے کہ انہیں نارکوٹکس کنٹرول بیورو (NCB) یعنی این سی بی کے ایک ملازم نے خط بھیجا ہے۔ انہوں نے کہا کہ میں اسے نارکوٹس کے جنرل ڈائریکٹر کو بھیج رہا ہوں۔

    • Share this:
      ممبئی: نیشنلسٹ کانگریس پارٹی (NCP) کے لیڈر اور مہاراشٹر حکومت میں وزیر نواب ملک (Nawab Malik) نے دعویٰ کیا ہے کہ انہیں نارکوٹکس کنٹرول بیورو (NCB) یعنی این سی بی کے ایک ملازم نے خط بھیجا ہے۔ انہوں نے کہا کہ میں اسے نارکوٹس کے جنرل ڈائریکٹر کو بھیج رہا ہوں۔ نواب ملک نے دعویٰ کیا کہ اس خط بھیجنے والے نے اپنے نام کا ذکر نہیں کیا ہے۔ نیوز ایجنسی اے این آئی کے مطابق، نواب ملک نے کہا- ’مجھے این سی بی کے نامعلوم افسر کا خط ملا ہے۔ ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ جانچ ہونی چاہئے‘۔

      مہاراشٹر کے وزیر اور این سی پی کے لیڈر نواب ملک نے دعویٰ کیا ’این سی بی افسر سمیر وانکھیڑے ممبئی اور تھانے میں دو لوگوں کے ذریعہ کچھ لوگوں کے موبائل فون غیر قانونی طریقے سے انٹرسیپٹ کر رہے ہیں‘۔ انہوں نے منگل کے روز ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ این سی بی کے نامعلوم افسر کے ذریعہ بھیجے گئے خط میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ جھوٹے معاملوں میں کئی لوگوں کو پھنسایا گیا ہے۔ این سی بی دفتر میں پنچ نامہ کا مسودہ تیار کیا گیا تھا۔

      مہاراشٹر حکومت میں وزیر نواب ملک نے دعویٰ کیا ہے کہ انہیں این سی بی کے ایک ملازم نے خط بھیجا ہے۔
      مہاراشٹر حکومت میں وزیر نواب ملک نے دعویٰ کیا ہے کہ انہیں این سی بی کے ایک ملازم نے خط بھیجا ہے۔


      نواب ملک نے ایک ٹوئٹ میں کہا- ’این سی بی کے نامعلوم افسر سے مجھے ملا یہ خط یہاں ہے۔ ایک ذمہ دار شہری کے طور پر میں یہ خط ڈی جی نارکوٹکس کو بھیج رہا ہوں۔ اس میں ان سے گزارش کی گئی ہے کہ اس خط کو سمیر وانکھیڑے پر کی جا رہی جانچ میں شامل کیا جائے‘۔ نواب ملک نے جو خط ٹوئٹ کیا ہے، اسے مبینہ افسر نے مہاراشٹر کے وزیر اعلیٰ ادھو ٹھاکرے، وزیر داخلہ دلیپ ولسے پاٹل، ڈی جی پی سنجے پانڈے، کانگریس کی عبوری صدر سونیا اندھی اور کانگریس رکن پارلیمنٹ راہل گاندھی کو بھی بھیجا ہے۔ اس خط میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ این سی بی کے زونل سربراہ نے 26 معاملوں میں مبینہ طور پر فرضی واڑہ کیا ہے۔

      آرین خان کے معاملے میں لگائے گئے یہ سنگین الزام

      خط میں 24 ویں نمبر پر آرین خان کے معاملے کا ذکر ہے۔ اس معاملے میں دعویٰ کیا ہے کہ کیس نمبر 94/2021 میں کروز پر جو کیس کیا ہے، اس میں سبھی پنچ نامے این سی بی ممبئی کے دفتر میں لکھے گئے ہیں اور بی جے پی کے اشارے پر ان کے دو کارکنان نے سمیر وانکھیڑے کے ساتھ ملی بھگت سے ڈرگس پلانٹ کرکے کیا ہے۔ کروز پر این سی بی کے ملازم سپرنٹنڈنٹ وشو وجے سنگھ، آئی او آشیش رنجن، آئی او کرن بابو، آئی او وشوناتھ تیواری اور جی آئی او سدھاکر شندے، او ٹی سی کدم، سپاہی ریڈی پی ڈی مورے اور وشنو مینا، ڈرائیور انل مانے اور سمیر وانکھیڑے کے سکریٹری شرد کمار اور دیگر ملازم اپنے سامان میں چھپاکر ڈرگس لے گئے تھے اور موقع پاکر لوگوں کے نجی سامان میں رکھا۔

      خط میں 24 ویں نمبر پر آرین خان کے معاملے کا ذکر ہے۔ اس معاملے میں دعویٰ کیا ہے۔
      خط میں 24 ویں نمبر پر آرین خان کے معاملے کا ذکر ہے۔ اس معاملے میں دعویٰ کیا ہے۔


      خط میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ ’سمیر وانکھیڑے کو سرچ یا آپریشن کے دوران کوئی بالی ووڈ یا ماڈل یا سیلبرٹی ملنا چاہئے تو وہ اسے زبردستی ڈرگ اپنے پاس سے رکھ کر کیس بنا دیتا ہے۔ اس معاملے میں بھی یہی ہوا ہے۔ سمیر وانکھیڑے گزشتہ ایک ماہ سے بی جے پی کے دونوں کارکنان (کے پی گوساوی اور منیش بھانوشالی) سے رابطہ میں ہیں اور کروز سے جتنے بھی آدمی پکڑے گئے تھے، انہیں این سی بی دفتر لایا گیا اور سارے پنچ نامے این سی بی کے دفتر میں بیٹھ کر بنائے گئے۔ لیکن ریشو سچدیو، پرتیک گاوا اور امیر فرنیچر والا کو اسی رات دہلی سے فون آنے پر چھوڑا گیا۔ اس معاملے میں سمیر وانکھیڑے کی فون کال ڈیٹیل چیک کی جاسکتی ہے‘۔

       مہاراشٹر کے وزیر اور این سی پی کے لیڈر نواب ملک نے دعویٰ کیا ’این سی بی افسر سمیر وانکھیڑے ممبئی اور تھانے میں دو لوگوں کے ذریعہ کچھ لوگوں کے موبائل فون غیر قانونی طریقے سے انٹرسیپٹ کر رہے ہیں‘۔

      مہاراشٹر کے وزیر اور این سی پی کے لیڈر نواب ملک نے دعویٰ کیا ’این سی بی افسر سمیر وانکھیڑے ممبئی اور تھانے میں دو لوگوں کے ذریعہ کچھ لوگوں کے موبائل فون غیر قانونی طریقے سے انٹرسیپٹ کر رہے ہیں‘۔


      سمیر وانکھیڑے نے پلانٹ کیا ڈرگ؟

      دعویٰ کیا گیا ہے کہ ’اس معاملے میں ارباز مرچنٹ کے دوست عبدل سے کچھ ڈرگ نہیں ملی تھی، لیکن سمیر وانکھیڑے کے کہنے سے اس پر بھی ڈرگ ریکوری دکھا دی گئی ہے۔ سمیر وانکھیڑے نے اس معاملے میں اپنے (این سی بی) دفتر کے ڈرائیور وجے کو پنچ یعنی گواہ بنا دیا ہے، جبکہ قانون کہتا ہے کہ گواہ آزاد ہونا چاہئے۔ یہ سارا کیس فرضی ہے اور ڈرگ جو حاصل ہوئی ہے، سمیر اور اس کے ساتھیوں نے پلانٹ کیا ہے‘۔ خط کے آخری صفحہ پر دعویٰ ہے کہ سمیر وانکھیڑے جب سے این سی بی ممبئی کا کام سنبھالا ہے، تب سے کسی بھی پکڑے گئے آدمی سے 25 خالی صفحے برآمد ہوسکتے ہیں۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: